خیبر پختونخوا میں خواجہ سراؤں کے لئے مفت قانونی اقدامات

0
149

لائرز فار رائٹس نیٹ ورک کے تحت خواجہ سراؤں کو مفت قانونی مدد کے لیے اقدامات کا آغاز ہوگیا ہے۔ مفت لیگل سہولیات میسر آنے سے اس طبقے کو کافی سپورٹ ملے گی۔ پشاور میں خواجہ سرا کمیونٹی کے خلاف قتل اور تشدد کے واقعات تھم نہ سکے، پولیس کے مطابق رواں سال صوبائی دارالحکومت میں تین خواجہ سرا کو قتل کیا گیا
آرزو خان جو خواجہ سرا کمیونٹی کی ڈی آر سی ممبر ہیں ان کا کہنا ہے کہ قانونی سہولیات دستیاب نہ ہونے کی وجہ سے خواجہ سراؤں کے قاتل با آسانی رہا ہوجاتے ہیں۔
غیرسرکاری تنظیم سے تعلق رکھنے والی خورشید بانو کا کہنا ہے کہ لائرز فار رائٹس نیٹ ورک کے تحت خواجہ سراؤں کو مفت لیگل سہولیات فراہم کی جائیں گی۔
دوسری طرف وکلاء کا کہنا ہے کہ ابتدائی طور پر 4 اضلاع میں خواجہ سراؤں کو مفت قانونی مدد فراہم کی جائے گی۔
معاملے کی سنگینی کو دیکھتے ہوئے ایک غیرسرکاری تنظیم نے لائرز فار رائٹس نیٹ ورک کا آغاز کردیا ہے۔ جس کے بعد امید ہے کہ اب خواجہ سراؤں کے قاتل انجام کو پہنچیں گے۔سکسٹین ڈیزآف ایکٹی وزم میں محروم طبقوں کے حقوق کے لیے یہ اقدام نہایت قابل ستائش تصور کیا جارہا ہے۔

Leave a reply