وزارت خزانہ اور آئی ایم ایف کے مابین آئندہ وفاقی بجٹ کیلیے اہداف طے

0
152
IMF

آئی ایم ایف مشن اور وزارت خزانہ حکام کے درمیان مذاکرات کا پہلا دور ہوا ہے جس میں آئندہ بجٹ کے لئے اہداف طے کر لئے گئے ہیں

آئی ایم ایف حکام وزارت خزانہ پہنچے،جہاں پاکستانی حکام نے انکا استقبال کیا،آئی ایم ایف مشن اور پاکستانی حکام کے مابین وزارت خزانہ میں تعارفی سیشن ہوا جس میں پاکستان کی طرف سے وزیرخزانہ، سیکرٹری خزانہ، چیئرمین ایف بی آر اورگورنراسٹیٹ بینک موجود تھے، مذاکرات میں وزارت خزانہ اور آئی ایم ایف کے درمیان آئندہ وفاقی بجٹ کیلئے اہم اہداف طے کیے گئے ،فیصلہ کیا گیا کہ آئندہ مالی سال کے دوران حکومت اسٹیٹ بینک سے قرض نہیں لے گی،میڈیا رپورٹس کے مطابق وزارت خزانہ اور آئی ایم ایف نے بیرونی ادائیگیاں بلا تاخیر اور بروقت ادا کرنے پر اتفاق کیا ،یہ بھی طے کیا گیا کہ ایف بی آر ٹیکس ریفنڈ ادائیگیاں بروقت کرنے کا پابند ہوگا ، زرمبادلہ ذخائربہتر بنانے اور ادائیگیوں کیلئے انٹرنیشنل مارکیٹ میں بانڈز جاری کیے جائیں گے، درآمدات پرپابندی نہیں ہوگی اورانٹرنیشنل ٹرانزیکشنز کیلئے بھی پابندی عائد نہیں کی جائےگی، اسٹیٹ بینک، وزارت خزانہ اور وزارت توانائی کی معلومات آئی ایم ایف کو بھیجی جائیں گی، آئی ایم ایف، ایف بی آر، شماریات بیورو اور مارکیٹ بیسڈایکسچینج ریٹ کی معلومات لےگا۔

پاکستان اور آئی ایم ایف کے مابین مذاکرات تقریباً دو ہفتے تک جاری رہیں گے، پاکستان کو آئی ایم ایف سے 6 ارب ڈالر سے زائد کا بیل آؤٹ پیکج حاصل کرنے کی امید ہے.پاکستان اور ائی ایم ایف کے درمیان یہ 24 واں پروگرام ہے

پیچیدہ سیاسی صورتحال اور سماجی تناؤ،پالیسی اصلاحات کا نفاذ متاثرکرسکتا ہے،آئی ایم ایف

آئی ایم ایف سے بڑے اور طویل المیعاد پروگرام کے لیے مذاکرات ہوں گے،وزیرِ خزانہ

طویل مدتی قرض پروگرام،آئی ایم ایف معاون ٹیم پہنچی پاکستان

وزیراعظم کے معاون خصوصی رانا مشہود احمد کا کہنا ہےکہ آئی ایم ایف سے پروگرام حاصل کرنا ضروری ہے،معیشت کا ہر شعبہ بہتری کی جانب گامزن ہے،ملکی معیشت اپنے پیروں پر کھڑی ہورہی ہے، سعودی عرب سے بھاری سرمایہ کاری آرہی ہے،چین سے بھی بنیادی ڈھانچے کے شعبے میں سرمایہ کاری آرہی ہے،

وزیراعظم شہباز شریف کی ایم ڈی آئی ایم ایف کو دورہ پاکستان کی دعوت

پاکستان کی معیشت مستحکم ہونے میں وقت لے گا، ایم ڈی آئی ایم ایف

اپریل 2024 کے آخر تک پاکستان کے کیس پر غور کیا جائے گا،آئی ایم ایف

آئی ایم ایف کا سی پی پیز کیلئے گیس ٹیرف میں آر ایل این جی کی قیمت کے برابر اضافے کا مطالبہ

سٹینڈ بائی معاہدے کے تحت پاکستان کو 3بلین ڈالر کی ادائیگی کی جائیگی،آئی ایم ایف

پاکستان کو آئی ایم ایف سے 8 ا رب ڈالر کا نیا قرض پروگرام ملنے کی امید

پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان سٹاف لیول معاہدہ طے

معیشت کی بہتری کیلئے تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے،آئی ایم ایف
آئی ایم ایف کے مشن چیف ناتھن پورٹر کا کہنا ہے کہ پاکستان سے مذاکرات نتیجہ خیز ہوں گے اور پاکستان کی سپورٹ جاری رکھیں گے،سیاسی عدم استحکام کے باعث معاشی میدان میں چیلنجز ہوئے اور معاشی استحکام بھی سیاسی استحکام کے ساتھ جڑا ہوا ہے،معیشت کی بہتری کیلئے تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے، آئی ایم ایف جو تجاویز دے اس پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے،

Leave a reply