آرمینیا اور آذربائیجان پرہونے والے مذاکرات منسوخ

0
36

برسلز:آرمینیا اور آذربائیجان پرہونے والے مذاکرات منسوخ ،اطلاعات کےمطابق آذربائیجان کے صدر الہام علی اوف نے دونوں فریقوں کے درمیان امن مذاکرات میں ثالثی کے لیے فرانسیسی رہنما ایمانوئل میکرون سے یریوان کے مطالبے پر اگلے ماہ برسلز میں آرمینیائی وزیر اعظم کے ساتھ طے شدہ ملاقات منسوخ کر دی ہے۔

پاکستان اورترکی کوقابل تجدید توانائی کےحصول کیلئےمل کر کام کرنا ہو گا:وزیراعظم

آذربائیجان کے صدر الہام علی اوف نے جمعہ کے روز اعلان کیا کہ وہ 7 دسمبر کو بیلجیئم کے دارالحکومت میں وزیر اعظم نکول پاشینیان سے ملاقات نہیں کریں گے جب آرمینیائی رہنما پر یہ الزام لگا کر امن مذاکرات کے اگلے مرحلے کو نقصان پہنچانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ فرانس کو باکو اور یریوان کے درمیان ایک دلال کے طور پر کام کرنا چاہیے۔ نگورنو کاراباخ علاقے پر طویل عرصے سے جاری تنازعے میں فرانس جانبدارانہ کردار ادا کررہا ہے جو قابل مذمت ہے

آذربائیجان اس سے قبل فرانس پر الزام لگاتا رہا ہے کہ وہ دونوں ملکوں کے الگ ہونے والے خطے پر کئی دہائیوں سے جاری تنازع میں آرمینیا کی پشت پناہی کر رہا ہے۔

باکو میں ایک بین الاقوامی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے، آذربائیجان کے صدر الہام علی اوف نے کہا کہ پشینیان "صرف اس شرط پر میٹنگ پر رضامند ہوئے” کہ میکرون شرکت کریں۔ "اس کا مطلب ہے کہ میٹنگ نہیں ہوگی،”

وزیرخزانہ نے پاکستان کےدیوالیہ ہونےکی قیاس آرائیوں کو پھرمسترد کردیا

آذربائیجان کے صدر الہام علی اوف نےپشینیان پر "امن مذاکرات کو ختم کرنے کی کوشش” کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ فرانسیسی رہنما نے "آذربائیجان مخالف موقف” اپنایا ہے اور وہ باکو کی "توہین” کر رہے ہیں۔آذربائیجان کے صدر نے مزید کہا کہ ’’یہ واضح ہے کہ ان حالات میں اس رویہ کے ساتھ فرانس آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان امن عمل کا حصہ نہیں بن سکتا‘‘۔

Leave a reply