اٹلی کے تاریخی مینار کا گرنے کا خطرہ،علاقے کو سیل کردیا گیا

ٹاور گرنے کا انتباہ ایک سائنسی کمیٹی نے جاری کیا ہے
0
171

روم: اٹلی کا تاریخی ’جھکا ہوا مینار‘ کسی بھی وقت گرنے کے خطرے کی وجہ سے علاقے کو سیل کردیا گیا۔

باغی ٹی وی : غیرملکی میڈیا کے مطابق اٹلی کے دارالحکومت روم سے 375 کلومیٹر دور واقع اطالوی شہر بولوگنا میں قرون وسطیٰ دور کے ایک ہزار سال سے زائد قدیم گیریزنڈا ٹاور کو ضرورت سے زیادہ جھکاؤ کے بعد اچانک گرنے کے خطرے کی وجہ سے سیل کردیا گیا۔

ٹاور گرنے کا انتباہ ایک سائنسی کمیٹی نے جاری کیا ہے جو 2019 سے اس کی نگرانی کررہی ہے ٹاور میں نصب سینسر اُس کی نقل و حرکت کی پیمائش کرتے ہیں اکتوبر 2023 میں ریڈنگ نے خطرے کی گھنٹی بجائی تھی،‘ہائی الرٹ’ وارننگ میں کہا گیا ہے کہ لیننگ ٹاور کی بنیاد میں استعمال ہونے والے پتھروں میں دراڑیں اوپر کی اینٹوں تک پھیل سکتی ہیں-

سائفر کیس: عمران خان اور شاہ محمود قریشی کو 4 دسمبر کو نقول …

جس کے بعد انتظامیہ نے ٹاور کے آس پاس کا علاقہ سیل کرکے وہاں جانے والے راستے بند کردئیے ہیں شہری حکام کا کہنا ہے کہ ٹاور کے گرد ایک حصار بنایا جارہا ہے تاکہ لوگوں کی حفاظت کو یقینی بنایا جائے جبکہ 16 فٹ اونچی رکاوٹ کی تعمیر بھی شروع کردی ہے تاکہ اس کے گرنے کی صورت میں ملبہ کو روکا جا سکے۔

گزشتہ کئی برسوں کے دوران اطالوی حکومت نے اسکو برقرار رکھنے کے لیے وسیع کام کیا ہے لیکن اب ٹاور ضرورت سے زیادہ جُھک گیا ہے جس سے اس کے اچانک کسی بھی وقت گرنے کا خطرہ پیدا ہوگیا ہے، دستیاب معلومات کے مطابق گیریزنڈا ٹاور کی تعمیر 1173 میں شروع ہوئی تھی جو 14 ویں صدی سے 4 ڈگری کے زاویے پر جھکا ہوا ہے، واضح رہے کہ اسی نوعیت کا ایک اور ٹاور پیسا شہر میں بھی واقع ہے تاہم وہاں سیاحوں کو جانے کی اجازت ہے،دونوں ٹاورز کو مضبوط بنانے کا کام 1990 کی دہائی سے جاری ہے-

بھارت میں افغان سفارتخانہ دوبارہ کھول دیا گیا

میئر میٹیو لیپور نے اس ماہ کے شروع میں ایک مباحثے میں نوٹ کیا تھا کہ گاریزنڈا ٹاور جب سے بنایا گیا ہے جھک گیا ہے "اور تب سے ہی ایک تشویش ہے” اسے قرون وسطیٰ کے دور میں اضافی نقصان پہنچا جب اس کے اندر لوہے کا کام اور بیکری کے تندور بنائے گئے تھے میئر نے حکومت سے کہا ہے کہ وہ ٹاورز کو یونیسکو کے عالمی ثقافتی ورثے میں شامل کرنے کے لیے درخواست کرے۔

Leave a reply