fbpx

احتساب کی آڑ میں ہراساں کرنے سے بیوروکریسی کی کارکردگی متاثر ہوئی: وزیراعظم

لاہور:وزیراعظم کے زیرصدارت اجلاس کا انعقاد کیا گیا جس میں ریٹائرڈ اور حاضر سروس افسران نے شرکت کی، شہباز شریف نے کہا کہ احتساب کی آڑ میں ہراساں کرنے سے بیوروکریسی کی کارکردگی متاثر ہوئی۔

ملاقات میں شریک افسران نے وزیرِاعظم کو گورننس، انتظامی امور اور پالیسیوں کے نفاذ کے حوالے سے اپنے تجربات سے آگاہ کیا۔

اجلاس میں چیف سیکرٹری پنجاب، مختلف محکموں کے سیکریٹریز، سابقہ چیف سیکرٹریز اور مختلف محکموں کے سربراہوں نے مستقبل کے منصوبوں، موثر بیوروکریسی کے کردار اور عوام کو مختلف شعبوں میں ریلیف کے حوالے سے تجاویز بھی دیں۔

اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم شہباز شریف نے کہا کہ دل کی گہرائیوں سے آپ کو عید کی مبارکباد پیش کرتا ہوں، پاکستان کی خوشی قسمتی ہے کہ یہاں آپ جیسے قابل افسران موجود ہیں، بلاشبہ آپ ملک کا قیمتی اثاثہ ہیں اور ملکی ترقی و خوشحالی میں سیاسی حکومت کی رہنمائی کرتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ قابلِ افسران سیاسی حکومت کی ملکی ترقی و خوشحالی میں رہنمائی اور معاونت کرتے ہیں، جو میگا پراجیکٹس پایہ تکمیل کو پہنچے چاہے وہ میٹرو ہو یا اورنج لائن افسران و دیگر حکومتی اہلکاروں کی شبانہ روز محنت کا نتیجہ ہیں، کپتان اپنی ٹیم کے بغیر کچھ نہیں کر سکتا، احتساب اور شفافیت کی آڑ میں افسران کی کو بلاوجہ ہراساں کرکے ان کی کارکردگی کو متاثر کرنے کی کوشش کی گئی، قومی خدمت ہمارا نصب العین ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اس امر میں کسی بھی قسم کی کوتاہی یا غفلت قبول نہیں، اللہ نے مجھے ایک بار پھر قوم کی خدمت کا موقع دیا ہے، میرا یہ عزم ہے کہ قابل افسران کے ساتھ یہ سفر شروع کروں، احتساب اور شفافیت لانے کیلئے قوانین کے حوالے سے تمام اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کی جائے گی، سول سرونٹس حکومتی ٹیم کا حصہ ہوتے ہے ان کے خدشات کا تدارک بھی ضروری ہے۔