5th جنریشن وار، پاکستان کو بڑا جھٹکا،تہلکہ خیز انکشافات مبشر لقمان کی زبانی

0
36

5th جنریشن وار، پاکستان کو بڑا جھٹکا،تہلکہ خیز انکشافات مبشر لقمان کی زبانی
باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سینئر صحافی و اینکر پرسن مبشر لقمان نے کہا ہے کہ کشمیر پر رپورٹنگ کرنے کی وجہ سے باغی ٹی وی کے فیس بک پیجز بھی بند ہوئے ہیں.

اینکر مریم خان نے سوال کیا کہ پرویز خٹک کا دعویٰ ہے کہ وزیراعلیٰ کے پی ان کی مرضی کے بغیر ہل بھی نہیں سکتے، جس پر مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ پرویز خٹک کا دعویٰ ڈائریکٹلی اور ان ڈائریکٹلی دونوں طرح سے صحیح ہے،کچھ تو وہ پرویز خٹک کی وجہ سے کرتے ہیں، بہت کچھ وہ اعظم خان کی مرضی کی وجہ سے کرتے ہیں، اعظم خان پرویز خٹک کے لائے ہوئے وہ ہیں، جب پر ویز خٹک وزیراعلیٰ تھے تو اعظم خان چیف سیکرٹری تھے، اب سوات میں سیلاب آیا تو محمود خان نے وزٹ نہیں کیا، یہ بے حسی ہے اس کے ساتھ کرپشن کی آوازیں آنا شروع ہو جائیں انکے اپنے وزیروں نے استعفیٰ دیئے کرپشن کی وجہ سے، انہون نے جینا دو بھر کیا ہے لوگوں کا ،پرویز خٹک کو پارٹی کی طرف سے شو کاز نوٹس نہیں ملا، اسکا مطلب ہے کہ صوبے خود مختار نہیں، لوگوں کو حق نہیں مل رہا، جمہوریت ڈیلیور نہیں کر رہی،میں اور آپ یہ سوال پوچھ سکتے ہیں کہ کیا ایسی لولی لنگڑی جمہوریت ہمیں چاہئے

اینکر مریم خان نے سوال کیا کہ عمران خان نے کراچی کے لئے پیکج کا اعلان کیا، وہ کراچی بھی جا رہے ہیں، آرمی چیف نے بھی کہا ہے کہ کراچی کو اکیلا نہیں چھوڑیں گے،شہباز شریف اٹھارہویں ترمیم بچانے کے لئے جا رہے ہیں لیکن جو باخبر لوگ ہیں وہ کہہ رہے ہیں کہ اٹھارہویں ترمیم ختم کرنے کے لئے جا رہے ہیں جس پر مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ دکھ کی بات یہ ہے کہ یہ تو سارے کہہ رہے ہیں کہ ہم کریں گے، یو اے ای کی حکومت نے آج جا کر فوڈ پیکجز دے دیا ہے، بلوچستان کے لئے بھی دیا ہے،میڈیکل پیکجز بھی دیئے ہیں، باہر سے کوئی آیا وہ دے کر بھی چلا گیا، انہوں نے دس دن پہلے تو پلان کیا ہو گا، ہم تو ابھی تک پلان کر رہے ہیں، پانی آیا اور اتر گیا، بہت سست کام کیا حکومت نے، شہباز شریف سیاسی پوائنٹ سکورنگ کے لئے گئے ، وہ نہ جاتے تب بھی برا کہتے گئے تب بھی بات کر رہے ہیں، پی پی، ایم کیو ایم کیا کر رہی ہے جن کی وہان‌حکومت ہے، سچی بات یہ ہے کہ اہل کراچی بہت ہی مشکل میں ہیں، ہر جماعت کو وہ آزما چکے ہیں، وہ بیچارے کیا کریں، کس کے پاس جائیں ، مجھے سمجھ نہیں آ رہی کہ کیا کہوں، پہلے تو سندھ کودو صوبوں میں کر دینا چاہئے، کراچی اور سندھ کو الگ الگ، اپر سندھ کے ساتھ ظلم ہو رہا ہے،انکے اپنے ریزیڈنس کبھی سی ایم نہیں بنتے، سی ایم انٹریئر سے آتا ہے، لائنیں وہی چلتی رہتی ہیں پھر،بدین، نوابشاہ، گڑھی خدا بخش،سندھ میں کراچی اور حیدر آباد کو مل ہی کچھ نہیں رہا، وہ بڑے شہر ہیں، کل جو اناؤنس ہو گا ہو سکتا ہے اس میں گورنر راج آ جائے، فیڈرل حکومت کے ساتھ ملا دیں، کوئی نئی بات سامنے آ جائے، لیکن اس طرح معاملہ چلے گا نہیں

شاہ محمود قریشی چین کیوں گئے؟ مبشر لقمان نے سب بتا دیا

چین سے شاندار خبریں،تمام پروٹوکول ٹوٹ گئے،تاریخی معاہدے تیار، اندر کی کہانی، مبشر لقمان کی زبانی

