عوام کی خواہشات دکھ شیئرنہیں کرسکتے توحکومت کرنے کا کوئی جواز نہیں،خواجہ آصف

0
34

عوام کی خواہشات دکھ شیئرنہیں کرسکتے توحکومت کرنے کا کوئی جواز نہیں،خواجہ آصف

قومی اسمبلی اجلاس میں وفاقی وزیر دفاع خواجہ آصف نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا ہے کہ عوام کی خواہشات اور دکھ اگرشئیرنہیں کر سکتے تو حکومت کرنے کا کوئی جواز نہیں،

قومی اسمبلی اجلاس میں وزیر دفاع خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ رستے ہوئے زخموں کو نظر انداز کرنا نقصان دہ ہے معاملات کا سیاسی حل نہیں نکالا جاتا تو یہ بہت گھمبیر ہوگا ،خوشی کی بات ہے سوات کے لوگ اکٹھے ہوئے ہیں سوات میں لگی آگ مجھ سمیت سب کے دامن تک پہنچ سکتی ہے،مسئلہ 50 کی دہائی سے شروع ہے، بوجھ کو کب اپنے کندھوں سے اتاریں گے ایشوز کے حل کے لیے ہمیں سر جوڑ کر بیٹھنا چاہیے، سوات میں 13 سال بعد وہی سلسلہ شروع ہوگیاہے بلوچستان میں 50 کے دہائی سے ایک سلسلہ شروع ہوا، پھر سمجھوتے ہوئے، میں نے بلوچستان کی حکومت پر نقطہ چینی کی جسارت بھی کی تھی ہم بلوچستان گئے تو کہا گیا آپ کو نقطہ چینی نہیں کرنی چاہیے تھی،ہاؤس نے قانونی اور آئینی طریقے سے ایک حکومت کو ہٹایا،جن کی حکومت ہٹائی گئی وہ شخص ریاست کو یرغمال بنانا چاہتا ہے،سب کے ذمہ کوئی نہ کوئی گناہ ہے، اسے ماننا چاہیے، جو کہہ رہا ہوں وہ سنجیدہ ہے،ہاؤس کو بھی سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا چاہیے،ہم نے فاش غلطیاں کیں، حل ڈھونڈا جاسکتا تھا زخم بہہ رہا ہے، اس پر مرحم رکھنے کی ضرورت ہے، علاج کی ضرورت ہے، پاکستان کے قیام کے ایک ڈیڑھ سال بعد ایک مختلف رائے کو تسلیم نہیں کیا گیا، لیاقت باغ میں فائرنگ کے بعد لوگ دوسرے صوبوں میں چلے گئے، ایسی ہی صورتحال بلوچستان میں کئی دہائیوں سے ہے، اس کا حل ڈھونڈنا چاہیے سوا تین کروڑ پاکستانی کھلے آسمان تلے زندگی گزار رہا ہے،انہیں نہیں پتہ یہ زندگی کہاں لے جائے گی، سب کچھ لٹ چکا ہے، ملک کے موجودہ مسائل پر ہم سب کو مل کر کام کرنا ہوگا،

وزیر دفاع خواجہ آصف کا مزید کہنا تھا کہ کہ مجھے یہ تسلیم کرنے میں کوئی ہچکچاہٹ نہیں کہ ہمارا معاشرہ جمہوری نہیں، عوام کی خواہشات اور دکھ اگرشئیرنہیں کر سکتے تو حکومت کرنے کا کوئی جواز نہیں، خواجہ آصف کی تقریر کے دوران بات چیت کرنے پر شیری رحمان سے خاموش رہنے کی درخواست کی گئی ،وزیر دفاع خواجہ آصف نے شیری رحمان سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ مجھے بات کرنے دیں گی؟ شیری رحمان نے جواب دیا کہ کوشش کرتی ہوں، خواجہ آصف نے کہا کہ یہی تو آپ لوگوں کا رویہ ہے جس کی وجہ سے یہ مسائل ہیں،اگر آپ کوئی بات کریں گی تو میں اپنے انداز میں جواب دینے پر مجبور ہوں گا،معاملات کوسیاسی طریقے سے حل نہ کیاجائے تو مشکلات پیدا ہوجاتی ہیں،کچھ ایشوز ایسے ہیں جن کا حل بہت ضروری ہے ،ایشوز کے حل کے لیے ہمیں سر جوڑ کر بیٹھنا چاہیے، مسائل کا مستقل حل نکالنا چاہیے، ہم اسے مانیں یا نہ مانیں،اس وقت جس ملک کا نام پاکستان ہے، ہم ایک قوم ہیں،

وفاقی وزیرشیری رحمان کا کہنا تھا کہ ہمیں علم نہیں دہشت گردوں سے کس طرح سمجھوتہ کیا جاتا ہے ،پیپلز پارٹی کی دہشت گردی میں قربانیاں سب کے سامنے ہیں،پیپلزپارٹی نے توکہا تھا پاکستان کے باشندوں سے مذاکرات ہوسکتے ہیں یہ تو شر پسند بھی نہیں یہ مذہب کو استعمال کرتے ہیں جہاں آپریشنز ہورہے ہیں ہمیں اعتماد میں لیا جائے اوربتایا جائے کدھر کدھر ہورہا ہے،18اکتوبر کے زخم نہیں بھولیں،اے پی ایس پرکیا ہوا، بلوچستان کے لیے ٹروتھ اینڈ ری کنسلی ایشن کمیشن بنایا جائے ،ہم اقتدار میں اس لیے نہیں آئے تھے کہ دہشت گردی سراٹھائے ہمارے دور میں سوات آپریشن شروع ہوا تھا،انسانی حقوق کے معاملات پر آگے بڑھیں ،پارلیمنٹ کے پاس اختیارات ہیں، ہم نے ملک بچانا ہے ،اس کےلیے کام کرنا ہوگا

وفاقی وزیرشیری رحمان کا کہنا تھا کہ میرے خلاف سوشل میڈیا پرغیرمناسب باتیں پھیلائی جا رہی ہیں،سوشل میڈیا پر ویسے بھی خواتین سافٹ ٹارگٹ ہے

کوئی سیاست کے لیے اتنا کیسے گر سکتا ہے؟ پی ٹی آئی رہنماؤں کی آڈیو لیک پر ردعمل

عمران خان کے فوج اور اُس کی قیادت پر انتہائی غلط اور بھونڈے الزامات پر ریٹائرڈ فوجی سامنے آ گئے۔

آڈیو لیکس کا معاملہ، وزیراعظم نے قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس طلب کرلیا

آڈیو لیکس، معاملے کی تہہ تک نہ پہنچے تو معاملات اس سے زیادہ بگڑجائیں گے

ہیکرز نے دعوی کیا ہے کہ اب مزید آڈیو جمعہ کو جاری کی جائیں گی

عمران خان کا جھوٹا بیانیہ سب نے دیکھ لیا،آڈیو کے بعد بھی یوٹرن لے سکتے ہیں،عظمیٰ بخاری

 عمران خان جھوٹے بیانیے پر سیاست کر رہے ہیں،

 مریم نواز نے عمران خان پر کڑی تنقید 

Leave a reply