مقبوضہ کشمیر:حریت پسندوں کے سیکورٹی فورسز پر 2 حملے 3 سی آر پی ایف اہلکار ہلاک

0
48

سرینگر:مقبوضہ کشمیر:حریت پسندوں کے سیکورٹی فورسز پر 2 حملے 3 سی آر پی ایف اہلکار ہلاک .مقبوضہ کشمیر میں کپواڑہ اور سرینگر میں حریت پسندوں نے سیکورٹی فورسز پر2بڑے حملے کئے ہیں۔

شمالی کشمیر کے ضلع کپواڑہ میں ہندواڑہ کے علاقے کرال گنڈ میں حریت پسندوں کے ایک حملے میں ایک نوجوان شہید اور سی آر پی کے تین اہلکار ہلاک ہوگئے۔اس سے قبل ہندواڑہ میںضلعی عہدیداروں نے ساوتھ ایشین وائر کو بتایاکہ ایک نامعلوم حریت پسند کی موت ہوئی ہے۔ یہ سی آر پی ایف پارٹی پر حملہ تھا جس کا موثر جواب دیا گیا ۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق حریت پسندوں نے سیکورٹی اہلکاروں پر ونگم اسٹاپ کے پاس فائرنگ کی، جہاں پر مشترکہ سیکورٹی اہلکاروں نے ناکہ لگایاہوا تھا۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ اس حملے میں کچھ سیکورٹی اہلکار زخمی ہوئے تھے، جس میں سے تین بعد میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے۔جن کے نام سنتوش مشرا، چندرا شیکھر اور اشونی یادو ہیں۔ ساوتھ ایشین وائر کے ذرائع کے مطابق شہید ہونے والا ایک 17 سالہ نوجوان حازم بٹ ولد غلام محمد بٹ تھا۔

انہوں نے بتایا کہ سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو سیل کردیا ہے اور دیگر حملہ آوروں کی تلاش شروع کردی گئی ہے۔ دی ریزسٹنس فرنٹ نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق یہ حملہ فوج کے ایک کرنل ، ایک اہم ، دو فوجیوں کی ہلاکت کے ایک دن بعد ہوا ہے۔
سری نگر شہر کے مضافات میں واگورہ نوگام کے علاقے میں بھی حریت پسندوں نے سنٹرل انڈسٹریل سیکیورٹی فورس کی ایک گشتی پارٹی پر حملہ کیاجس میں ایک سی آئی ایس ایف اہلکار کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔

سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے اور حملہ آوروں کی گرفتاری کے لئے تلاش جاری ہے۔

ہندواڑہ میں سالوں پرسکون رہنے کے بعد مسلسل دو دن کے دوران 2 مہلک حملوں میں 8 فوج / سی آر پی ایف / جے کے پی کے 8 اہلکاروں کی ہلاکت حکام کے لئے ایک بڑی پریشانی کا باعث ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ شمالی کشمیر کے ہندواڑہ بیلٹ میں حریت پسندوں نے دوسرا محاذ کھول دیا ہے۔

Leave a reply