سرد جنگ کا خوفناک کھیل،پاکستان اہم ،امریکی پریشان ،ایران تگڑا اوراسرائیل میدان میں ، اہم انکشافات مبشر لقمان کی زبانی

پاکستان نے کمال کر دیا، دنیا بھر کے سائنسدان پریشان، سنیے اہم انکشافات مبشر لقمان کی زبانی

چین نے امریکہ کو آئینہ دکھا دیا، بھارت بھی دم دم مست قلندر کیلئے تیار،سنئے مبشر لقمان کی زبانی

اینکر مریم خان نے سوال کیا کہ گزشتہ 12 برسوں سے ہمارے میڈیا کی کوریج یہی ہوتی ہے کہ حکومت آج جا رہی ہے، کل جا رہی ہے، اس میں سب افواہیں ہوتی ہیں، افواہوں کا فائدہ کس کو پہنچتا ہے، پاکستان کے لئے تو وہ بہتر نہیں ہوتی،جس پر مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ بیسکلی ہماری قوم تماش بین ہے، آج ہم باتیں کریں کہ کسی سیاستدان نے شادی کر لی، دیکھیں ویڈیو کتنی شیئر ہوتی ہے،کسی کی طلاق کی بات کریں تو ویڈیو دیکھیں کتنی شیئر ہوتی ہے،ہم یہ بات کریں کہ ہماری ایگریکلچر کو ہم کس طرح بہتر کر سکتے ہیں، جی ڈی پی، اکانومی بہتر ہو گی اگر دس ہزار لوگ بھی اس کو دیکھ لیں تو بڑی بات ہو گی، دوسری چیز ہمارے میڈیا اونرز ہیں وہ کاروباری لوگ ہیں، وہ سٹوریز پر انویسٹ نہیں کرتے، نیو یارک ٹائمز، واشنگٹن پوسٹ ابھی تک کیوں چھپ رہے ہیں، دنیا میں تو اخبار بند نہیں ہو رہے، صرف پاکستان میں کیوں انٹرنیٹ کا پرابلم ہو رہا ہے، اسلئے کہ انکے رائیٹرز ٹریول کرتے ہیں، انکی لیگل ٹیمز ہیں، آرٹیکلز کو دیکھتے ہیں، لا کی مشین سے گزارتے ہیں کہ کسی ہیومن رائٹ کی وائلیشن تو نہیں ہو رہی، پھر وہ پبلش ہوتا ہے،دیکھیں کتنا عرصہ ہو گیا شہباز شریف ڈیلی میل کو سو کرنے گئے تھے ،ابھی تک نوٹس تو ملا نہیں جس کو وہ جواب دیں نواز شریف کے بارے میں جو کتاب آ چکی ہے،میڈیا اونر شعیب شیخ کے بارے میں نیو یارک ٹائمز نے جعلی ڈگریوں کے بارے میں بات کی، انکو سو کیا کسی نے ،؟ نہیں ، انکی سٹوریز پکی ہیں، وہ انویسٹ کرتے ہیں، ہمارا میڈیا کیا ہے کہ ہی سیڈ، شی سیڈ، انہوں نے یہ کہا ہم نے یہ کہا آپ یہ کیا کہیں گے، یہ ہماری رپورٹنگ ہے

اینکر مریم خان نے سوال کیا کہ فیس بک نے پاکستان کے 453 فیس بک اکاؤنٹس، پیجز، بین کئے، انڈیا میں جب بہت زیادہ ہیٹ سپیچ ہوئی تھی تو وہاں تو فیس بک نے کچھ نہیں کیا، جس پر مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ ہمارے بھی پیجز بھی کیا، باغی ٹی وی کے پیجز بھی بند ہوئے، کیونکہ اس پر کشمیر کی بہت رپورٹنگ ہے،بچوں کو پیلٹ لگنے کی تصویریں، تشدد کی تصویریں ہیں، فیس بک کا انڈیا بہت بڑا کلائنٹ ہے، دنیا میں اب لوگوں کو فیس بک سے اتنی دلچسپی نہیں رہی جو چار پانچ سال پہلے تھی، اب اور بڑی ایپلی کیشن پاپولر ہو رہی ہیں، فیس بک انڈیا والوں کو ناراض نہیں کر سکتا،ہماری حکومتتوں نے آج تک ایسا کوئی کام نہیں کیا کہ سوشل میڈیا والوں کو کوئی جگہ دیں یا متبادل پلیٹ فارم دیں، میں نے کوئی چینل نہیں دیکھا جہاں کشمیر پر ڈے ٹو ڈے بیسز پر رپورٹنگ ہو رہی ہے، سوشل میڈیا کا بند ہونا انڈیا کی بہت جیت ہے، یہ ففتھ جنریشن وار ہے، بلاکنگ انفارمیشن، مس انفارمیشن ،یہی تو ہے ففتھ جنریشن وار.

کشمیریوں پر بدترین ظلم، بھارتی تجزیہ کار بھی مان گئے

Leave a reply