عدلیہ کی عزت مقصود ہے توفواد چوہدری کوسزادینی پڑے گی ، پشاورہائی کورٹ میں درخواست

0
27

پشاور:عدلیہ کی عزت مقصود ہے توفواد چوہدری کوسزادینی پڑے گی،پشاورہائی کورٹ میں 7 بڑوں کی نااہلی کی درخواست دائر کردی گئی،اطلاعات کے مطابق فواد چوہدری ججز اورعدالتوں کی توہین اورتضیحک کرنے کے عادی،عدلیہ کی عزت مقصود ہے توفواد چوہدری کوسزادینی پڑے گی ،پشاورہائی کورٹ میں درخواست،باغی ٹی وی کےمطابق پاکستان کے ایک ممتاز قانون دان سینیئروکیل عزیزالدین کاکا خیل نے آج پشاورہائی کورٹ میں ایک درخواست دائر کی ہے جس میں فواد چوہدری کو عدالتی نظام کی توہین اورتضیحک کا ذمہ دارقراردے کرتوہین عدالت کی کاروائی کا کہا ہے،

باغی ٹی وی کےمطابق پشاور ہائی کورٹ کے سینیئروکیل سید عزیزالدین کاکا خیل نے یہ درخواست پشاورہائی کورٹ میں دائر کی ہے جس میں انہوں نے بہت سے اہم نقات کا حوالہ دیتے ہوئے فواد چوہدری کی طرف سے عدالتوں کی توہین اورتضحیک پرسزاسنانے کی درخواست کی ہے ، اس درخواست میں وزیراعظم پاکستان عمران خان ،وفاقی وزیرقانون ڈاکٹرفروغ نسیم ،سابق اٹارنی جنرل انورمنصور،ڈاکٹرفردوس عاشق اعوان ،وزیراعظم کے معاون خصوصی شہزاد اکبر اورچیئرمین پیمرا کو بھی توہین عدالت کی سزا کے لیے نامزد کیا گیا ہے

باغی ٹی وی کےمطابق پشاور ہائی کورٹ میں‌دائر اس درخواست میں کہا گیا ہےکہ یہ سارے لوگ سابق صدرجنرل پرویز مشرف کے معاملے میں عدالتی فیصلے کی بدنامی کے مرتکب ہوئے ، اس درخواست میں کہا گیا ہےکہ سابق صدرجنرل پرویز مشرف کی طرف سے آئین کومعطل کرنے کے خلاف سپریم کورٹ آف پاکستان نے فیصلہ سناتے ہوئے اسے غیرقانونی قراردیا تھا ،

سید عزیزالدین کاکا خیل نے درخواست میں کہا ہےکہ عدالت عظمی کے لارجربینج کے حکم کےمطابق اوراس وقت کی وفاقی حکومت کی درخواست پرسابق صدرجنرل پرویز مشرف کے اس غیرقانونی اقدام کے خلاف مزید چھان بین کے لیے ایک خصوصی عدالت بھی قائم کی تھی


سید عزیزالدین کی طرف سے کہا گیا ہےکہ 17 دسمبر2019 کو اس خصوصی عدالت نے اس عہد شکنی پرتفصیلی فیصلہ سناتے ہوئے سابق صدرجنرل پرویز مشرف کوسزائے موت کا فیصلہ سنا دیا اوریہ کیس اپنے اختتام کو پہنچ گیا ،

اس درخواست میں کہا گیا ہے کہ اس وقت خصوصی عدالت کے جج موجودہ پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس ہیں ، اس فیصلے کے خلاف دوجسٹس صاحبان نے اختلاف رائے بھی دیا تھا ،

سید عزیزالدین کاکا خیل کہتے ہیں کہ اس فیصلے کے بعد معززجج کے خلاف ایک باقاعدہ منصوبہ بندی کے تحت کردارکشی کی مہم شروع ہوگئی ، جس میں سرکاری ٹیلی ویژن سمیت اہم فورم بھی استعمال میں لائے گئے ،

اس دوران ڈاکٹرفروغ نسیم جواس وقت سابق صدر کے وکیل تھے ان کیطرف سے بھی اس فیصلے کی وجہ سے معزز جج کی تضیک کی گئی ، ان کی کردارکشی کی گئی جوکہ سراسرایک توہین ہے

سید عزیزالدین کاکاخیل نے اپنی درخواست میں عدالت سے کہا ہےکہ اس دوران جوخصوصی عدالت کے جج پشاورہائی کورٹ کی کردارکشی کرنے والے شخص تھے وہ موجودہ وفاقی وزیرفواد چوہدری ہیں جنہوں نے معزز جج ، عدالت اورقانون کی تضحیک کرنے میں ہچکچاہٹ محسوس نہیں کی ،

سید عزیزالدین کاکا خیل نے اپنی درخواست میں کہا ہےکہ صرف یہ نہیں کہ اپنی زبان سے کردارکشی کی بلکہ اس سے آگے بڑھ کرباقاعدہ ایک دستاویزی شکل میں ٹویٹرپرپیغام پوسٹ کرکے پاکستان کے عدالتی نظام کی دھجیاں بکھیردیں

آئین طور پرفواد چوہدری وزیراعظم کو جواب دہ ہیں لیکن عدالت کی تضیک پروزیراعظم نے بھی کوئی نوٹس نہیں لیا

سید عزیزالدین کاکا خیل نے درخواست میں عدالتی نظام کی حقانیت کے بارے میں اہم تاریخی حوالوں کا بھی ذکرکیا اورکہا کہ خلیفہ وقت حضرت علی اپنے ماتحت کام کرنے والے قاضی کے خلیفہ وقت کے خلاف فیصلے پرسرتسلیم خم کردیتے ہیں ، برطانوی وزیراعظم چرچل جنگ کے دوران بھی عدالتوں کے احترام کا اعلان کرتا ہے توپھریہ کون ہوتے ہیں عدالتوں کی توہین کرنے والے

سید عزیزالدین کاکا خیل نے عدالت سے درخواست میں کہا ہےکہ چونکہ یہ تمام افراد عدالتی فیصلے کی توہین کے مرتکب ٹھہرے ہیں لہٰذا ان تمام افراد کو ان کے عہدوں سے برطرف کرکے آئین کی توہین کی سزادی جائے

سید عزی

Leave a reply