این اے 15 مانسہرہ کا حتمی نوٹیفیکیشن روکنے سے متعلق فیصلہ محفوظ

0
83
pmln

ا لیکشن کمیشن نے این اے 15 مانسہرہ کا حتمی نوٹیفکیشن روکنے سے متعلق فیصلہ محفوظ کرلیا۔چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں 4 رکنی بینچ نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 15مانسہرہ کے نتائج میں مبینہ تبدیلی کی سماعت کی۔اس موقع پر مسلم لیگ ن کے قائد نواز کے وکیل نے کہا کہ این اے 15مانسہرہ کے 125پولنگ اسٹیشنز کے فارم 45 نہیں ملے، کالا ڈھاکہ کا علاقہ انتہائی پسماندہ اور برفباری والا علاقہ ہے۔نواز شریف کے وکیل نے کہا کہ پریذائیڈنگ افسران نے پولنگ ایجنٹس کو نکال دیا تھا، شفاف انتخابات کا انعقاد الیکشن کمیشن کی ذمے داری ہے۔انہوں نے کہا کہ اس حلقے میں الیکشن شفاف نہیں ہوئے، فارم 45 بغیر فارم 47 جاری نہیں ہوسکتا۔
سماعت کے دوران کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے کہا کہ ریٹرننگ افسر بے ہوش اور اسپتال میں ہے۔ نواز شریف کے وکیل نے این اے 15مانسہرہ کا حتمی نوٹیفکیشن روکنے کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ ریٹرننگ افسر کا این اے 15مانسہرہ کا جاری فارم 47 درست نہیں ہے۔ نواز شریف کے وکیل نے کہا کہ اس حلقے کا الیکشن شفاف نہیں ہوا۔
واضح رہے کہ مسلم لیگ ن کے رہنما کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے این اے 15 مانسہرہ کا نتیجہ الیکشن کمیشن میں چیلنج کر دیا۔ الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے گفتگو میں مسلم لیگ ن کے رہنما کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے کہا کہ مانسہرہ سے نواز شریف کامیاب ہوئے اس لیے ریٹرننگ افسر کا فارم 47 درست نہیں۔45 حلقوں میں نتائج تبدیل کرنے کا دعویٰ کرنے والوں نے 35 پنکچر کا الزام بھی لگایا تھا، الزام سے کچھ نہیں ہوتا نتائج کی تبدیلی ثابت کریں۔واضح رہے کہ فارم 47 کے مطابق این اے 15 مانسہرہ سے نواز شریف کو شکست ہوئی تھی جبکہ آزاد امیدوار گستاسب خان کامیاب ہوئے تھے۔

Leave a reply