سودی نظام اللہ و رسول سے جنگ، اسمبلی میں علی محمد خان کا دبنگ خطاب

وزیر مملکت برائے پارلیمانی امورعلی محمد خان نے کہا ہے کہ ملک میں سودی نظام ختم کرکے اسلامی بینکاری شروع کی جائے سودی نظام اللہ رسولؐ سے جنگ ہے اسی لئے ملک ترقی نہیں کرسکتا

ریاست کو للکارنے والے علی وزیر،محسن داوڑ کی رکنیت ختم کی جائے، اسمبلی میں مطالبہ

دہلی، جے شری رام کا نعرہ نہ لگانے پرہندو انتہا پسندوں نے کیا امام مسجد پر تشدد

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ان خیالات کا اظہار وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے قومی اسمبلی میں بجٹ پر بحث کرتے ہوئے کیا. وزیر مملکت علی محمد خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہ میرا ساتواں موقع ہے کہ میں بجٹ پر بحث کررہاہوں اگر پاکستان کو چلانا ہے تو بنیاد کی طرف واپس آنا ہوگا. پچھلے 60سالوں میں کوئی ایسی حکومت نہیں آئی جس نے ارادہ کرکے غریب کش بجٹ نہ بنایا ہو. جب تک ہم مغرب سے راستہ لیں گے راستہ نہیں ملے گا اللہ رسولؐ سے جنگ نہ کریں قائداعظم کا وژن عوام کو بتائیں قائداعظم نے قرآن اور اقلیتوں کی بھی بات کی ہے قائداعظم کا کردار امانت ہے،علی محمد خان کا مزید کہنا تھا کہ قائداعظم نے کہاتھا ہمارا آئین 14سو سال پہلے بن گیاہے اسلام کے سنہری اصولوں کو اپنا کرہی ترقی کرسکیں گے قائداعظم کا یہ فرمان ہم کیوں بھول گئے ہیں سود سے نکلنا آسان نہیں مگر کوشش تو کرسکتے ہیں اسلامی بینکاری کی طرف آئیں گے تو اللہ راستہ دے گا. سٹیٹ بینک کو کہاکہ اسلامی اصولوں پر قوانین بنائیں. پہلی بار مدینہ کی ریاست کی بات کررہے ہیں اس کے لیے علماء راہنمائی کریں.

برقع، نقاب پر لگائی جائے پابندی، ہندو انتہا پسند تنظیم نے مطالبہ کر دیا

رام مندر کی تعمیر کیلئے انتہا پسند ہندو تنظیم نے مودی سے بڑا مطالبہ کر دیا

مودی سرکار نے بنایا بھارتی جیلوں میں قید پاکستانیوں کے خلاف خطرناک منصوبہ

بی جے پی کی کامیابی کے بعد بھارت میں گائے کے گوشت کے نام پر مسلمانوں پر تشدد

 

علی محمد خان کا مزید کہنا تھا کہ ماہرین معیشت قائد کے فرمان کو پڑھیں اللہ ورسول کے نام پر ملک بنایا تو نیا نظام بھی بناسکتے ہیں. اللہ پوچھے گا کہ اقتدارِ دیا میرانظام لایا کہ نہیں پوچھے گا. ختم نبوت پر مہر لگا یا اس میں بھٹو اور مفتی محمود کا بھی کردار ہے.اللہ سود کو ختم اور صدقہ کو بڑھتاہے.مسلمان حکمران کے معاملات دیکھے جاتے ہیں نماز روزہ نہیں دیکھا جاتاہے. سود اللہ اور رسولؐ کے ساتھ جنگ ہے. حضرت عمرؓ کا قانون مغرب میں لاگو ہے مغرب میں سود کے خلاف قانون سازی ہورہی ہے. وہ اسلامی بینکاری کی طرف آرہے ہیں. سودی نظام یہودیوں نے دنیا کو غلام بنانے کے لیے بنایاہے.ظلم کے خلاف ہم قاضی کے ساتھ ہوگئے تاکہ اس نظام کو ختم کریں ملک کلمہ پر چلے گا ترقی کے لیے اسلامی بینکاری کی طرف آنا ہوگا سودی نظام سے نکلنا ہوگا.

محمد اویس

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.