9 مئی :حساس ادارے کے دفتر پر حملےکے 4 ملزمان کیخلاف آرمی ایکٹ کےتحت مقدمہ چلانےکی اجازت

0
38

انسداد دہشت گردی کی عدالت نے حساس ادارے کے دفتر پر حملے کے 4 ملزمان کے خلاف آرمی ایکٹ کے تحت مقدمہ چلانے کی اجازت دے دی۔

باغی ٹی وی: فیصل آباد کی انسداد دہشت گردی عدالت (اے ٹی سی) نے 9 مئی کو حساس ادارے کے دفتر پر حملےکے 4 ملزمان کے خلاف آرمی ایکٹ کےتحت مقدمہ چلانےکی اجازت دےدی عدالت نےحکم کے مطابق ملزمان کےخلاف آرمی سیکرٹ ایکٹ کےتحت بھی کارروائی ہوگی۔

9 مئی حملوں کی ابتدا اورسوشل میڈیا پر اخلاقیات کی تباہی عارف علوی نے کی …

عدالتی حکم کے بعد حساس ادارے کی ٹیم نے ملزمان کو سینٹرل جیل سے تحویل میں لے لیا ہے پولیس حکام کے مطابق ملزمان کے خلاف تھانہ سول لائن میں درج مقدمہ کی سماعت آرمی ایکٹ کے تحت ہوگی۔

واضح رہے کہ اس سے قبل 25 مئی کو بھی لاہور کے جناح ہاؤس میں جلاؤ گھیراؤ اور توڑ پھوڑ کے مقدمے میں ملوث 16 ملزمان کے خلاف آرمی ایکٹ کے تحت مقدمہ چلانے کی اجازت دی جاچکی ہے۔

گرفتار خواتین پر تشدد کے حوالے سے پروپیگنڈا کیا جارہا ہے،آئی جی پنجاب

لاہور کی انسداد دہشت گردی عدالت سے کمانڈنگ افسر نے ملٹری ایکٹ کے تحت کارروائی کے لیے 16 شرپسندوں کی حراست مانگی تھی، عدالت نے کمانڈنگ افسر کی استدعا منظور کرتے ہوئے سابق ایم پی اے میاں اکرم عثمان سمیت 16 ملزمان کو کمانڈنگ آفیسر کے حوالے کرنے کا حکم دیا تھا۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا تھا کہ کمانڈر افسر کے مطابق ملزمان آفیشنل سیکرٹ ایکٹ کےسیکشن 3، 7 اور 9 کےتحت قصوروارپائے گئے ہیں، ملزمان کےخلاف آرمی ایکٹ 1952 کےتحت ٹرائل ہوسکتا ہے پراسکیوشن نےکمانڈرکی درخواست پراعتراض نہیں کیاسپرنٹینڈنٹ کیمپ جیل 16 ملزمان کو مزید کاروائی کے لیے کمانڈنگ افسر کے حوالے کردے-

ڈالرکی اونچی اُڑان، 312 روپے کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا

Leave a reply