ضمنی الیکشن: عمران خان کا مولانا قاسم سے جیتنا مشکل قرار

0
38

ضمنی الیکشن: عمران خان کا مولانا قاسم سے جیتنا مشکل قرار

خیبر پختونخوا کے ضلع مردان کے حلقہ این اے 22 میں قومی اسمبلی کی نشست پر 16 اکتوبر کو ہونے والے ضمنی انتخابات کے لیے تمام تر تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں ایک بین الاقوامی ادارے کے مطابق؛ مولانا قاسم سے جیتنا عمران خان کے لیے آسان نہیں ہوگا.
چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان اور پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے مشترکہ امیدوار مولانا محمد قاسم کے درمیان کانٹے دار مقابلہ ہونے جارہا ہے.

پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان صوبے میں دیگر دو قومی اسمبلی کی نشستوں پر بھی ضمنی انتخابات میں پارٹی کے امیدوار ہیں۔ خیال رہے کہ اس سیٹ پر 2018 کے عام انتخابات میں حلقہ این اے 22 سے پی ٹی آئی کے علی محمد خان کامیاب ہوئے تھے، جنہوں نے جمیعت علمائے اسلام کے مولانا محمد قاسم کو دو ہزار سے زائد ووٹ سے شکست دی تھی۔

انڈی اردو کے مطابق؛ گذشتہ عام انتخابات میں علی محمد خان نے 58 ہزار سے زائد ووٹ حاصل کیے تھے جبکہ دوسرے نمبر پر جمیعت علمائے اسلام کے مولانا محمد قاسم نے 56 ہزار سے زائد، تیسرے نمبر پر پاکستان مسلم لیگ ن کے جمشید خان نے 36 ہزار سے زائد ووٹ لیے تھے جبکہ عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے ملک امان خان نے 27 ہزار سے زائد ووٹ لیے تھے۔ ایک صحافی نے انڈی اردو کو بتایا کہ؛ عمران خان اب اس حلقہ سے انتخابات لڑ رہے لیکن ان کے مخالف امیدوار مولانا محمد قاسم ایک مضبوط امیدوار ہیں اور وہاں ایک مدرسہ چلاتے ہیں اور ان کے کافی فالورز موجود ہیں تو عمران خان کے لیے یہ حلقہ جیتنا اتنا آسان نہیں ہوگا۔
مزید یہ بھی پڑھیں؛ کپتان بابر اعظم کا جنم دن؛ 28 برس کا ہونے پر آئی سی سی کی مبارک باد
حکومت پاکستان آئی ایم ایف کے پروگرام کو مکمل کرنے کیلئے پرعزم. اسحاق ڈار
اعظم سواتی کیخلاف سائبر کرائم کا مقدمہ،جج نے بابر اعوان کو بیٹھنے کا حکم دے دیا
باغی ٹی وی کو خیبر پختونخواہ سے تعلق رکھنے والے ایک صحافی نے بتایا کہ عمران خان کا جیتنا اس لیئے بھی مشکل ہے کیونکہ کے پی کے لوگ اب ان کی حکومت سے تنگ نظر آتے ہیں کیونکہ انہوں نے کوئی اچھی کارکردگی نہیں دکھائی گئی ہے لہذا یہ وجہ ہے کہ ہم صحافی عمران خان کی یہاں جیت کو مشکل قرار دے رہے ہیں.

Leave a reply