الیکشن کی تاریخ کا اعلان بہت جلد ہوجائے گا. نگراں وزیراعظم انوار الحق کاکڑ

حالیہ دورہ چین میں نجی کمپنیوں نے سرمایہ کاری پر سنجیدگی کااظہار کیا
0
83
Anwar Ul Haq Kakar

نگراں وزیراعظم انوار الحق کاکڑ نے کہا ہے کہ کیا آپ سب کو 2018 میں لیول پلئینگ فیلڈ یاد ہے اور میاں نوازشریف کو کوئی سیاسی فائدہ نہیں دیا گیا تھا جبکہ نواز شریف پاکستانی شہری ہیں اور بائیو میٹرک ان کا حق ہےایک پریس کانفرنس میں انہوں نے کہا کہ چینی میڈیا میں ہمیں بہت بہتر کوریج ملی ہے اور چینی صدر سے ملاقات انتہائی مثبت رہی ہے جبکہ پاکستان میں کوئی بھی حکومت ہو جبکہ چین سے ملاقات میں تسلسل اہمیت کا حامل ہے اور امید ہے حالیہ ملاقات کے بعد سی پیک کا تسلسل جاری رہے گا۔

جبکہ وزیراعظم نے کہا ہے کہ انتخابات کی گہما گہمی شروع ہوچکی ہیں اور الیکشن کی تاریخ کا اعلان بہت جلد ہوجائے گا، لیول پلیئنگ فیلڈ مخصوص جماعتوں کو جتوانے کیلئے بنائی جائے تو پھر تو بات کریں لیکن میں سیاسی باتیں کرنا نہیں چاہتا جبکہ کیا آپ سب کو 2018 میں لیول پلئینگ فیلڈ یاد ہے کونکہ نوازشریف کو کوئی سیاسی فائدہ نہیں دیا گیا تھا اور وہ پاکستانی شہری ہیں اور بائیو میٹرک ان کا حق ہے جبکہ نوازشریف پیدائشی پاکستانی ہیں تو انکی بائیومیٹرک کیلئے کونسااضافی اقدام ہوگیا ہے، آپ نادرا جائیں تو کیا وزیراعظم آفس کی اجازت درکار ہوگی۔

نگراں وزیراعظم انوار کاکڑ کا کہنا تھا کہ بلوچستان سے کہا جارہا ہے کہ لوگ ن لیگ میں شمولیت کریں گے، کیا بلوچستان کے لوگوں کا ن لیگ میں جاناغیرقانونی ہے، جو جہاں جس پارٹی میں رہنا چاہے انکی مرضی ہے، پیپلزپارٹی، ن لیگ اور جے یوآئی سمیت جو جہاں جانا چاہیں انکی مرضی، میرے دفتر سے کسی نے کہا اس کی پارٹی میں جائیں تو پھر میں جوابدہ ہوں، نگراں وزیراعظم کا کہنا تھا کہ چاہتےہیں غیرقانونی مقیم لوگ واپس جائیں اورقانونی دستاویز لے کر آئیں، ہم ایکسرسائز ان کیخلاف کررہے ہیں جو 40 سال سے مقیم ہیں، ہم نے صرف یہ کہا ہے کہ آپ نے جن جن لوگوں کو لیکر جانا ہے ہمیں بتائیں۔

نگراں وزیراعظم نے مزید کہا کہ حالیہ دورہ چین میں نجی کمپنیوں نے سرمایہ کاری پر سنجیدگی کااظہار کیا ہے اور سی پیک کے دوسرے پارٹ میں چین کی نجی کمپنیاں بھی سرمایہ کاری کریں گی جبکہ چین میں روس، کینیا اور دیگرممالک کے سربراہان سے ملاقات بھی ہوئی ہے اور کینیا کے صدرسے ارشد شریف کے قتل کیس پربھی بات کی تھی جس پر یقین دہانی کروائی گئی کہ قتل کیس کی کافی حد تک تحقیقات ہوچکی ہے جبکہ جو تحقیقات رہتی ہے وہ بھی جلد مکمل ہوجائے گی۔
مزید یہ بھی پڑھیں؛
راولپنڈی پشاور کےدرمیان ریلوے کے کرائے روڈ ٹرانسپورٹ سے بھی زیادہ
جعلی پاسپورٹس تحقیقات؛ حکام کی ملی بھگت کا انکشاف
علاوہ ازیں نگراں وزیراعظم نے پریس کانفرنس میں مزید بتایا کہ مختلف ممالک کی قیادت کیساتھ مشرقی وسطیٰ کی صورتحال پر بات چیت بھی ہوئی اور چین اور پاکستان میں ایک دوسرے سے متعلق معلومات کا تبادلہ ہوناچاہیے جبکہ چین سے 20 کے قریب مفاہمتی یاداشتوں پر دستخط بھی کیئے ہیں جبکہ ایک عرصے بعد چین کیساتھ اتنی بڑی تعداد میں معاہدے ہوئے ہیں اور اس کے ساتھ ہی چین نے مسئلہ کشمیر میں ہمارے موقف کی حمایت کی ہے اور چین کی سرمایہ کاری سے ملک میں معاشی استحکام آئے گا جبکہ اس کی نئی حکومت مانیٹری کرےہم نےکتنااورکیساکام کیا اور وہ اسے آگے لیکر چلے تاہم جب بھی کوئی حکومت آتی ہے وہ اپنے فیصلے لیتی ہے اور ہمارے فارن منسٹر کا فیصلہ تھا کہ روس کیساتھ میٹنگ ہو، قومیں،مملکتیں ایک دوسرے کیخلاف ہوتی ہیں پھرایک ساتھ بھی ہوجاتی ہیں، اب کے حالات میں چائنہ روس کوآرڈنیشن ہورہی ہے، ماضی میں ان کا ایک رویہ تھا، ہمارابھی تھا، دونوں اطراف سے ایک دوسرے کو سمجھنے کا موقع مل رہا ہے۔

Leave a reply