بشریٰ بی بی کو زہر،ذاتی معالج کی ملاقات،حقیقت سامنے آ گئی

0
162
bushra

سابق وزیراعظم عمران خان اور بشریٰ بی بی کے ذاتی معالج ڈاکٹر عاصم یوسف نے کہا ہے کہ بشریٰ بی بی سے آج صبح ملاقات ہوئی، ان کا معائنہ کیا ہے، ان کو زہر دینے کی کوئی تصدیق نہیں ہوئی

ڈاکٹر عاصم یوسف کا کہنا تھا کہ کہ بشریٰ بی بی کو زہر دیے جانے کے اس وقت کوئی شواہد نہیں ہیں، بشریٰ بی بی کو زہر دینے سے متعلق کوئی ٹیسٹ نہیں کر رہے، اس وقت بشریٰ بی بی کو ایسے کسی مسئلے کی تصدیق نہیں ہوئی،بہتر ہو گا کہ چیک کیا جائے کہ کوئی سنجیدہ مسئلہ تو نہیں، بشریٰ بی بی کی طبیعت 2 ماہ پہلے کھانے کے بعد خراب ہوئی تھی، ماضی میں ان کو کچھ دیا گیا کو تو کچھ کہہ نہیں سکتا۔ ان کو معدے میں اب بھی تکلیف ہے تاہم پہلے سے ان کی طبیعت کافی بہتر ہے، منہ میں دانے نہیں ہیں، ابھی بشریٰ بی بی بالکل ٹھیک ہیں، انکو کھانا نگلنے میں مشکل ہوتی تھی تا ہم اب یہ کیفیت ختم ہو چکی ہے،

ڈاکٹر عاصم یوسف کا مزیدکہنا تھا کہ دو ماہ قبل بشریٰ کی طبیعت کھانے کے بعد ہی خراب ہوئی تھی لیکن کیوں ہوئی تھی کس وجہ سے ہوئی تھی کچھ نہیں ہو سکتی، میں نے کیمرہ ٹیسٹ کا کہا ہے، پمز کے چار ڈاکٹر کی ٹیم ہمارے ساتھ تھی بنی گالہ میں جا کر ہم نے چیک اپ کیا، بہت حد تک بشریٰ بی بی کی ریکوری ہو چکی ہے،

بشریٰ بی بی کامیڈیکل چیک اپ کروایا جائے، تحریک انصاف کا مطالبہ

بشریٰ بی بی کو زہر دے کر عمران خان کو جھکانے کی کوشش کی جارہی ہے،زرتاج گل

کھانے میں زہر،کوئی ثبوت ہے؟ صحافی کے سوال پر بشریٰ بی بی "لال” ہو گئیں

توشہ خانہ کیس میں عمران خان اور بشریٰ بی بی کی سزا معطل 

بنی گالہ میں میرے شہد میں کچھ ملایا گیا تھا،بشریٰ بی بی کا الزام

عمران ،بشریٰ کی ویڈیو لنک کے ذریعے حاضری نہ لگانے پر توہین عدالت نوٹس

100ملین پاؤنڈز ریفرنس،عمران خان کی ضمانت کی درخواست ،نیب نے وقت مانگ لیا

عمران خان جیل میں شاہانہ زندگی گزار رہے ہیں، وفاقی وزیر اطلاعات

عمران خان سے ملاقات نہ کرانے پر توہین عدالت کی درخواست، نوٹس جاری

واضح رہے کہ عمران خان نے دو روز قبل جیل میں کہا تھا کہ بشریٰ کو زہر دی گئی ہے، بشریٰ نے کہا تھا کہ اسے ہارپک کے تین قطرے پلائے گئے ہیں، تحریک انصاف نے اس معاملے کو لے کر بشریٰ کے طبی معائنے کا مطالبہ کیا تھا تا ہم آج سب سچ سامنے آ گیا جب ذاتی معالج نے بشریٰ سے ملاقات کی اور زہر والی بات کو جھوٹ قرار دے دیا،

بشریٰ بی بی سے ایک صحافی نے پوچھا کہ پہلے آپ کی جانب سے بیان آیا تھا کہ شہد میں کچھ ملایا گیا ہے، اب کہا جا رہا ہے کہ ہارپک کھانے میں ڈالا گیا؟ جس پر بشریٰ بی بی نے کہا کہ پہلے شہد میں بھی کچھ ملایا گیا تھا، اب کھانے میں بھی ہارپک ملایا گیا ہے۔ صحافی نے پھر پوچھا کہ زہر والے معاملے کی انکوائری ہوئی تو آپ کے پاس کیا ثبوت ہے؟ اس پر انہوں نے غصے سے کہا کہ میں کہاں سے ثبوت لاؤں اور گفتگو ختم کردی،بشریٰ بی بی کے رویے پر صحافیوں نے عمران خان سے احتجاج کیا تو عمران خان نے کہا کہ بشریٰ بی بی نے میڈیا کو کبھی ڈیل نہیں کیا ان کی باتوں کو سنجیدہ نہ لیں اور نہ ہی ان کی باتوں کا برا منائیں.

عمران ،بشریٰ عادتا جھوٹے ہیں،کھانے میں مرچیں زیادہ ہونے کی بشریٰ کو شکایت تھی،عظمیٰ بخاری
وزیر اطلاعات پنجاب عظمیٰ بخاری کا کہنا ہے کہ پمز ہسپتال کے چار سینئر ڈاکٹرز نے آج بشریٰ بی بی کا تفصیلی میڈیکل چیک کیا، میڈیکل چیک کے دوران زہر دینے یا ہارپک کے قطرے کھانے میں ملانے کے کوئی شواہد نہیں ملے، بشری بی بی کو شکایت تھی کھانے میں مرچیں زیادہ تھیں، بشری بی بی اور عمران خان نے الگ الگ بیانات دے کر خود کو مشکوک اور جھوٹے ثابت کیا، میڈیکل ٹیم کے چیک اپ کے بعد یہ واضح ہو گیا دونوں میاں بیوی عادتا جھوٹے ہیں، عمران خان تو زمان پارک میں رہتے ہوئے بھی زہر کی باتیں کرتا تھا، بشری بی بی کو جھوٹ بولتے تھوڑا سا احساس کرنا چاہیے، آپ دونوں میاں بیوی شاہانہ انداز میں شاہی جیل کاٹ رہے ہیں، مخالفین کو عقوبت خانوں اور موت کی چکیوں میں ڈالنے والا 7 عدد سیل میں بادشاہوں کی طرح رہ رہا ہے، پروپگینڈے اور جھوٹ کی شروعات عمران خان اور بشری بی بی سے ہو کر ان کے سوشل میڈیا ٹولز تک پہنچتی ہے، دونوں میاں بیوی کا جھوٹ 24 گھنٹوں میں ہی بے نقاب ہوگیا

Leave a reply