غزہ میں اسرائیلی بمباری،11سال بعد پیدا ہونیوالے جڑواں بچے شہید

اس حملے میں رانیہ کا شوہر بھی شہید ہوگیا تھا
0
77

غزہ میں شادی کے 11سال بعد پیدا ہونیوالے جڑواں بچے خاندان کے12افراد کے ساتھ شہید ہو گئے۔

باغی ٹی وی: عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق جڑواں بچوں کو اتوار کے روز سپرد خاک کیا گیا، اس خاندان کے 14افراد رفح میں گھر پر اسرائیلی حملے کے دوران لقمہ اجل بنے ، جڑواں بچوں کی والدہ جن کے ہاں شادی کے 11برس بعد پہلی بار بچوں کی پیدائش ہوئی غم سے نڈھال ہیں۔

والدہ رانیہ کا کہنا ہے کہ ہماری کیا غلطی تھی؟اب میں کس طرح مزید زندہ رہ سکتی ہوں؟ مجھے ماں کون کہہ کر پکارے گا؟جڑواں بچوں کی والدہ رانیہ نے تدفین کے موقع پر اپنے ایک بچے کی میت گود میں اٹھائی ہوئی تھی جسے اپنی ٹھوڑی کے ساتھ لگا رکھا تھا اور اپنے بچے کے سر پر پیار کررہی تھیں، دوسرے بچے کی میت ایک اور غم زدہ شخص نے اٹھا رکھی تھی، رانیہ ابو عنزہ نے روتے ہوئے بتایا کہ میرا دل ٹوٹ کر رہ گیا ہے، اس حملے میں رانیہ کا شوہر بھی شہید ہوگیا تھا۔

اخوان المسلمین کے 8 رہنماؤں کو سزائے موت سنا دی گئی

غزہ میں سات اکتوبر سے جاری اور خونی جنگ میں اب تک ہلاکتوں کی تعداد 30,534 ہو گئی ہے جن میں 70 فیصد تعداد خواتین اور بچوں کی ہے دریں اثنا فلسطینی وزارت صحت نے اتوار کو کہا کہ غزہ میں بچوں کی بڑھتی اموات کی بنیادی وجہ پانی کی کمی اور غذائی قلت ہے۔

بھارت اور فرانس کا مصنوعی ذہانت پر تبادلہ خیال

لائشیا کے وزیراعظم شہباز شریف سے ٹیلیفونک رابطہ،منصب سنبھالنے پرمبارکباد

Leave a reply