fbpx

عمران خان کا متنازعہ بیان ملکی سلامتی کیلئے سنگین خطرہ

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین اور سابق وزیراعظم عمران خان کے حالیہ متنازعہ بیان نے قومی سلامتی سنگین خطرے میں ڈالی ہے، عمران خان کے بیان نے ملک کی آزادی، خود مختاری اور سالمیت کو سنگین خطرےمیں ڈالا ہے۔

عمران خان کے بیان سے لوگوں کے درمیان نفرت پیدا ہوئی ہے جبکہ عمران خان کا بیان ملکی امن وامان کیلئے انتہائی نقصان دہ ہے، سابق وزیراعظم نے اقتدار سے علیحدہ ہونے کے بعد عوام میں اشتعال انگرزی کو پروان چڑھایا ہے جو ملکی سلامتی کیلئے خطرناک ہو سکتاہے،ملک کے ریاستی اداروں کا احترام ہمیشہ ہی قوم کیلئے مقدم رہا ہے مگرپی ٹی آئی چیئرمین نے متعدد بار قابل احترام ریاستی اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کی .

کسی بھی ملک کے سابق وزیراعظم کیلئے اس کا ملک اور ادارے مقدم ہوتے ہیں مگر عمران خان نے محض اپنے اقتدار کی خاطر ملک کی سلامتی ،خودمختاری اور سالمیت کو داو پر لگا دیا بلکہ عوام کو بھی سول نافرمانی کی ترغیب دی جو کسی بھی مہزب معاشرے کیلئے زہر قاتل ہے.

سیاسی جماعتوں کی جانب سےبھی عمران خان کے متنازع بیان کی شدید مذمت کی گئی ہے، آصف علی زرداری کا کہنا ہے کہ کوئی بھی پاکستانی ملک کے ٹکڑے کرنے کی بات نہیں کرسکتا،طلال چودھری کہتے ہیں عمران خان اتنا بوکھلا گئے ہیں کہ ملک توڑنے کی بات کر رہے ہیں، ایم کیوایم نے عمران خان کے بیان کو کھلم کھلا ملک دشمنی قرار دیدیا۔

عمران خان کا ملک ٹوٹنے اور افواج پاکستان کیخلاف بیان ناقابل قبول قرار دئیے گئی ہیں.

آئین شکنوں کو گرفتار کر کے سلاخوں کے پیچھے ڈال دینا چاہئے،مریم نواز

شیریں مزاری کے خود کش حملے،کرتوت بے نقاب، اصل چہرہ سامنے آ گیا

اداروں کے خلاف بیانات سے گریز کرنا چاہیے۔جلیل احمد شرقپوری

عمران خان نے کل اداروں کے خلاف زہر اگلا ہے،وزیراعظم

عمران خان کے فوج اور اُس کی قیادت پر انتہائی غلط اور بھونڈے الزامات پر ریٹائرڈ فوجی سامنے آ گئے۔

خدارا ملک کا سوچیں،مجھے فخر ہے میں ایک شہید کا باپ ہوں،ظفر حسین شاہ

موجودہ سیاسی صورتحال میں فوج پر بلا وجہ الزامات،بلاوجہ منفی پروپیگنڈہ

پاک فوج کے ریٹائرڈ افسران کے نام سے جعلی ٹویٹر اکاؤنٹس سیاسی جماعت استعمال کرنے لگی