نوبیل انعام یافتہ بنگلادیشی ماہراقتصادیات محمدیونس کو6ماہ قیدکی سزا

محمد یونس کو لیبر قوانین کی خلاف ورزیوں اور مبینہ بدعنوانی سمیت 100 سے زائد دیگر الزامات کا سامنا ہے
0
118
bangladesh

بنگلہ دیش میں گرامین بینک کے بانی اور نوبیل انعام یافتہ ماہراقتصادیات محمد یونس کو لیبر قوانین کی خلاف ورزی پر مجرم قرار دے دیا گیا۔

باغی ٹی وی: عالمی خبررساں ادارے "اے ایف پی” کے مطابق دارالحکومت ڈھاکہ کی ایک لیبر عدالت نے محمد یونس کو ’چھ ماہ کی سادہ قید‘ کی سزا سنائی ہے لیڈ پراسیکیوٹر خورشید عالم خان نے فیصلے سے قبل اے ایف پی کو بتایا کہ ہم نے ثابت کر دیا کہ پروفیسر محمد یونس اور دیگر نے لیبر قوانین کے لازمی تقاضوں کی خلاف ورزی کی ہے جرم ثابت ہونے پر یونس کو چھ ماہ تک قید کی سزا ہو سکتی ہے ہمیں امید ہے کہ عدالت اعلیٰ ترین سزا سنائے گی محمد یونس کو لیبر قوانین کی خلاف ورزیوں اور مبینہ بدعنوانی سمیت 100 سے زائد دیگر الزامات کا سامنا ہے-

مجرم قرار دینے کے بعد محمد یونس نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو میں کہا کہ ’مجھے ایک ایسے جرم کی سزا دی گئی ہے جو میں نے نہیں کیا،انہوں نے گزشتہ ماہ بھی ایک سماعت کے بعد میڈیا کو بتایا تھا کہ انہوں نے بنگلہ دیش میں قائم کی گئی 50 سے زیادہ سوشل بزنس فرمز میں سے کسی سے بھی منافع نہیں اٹھایا۔

اسرائیلی کی بمباری ،مسجد اقصیٰ کے سابق امام شہید

واضح رہے کہ گرامین بینک کے بانی 83 سالہ محمد یونس کو اپنے مائیکرو فنانس بینک کے ذریعے لاکھوں افراد کو غربت سے نکالنے کا سہرا دیا جاتا ہے لیکن طویل عرصے سے ان کا ملک کی وزیر اعظم شیخ حسینہ سے محاذ آرائی چل رہی تھی محمد یونس اور گرامین ٹیلی کام کے تین ساتھیوں پر لیبر قوانین کی خلاف ورزی کا الزام عائد کیا گیا، یہ الزام اس وقت عائد کیا گیا تھا جب وہ کمپنی میں مزدوروں کی فلاح و بہبود کا فنڈ قائم کرنے میں ناکام رہے تھے۔

محمد یونس کے وکیل خواجہ تنویر نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ یہ مقدمہ بے بنیاد، جھوٹا اور بدنیتی پر مبنی ہے اس کیس کا واحد مقصد دنیا کے سامنے انہیں ہراساں کرنا اور ان کی تذلیل کرنا ہے،دوسری طرف درجنوں افراد نے عدالت کے باہر محمد یونس کی حمایت میں ریلی نکالی اور ان کے حق میں نعرے لگائے۔

انٹرنیشنل اسپیس اسٹیشن میں رہنے والے نئے سال کا استقبال 16 بار کریں گے

Leave a reply