fbpx

ڈی سی سی اجلاس میں ایم ڈی واسا کو باربارمعافی کیوں مانگنا پڑی، وجہ سامنے آگئی

ڈٰی سی سی اجلاس میں حکومتی ارکان ایم ڈی واسا پربرس پڑے ہیں

فیصل آباد میں تحریک انصاف ویسٹ ریجن پنجاب کے صدرفیض اللہ کموکا ایم این اے کی زیرصدارت اجلاس ہوا ہے، اس اجلاس میں ڈسٹرکٹ کوآرڈینیشن کمیٹی کے ممبران بھی شریک ہوئے ییں، اجلاس میں ایم ڈی واسا کی سرزنش کی گئی ہے، ناقص کارکردگی اورنااہلی پرکئی گئی ہے، آئندہ ہم واسا کی وجہ سے الیکشن ہار جائیں گے، انہوں نے کہا کہ باتیں نا بنائیں، فاضل ممبران کے جائز کام فوری کیا کریں،
ایم پی اے شکیل شاہد نے کہا کہ ایم ڈی واسا نے چھ ماہ سے میرا فون نہیں سنا ہے، ان کا دماغ خراب ہوچکا ہے، اس پرشکیل شاہد نے اجلاس کا بائیکاٹ کرنا چاہا، فیض اللہ کموکا اوردیگر ممبران نے شکیل شاہد کو اجلاس بائیکاٹ کرنے سے روک دیا، جس پرایم ڈی واسا جبارانورنے معافی مانگ لی.

اجلاس میں ڈپٹٰ کمشنرمحمد علی بھی موجود تھے.

فاضل ممبروزیراعلیٰ پنجاب کمپلیمینٹ سیل محبوب بھی اس اجلاس میں شریک تھے، انہوں‌ نے کہا کہ ایم ڈٰی واسا جبارانورہمیں لفٹ نہیں کرواتے ہیں،جب بھی جاؤ تو فروٹ چاٹ کھلا دیتے ہیں، مگر ہمارے کام نہیں کرتے ہیں.

اس کے جواب میں ایم ڈی واسا جبارانورنے کہا کہ وہ کونسا جیب سے فروٹ چاٹ کھلاتے تھے، سرکارکے پیسوں سے ہی کھلاتے تھے، اس بات پربھی جبارانورکوفاضل ممبرسے معافی مانگنا پڑی ہے.

ایم این اے خرم شہزاد نے بتایا کہ جبار انور کے دور میں ٹینڈر پول ہورہے ہیں، بتایا جائے کہ اس مد میں کرپشن کون کررہا ہے،
جبارانورنے کہا کہ ریکارڈ دیکھ کربتاسکتے ہیں.

ایف ڈی اے کے ڈی جی ڈاکٹر فیصل عظیم نے اجلاس میں شرکت نہیں کی ہے، ارکان اسمبلی نے احتجاج کیا ہے، ایم پی اے چوہدری لطیف گجر نے فون کر کے ایف ڈی اے کہ ڈی جی کو بلوالیا ہے.

یہ اجلاس دو گھنٹے چلتا رہا ہے، اس اجلاس میں ایم ڈی واسا جبارانورکوباربارمعافی مانگنا پڑی ہے.