ورلڈ ہیڈر ایڈ

مقبوضہ مغربی کنارے کو اسرائیل کا حصہ قرار دیے جانے پر سعودی عرب نے شدید مزمت کر دی

مغربی کنارے کو اسرائیل کا حصہ قرار دیے جانے پر سعودی عرب کی شدید مزمت .او آئی سی کا اجلاس بلانے کی تجویز
تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کی طرف سے اسرائیل کے اس علان کی شدید مزمت کی گئی ہے جسمیں اسرائیلی وزیر اعظم نے اعادہ کیا کہ وہ الیکشن جیتنے کے بعد مقبوضہ مغربی کنارے کو اپنا باقاعدہ حصہ بنانے کا اعلان کریں گے جس پر 1967ء پر قبض کیا تھا.

سعودی عرب نے اسرائیلی وزیراعظم کے بیان کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس جیسے اور دیگر ایشوز پر او آئی سی کا اجلاس بلانا چاہیے . عرب اقوام اور اسلامی ممالک فلسطینی کاز کی حیثیت کو متاثر کرنے کی اجازت نہیں دے گی۔ سعودیہ سمیت تمام عرب ایسے کسی قسم کے اقدام کی حوصلہ شکنی کریں جس میں عرب کے مقبوضہ علاقوں کو غصب کرنے کی کوشش کی جائےگی،

سعودی عرب نے اس معاملے پر تبادلہ خیال کرنے کے لیے اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کا وزرائے خارجہ کی سطح پر ہنگامی اجلاس طلب کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ سعودی عرب کا کہنا ہے کہ نیتن یاھو کے منصوبے کا مقابلہ کرنے، اس سے نمٹنے اور تنازع فلسطین کے حل کی کوششیں تیز کرنے کے ساتھ اسرائیل کے رویوں اور اقدامات پر گہری نظر رکھی جائے گی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.