وزیراعظم شہبازشریف جنرل اسمبلی کے افتتاحی اجلاس میں شریک ،اہم گفتگو بھی جاری

0
45

نیویارک :وزیراعظم شہباز شریف نےابھی تھوڑی دیر پہلے نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 77ویں اجلاس کے اعلیٰ سطحی مشاورتی افتتاحی اجلاس میں شرکت کی۔استقبالیہ کی میزبانی اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل (یو این ایس جی) انتونیو گوٹیرس نے کی۔

وزیر اعظم کے دفتر کے مطابق یہ استقبالیہ اقوم متحدہ کی جنرل اسمبلی  میں شرکت کرنے والے سربراہان مملکت اور حکومتوں کے لیے منعقد کیا گیا تھا۔استقبالیہ کے دوران وزیراعظم نے نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن سے بات چیت کی۔

 

 

تقریب کے موقع پر شہباز شریف نے فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون سے بھی بات چیت کی۔ وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری اور وزیر مملکت حنا ربانی کھر بھی وزیراعظم کے ہمراہ ہیں۔

 

اس اجلاس میں اپنے افتتاحی کلمات میں، اقوام متحدہ کے سربراہ گٹیرس نے بڑھتی ہوئی قیمتوں، عالمی درجہ حرارت اور مہلک تنازعات سے آنے والے "عالمی عدم اطمینان کے موسم سرما” کے بارے میں سخت انتباہ جاری کیا۔

اس موقع پر اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ "اعتماد ٹوٹ رہا ہے، عدم مساوات پھٹ رہی ہے، ہمارا سیارہ جل رہا ہے۔ لوگ تکلیف دے رہے ہیں –

 

 

سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ نے اجلاس سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عالمی درجہ حرارت میں کی وجہ سے پاکستان میں جوتباہی آئی ہے وہ سب کے لیے وارننگ ہے اقوام متحدہ کے سربراہ نے مزید کہا کہ آلودگی پھیلانے والوں کو ادائیگی کرنی ہوگی۔
کا دورہ نیویارک

یاد رہے کہ اپنے دورے کے دوران وزیر اعظم شہباز فرانس کے صدر ایمانوئل میکرون، آسٹریا کے چانسلر کارل نیہمر، ہسپانوی صدر پیڈرو سانچیز پیریز کاسٹیجن اور ایرانی صدر سید ابراہیم رئیسی سے دو طرفہ ملاقاتیں کریں گے۔

دوپہر کو وزیراعظم نیویارک ٹائمز کے ایڈیٹوریل بورڈ کے ساتھ انٹرویو کے لیے ٹائمز سینٹر جائیں گے۔بعد ازاں ان سے امریکی خصوصی ایلچی برائے موسمیاتی تبدیلی جان کیری ملاقات کریں گے۔

 

وزیراعظم شہبازشریف جنرل اسمبلی کے افتتاحی اجلاس میں شریک ،اہم گفتگو بھی جاری

 

 

21 ستمبر کو شہباز شریف انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ کی منیجنگ ڈائریکٹر کرسٹالینا جارجیوا، ورلڈ بینک کے صدر ڈیوڈ مالپاس اور ترک صدر رجب طیب اردوان سے ملاقات کریں گے۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے صدر سے ملاقات کے علاوہ وزیراعظم امریکی صدر جو بائیڈن کی طرف سے دیے جانے والے عشائیے میں بھی شرکت کریں گے۔

مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس، یو این ایس جی گوٹیرس، چینی صدر لی کی چیانگ اور جاپانی وزیراعظم فومیو کشیدا سے ملاقاتیں بھی وزیراعظم شہباز شریف کی مصروفیات کا حصہ ہوں گی۔

23 ستمبر کو، وزیر اعظم اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کریں گے، جہاں ان کی تقریر ملک میں حالیہ آب و ہوا سے پیدا ہونے والے تباہ کن سیلابوں کے نتیجے میں پاکستان کو درپیش چیلنجوں پر مرکوز ہوگی۔

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری، وزیر مملکت برائے امور خارجہ حنا ربانی کھر، وزیر دفاع خواجہ محمد آصف اور وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب دیگر اعلیٰ حکام کے ہمراہ وزیراعظم کے ہمراہ ہوں گے۔

اس سال کی جنرل اسمبلی خاص طور پر اہم ہے کیونکہ یہ 2019 کے بعد اقوام متحدہ میں عالمی رہنماؤں کی پہلی ذاتی ملاقات ہوگی۔ 2020 اور 2021 کے سیشن کو کووڈ 19 کی وبا کی وجہ سے ورچوئل میٹنگز میں تبدیل کر دیا گیا تھا۔

صحافیوں کے خلاف مقدمات، شیریں مزاری میدان میں آ گئیں، بڑا اعلان کر دیا

سرکاری زمین پر ذاتی سڑکیں، کلب اور سوئمنگ پول بن رہا ہے،ملک کو امراء لوٹ کر کھا گئے،عدالت برہم

جتنی ناانصافی اسلام آباد میں ہے اتنی شاید ہی کسی اور جگہ ہو،عدالت

اسلام آباد میں ریاست کا کہیں وجود ہی نہیں،ایلیٹ پر قانون نافذ نہیں ہوتا ،عدالت کے ریمارکس

Leave a reply