سعودی عرب کاتیل کی پیداوار میں 10 لاکھ بیرل یومیہ کمی جاری رکھنے کا اعلان

تیل کی پیداوار میں کمی کی پالیسی کا اطلاق جولائی 2023 میں ہوا تھا
0
139
sa

ریاض: سعودی وزارت توانائی کے ایک سرکاری ذریعے نے اعلان کیا ہے کہ ’سعودی عرب تیل کی پیداوار میں 10 لاکھ بیرل یومیہ کی رضاکارانہ کمی کو جاری رکھے گا‘۔

باغی ٹی وی:برطانوی خبررساں ادارے "روئٹرز”کے مطابق تیل برآمد کرنے والے سرفہرست ممالک سعودی عرب اور روس نے اتوار کے روز تصدیق کی کہ وہ سال کے آخر تک اپنی اضافی رضاکارانہ تیل کی پیداوار میں کمی کو جاری رکھیں گے کیونکہ طلب اور معاشی نمو کے خدشات خام مارکیٹوں پر بدستور دباؤ ڈال رہے ہیں۔

وزارت توانائی کے ایک ذریعہ نے ایک بیان میں کہا کہ سعودی عرب نے تصدیق کی ہے کہ وہ 10 لاکھ بیرل یومیہ (بی پی ڈی) کی اضافی رضاکارانہ کٹوتی کو جاری رکھے گا اور دسمبر کے لیے تقریباً 9 ملین بیرل پیداوار کرے گا۔

ڈالرکی قیمت میں اضافے کاسلسلہ جاری

ایس پی اے کے مطابق تیل کی پیداوار میں کمی کی پالیسی کا اطلاق جولائی 2023 میں ہوا تھا اور اس میں دسمبر 2023 کے آخر تک توسیع کی گئی تھی سعودی عرب کی پیداوار دسمبر 2030 میں تقریباً 9 ملین بیرل یومیہ ہوگی،ذرائع کے مطابق اس کمی کے فیصلے پر اگلے ماہ نظر ثانی کی جائے گی جس میں رضاکارانہ کمی کو جاری رکھنے، کمی کو بڑھانے یا پیداوار میں اضافے پر غور کیا جائے گا۔

ایک ہفتے میں 12اشیا کی قیمتوں میں اضافہ اور 14 سستی ہوئیں،ادارہ شماریات

ذرائع نے وضاحت کی یہ فیصلہ اس رضاکارانہ کمی کے علاوہ ہے جس کا اعلان اپریل 2023 میں کیا گیا تھا اور جو دسمبر 2024 کے آخر تک جاری رہے گی، یہ اضافی رضاکارانہ کمی اوپیک پلس ممالک کی جانب سے تیل کی منڈیوں کے استحکام اور توازن کو سپورٹ کرنے کے مقصد سے کی جانے والی احتیاطی کوششوں کو تقویت دینے کے لیے ہے۔

ملک میں سونے کی قیمت میں مزید اضافہ

Leave a reply