سوشل میڈیا پر دوستی،پھر عریاں تصاویر،پھر زیادتی،کم عمر لڑکیاں‌بنتی ہیں زیادہ شکار

0
463
girl

سوشل میڈیا کا استعمال، کم عمر لڑکیوں کے ساتھ زیادتی کی وجہ بن رہا ہے، والدین بچوں کی نگرانی و تریبت کریں،ملائشین پولیس نے کم عمر لڑکیوں کے ساتھ زیادتی کے بڑھتے واقعات پر والدین کو مشورہ دے دیا

ملائشیا میں پچھلے تین سالوں میں کم عمر لڑکیوں کے ساتھ عصمت دری کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے اور پولیس کا خیال ہے کہ ان میں سے زیادہ تر کی ابتدا سوشل میڈیا کے ذریعے ہوئی جس میں واٹس ایپ جیسی چیٹ ایپلی کیشنز بھی شامل ہیں۔پولیس افسر سیتی کمسیہ حسن جو خواتین اور بچوں کے حوالہ سے ہونے والے جرائم کو دیکھتی ہیں کا کہنا ہے کہ جن بچیوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات پیش آئے انہوں نے بتایا کہ سوشل میڈیا کے ذریعے ہی رابطہ ہوا تھا،

زیادتی کا شکار ہونے والی کم عمر لڑکیوں کی اکثریت نے تفتیشی افسران کو بتایا کہ وہ ذاتی طور پر ملنے سے پہلے مجرموں کو سوشل میڈیا جیسے آن لائن چیٹ فورم کے ذریعے جانتی تھیں۔اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ان لڑکیوں کی سوشل میڈیا پر ان ملزمان کے ساتھ بات چیت ہوئی، دوستی ہوئی پھر ملزمان کی جانب سے ڈیمانڈ پر لڑکیاں عریاں تصاویر بھیجتی رہیں۔ اس کے بعد ملاقات کا مرحلہ آتا ہے جس کے نتیجے میں ان لڑکیوں کی عصمت دری کی جاتی ہے،

پولیس کے اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ 2021 میں کم عمر لڑکیوں کے ساتھ ریپ کے 1,299 واقعات رپورٹ ہوئے، جو 2022 میں بڑھ کر 1,388 اور 2023 میں 1,590 ہو گئے۔ کم عمر لڑکیوں کے ساتھ اجتماعی عصمت دری کے واقعات بھی بڑھتے ہوئے رحجان پر ہیں، 2021 میں 61 واقعات رپورٹ ہوئے، جبکہ 2021 میں یہ تعداد 120 تھی۔ اور 2023 میں 104۔

سیتی کامسیہ کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا کا استعمال بچوں کے جنسی استحصال کے مواد کو اسی جنسی رجحان والے دوسرے افراد تک پھیلانے کے لیے بھی کیا جاتا ہے۔ گرومنگ کے مسئلے سے نمٹنے میں والدین کا کردار بہت اہم ہے۔بچوں میں سائبر کی دنیا میں حدود طے کرنے کی ضرورت پیدا کریں۔ انہیں یاد دلائیں کہ وہ آزادانہ طور پر کسی سے بات چیت نہ کریں یا ان کے رسم و رواج، ثقافتوں اور مذاہب کی طرف سے ممنوعہ کاموں میں ملوث نہ ہوں۔انہوں نے والدین کو مشورہ دیا کہ وہ اپنے بچوں کی سرگرمیوں پر نظر رکھیں، خاص طور پر ٹیلی کمیونیکیشن گیجٹس اور آلات کے استعمال میں۔ سب سے اہم بات، والدین کو اپنے بچوں میں مضبوط اقدار کو فروغ دینا چاہیے تاکہ وہ کسی بھی ایسی سرگرمی سے باز آجائیں جو اخلاقی اور مذہبی اصولوں کے خلاف ہو۔

حاجرہ خان کی کتاب کا صفحہ سوشل میڈیا پر وائرل،انتہائی شرمناک الزام

سوشل میڈیا پر رابطہ،دبئی ویزے کے چکر میں خاتون عزت لٹوا بیٹھی

مذہبی، مسلکی، لسانی منافرت پھیلانے والے 462 سوشل میڈیا اکاونٹس بند

غریدہ فاروقی کیخلاف سوشل میڈیا پر مہم، حکومت کا نوٹس

عدالت کا سوشل میڈیا پلیٹ فارمز سے فحش مواد ہٹانے کا حکم

اس کے ساتھ ساتھ، والدین کو اپنے بچوں کی خود آگاہی میں اضافہ کرنا چاہیے تاکہ وہ جدید ترین مواصلاتی آلات کا استعمال کرتے ہوئے پیڈو فائلز کے استحصال سے بچ سکیں۔بچوں کو یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ ان کی فلاح و بہبود کے لیے کیا خطرہ ہے اور اپنی حفاظت کیسے کی جائے،

شہر یار آفریدی پی ٹی آئی قیادت پر پھٹ پڑے

ایک اور مدرسہ، ایک اور جنسی سیکنڈل،ایک دو نہیں ،کئی بچوں سے بدفعلی

واش روم میں نہاتی خاتون کی موبائل سے ویڈیو بنانے والا پولیس اہلکار پکڑا گیا

گھناؤنا کام کرنیوالی خواتین پولیس کے ہتھے چڑھ گئیں

پشاور کی سڑکوں پر شرٹ اتار کر گاڑی میں سفر کرنیوالی لڑکی کی ویڈیو وائرل

دولہا کے سب ارمان مٹی میں مل گئے، دلہن نے کیوں کیا اچانک انکار؟

شادی شدہ خاتون سے معاشقہ،نوجوان کے ساتھ کی گئی بدفعلی،خاتون نے بنائی ویڈیو

بلیک میلنگ کی ملکہ حریم شاہ کا لندن میں نیا”دھندہ”فحاشی کا اڈہ،نازیبا ویڈیو

حریم شاہ مبشر لقمان کے جہاز تک کیسے پہنچی؟ حقائق مبشر لقمان سامنے لے آئے

Leave a reply