پی ٹی آئی رہنماؤں کی پنجاب اسمبلی کا اجلاس پولیس سے محاصرہ کرواکر رکوانےکی مذمت

0
21

لاہور: پی ٹی آئی رہنماؤں نے پنجاب اسمبلی کا اجلاس پولیس سے محاصرہ کرواکر رکوانےکی مذمت کی ہے-

باغی ٹی وی : پی ٹی آئی رہنما فیاض الحسن چوہان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اسپیکر پنجاب اسمبلی نے آئین و قانون کے تحت اسمبلی کا اجلاس بلایا ہے۔ آج ہر حال میں اجلاس ہو گا اور ایجنڈے پر مکمل عملدرآمد ہو گا۔

عمران خان کو 3 روز جیل میں رکھا جائے تو اس کی سیاست نکل جائے گی،رانا ثناءاللہ

انہوں نے کہا کہ حکومت کے لیے آگے کھائی اور پیچھے پی ٹی آئی ہے۔ پرویز الہٰی اور پی ٹی آئی کے ساتھ آل شریف کا بغض ہے اور آج نہیں تو کل اجلاس ہو جائے گا تحریک انصاف کامیاب اور ن لیگ کی ضمانتیں ضبط ہوں گی۔ اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک جمع ہےاسپیکر نے آئین و قانون کےتحت اسمبلی کا اجلاس بلایا ہےپرویز الہٰی اسپیکر پنجاب اسمبلی ہیں اتفاق فاونڈری میں کوئی مزدور احتجاج کرتا تو اسے بھٹی میں پھینک دیا جاتا تھا۔

دوسری جانب رہنما پی ٹی آئی فرخ حبیب نے کہا کہ ضمیر فروش ڈی سیٹ ہوگئے،حمزہ شہباز وزیراعلیٰ نہیں رہا،آئی جی پنجاب شریف خاندان کے ذاتی ملازم نہ بنے،پنجاب اسمبلی کا اجلاس پولیس سے محاصرہ کرواکر رکوانے کی مذمت کرتے ہیں،اسمبلی اسٹاف کی غیر قانونی گرفتاریاں قابل مذمت ہیں،شریف خاندان جب بھی اقتدار میں آتا ہے تو ملک کو پولیس اسٹیٹ بنا دیتا ہے-

شہباز گل نے کہا کہ امپورٹڈ حکومت آئین اور قانون کی خلاف ورزی کی نئی داستانیں رقم کر رہی ہے ، پنجاب اسمبلی کو بند کر کے ڈی جی پارلیمانی افیئرز اور سیکریٹری پنجاب اسمبلی کو گرفتار کیا گیا-

دیکھتے ہیں کون پنجاب اسمبلی میں داخل ہونے سے روکتا ہے،پرویز الہی

شیخ رشید نے کہا کہ مسلم لیگ ن والے نواز شریف کو بلائیں ، کیوں نہیں بلاتے؟ کیونکہ انہیں پتہ ہے حکومت جا رہی ہےاب انہیں عوام میں جانا ہے۔ عوام میں آئیں، عوام ان کا سیاسی حشر کریں گےآصف زرداری نے ن لیگ کے ہاتھ پاوں باندھ کرسیاسی طور پر لکشمی چوک میں مارا ہے۔جنہیں گالیاں دیتے تھے انہی سے مدد مانگ رہے ہیں آج تین بجے کے بعد عمران خان لانگ مارچ کی تاریخ کا فیصلہ کریں گے۔

شیخ رشید نے پنجاب اسمبلی میں پولیس تعینات کرنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پنجاب اسمبلی کے دروازے پولیس کے ذریعے بند کردئیے گئے ۔ پنجاب اسمبلی کا گیٹ بند کرنا پہلی قسط ہے، دوسری قسط آنے والی ہےیہ سمجھتے ہیں کہ ایف آئی اے میں اپنا پراسیکیوٹر لگا کر شہباز شریف اور حمزہ پر فرد جرم عائد نہیں ہوگی۔ انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ سائینٹفک انداز سے کیسز کی تفتیش کو آگے بڑھایا جائے۔

انہوں نے الزام عائد کیا ہے کہ یہ لوگ مجھے قتل کروانا اور ملک میں انتشار پھیلانا چاہتا ہے۔ انکا کہنا ہے کہ پاک فوج اپنے لوگوں پر گولی نہیں چلوائے گی۔

لاہور میں دسویں جماعت کی طالبہ کا دن دیہاڑے اغوا

Leave a reply