والدین کی طلاق کے بعد اذان سمیع کی زندگی پر کیا اثرات پڑے

0
40

پاکستانی نژاد بھارتی موسیقار و گلوکار عدنان سمیع اور پاکستانی اداکارہ زیبا بختیار کے صاحبزادے گلوکار اذان سمیع کا کہنا ہے کہ خدا کے بعد میں جو کچھ بھی ہوں، اپنی والدہ کی وجہ سے ہوں اس میں ذرہ برابر بھی کوئی شک نہیں کہ انہوں نےاپنی پوری زندگی میرے لیے قربانیاں دیں۔

باغی ٹی وی : گلوکار و موسیقار اذان سمیع نے حال ہی میں ایک ویب شو میں شرکت کی جس میں انہوں نے اپنے حال ہی میں ریلیز ہونے والے گانے اور البم اور فنی کیرئیر کے علاوہ اپنے والدین کی طلاق کے بعد اپنی زندگی پر پڑنے والے اثرات پر گفتگو کی۔

شو کے میزبان نے اذان سمیع سے ان کے والدین کی طلاق کے بعد بچوں میں پائی جانے والی تلخی سے متعلق سوال کیا ۔

جس کے جواب میں اذان سمیع نے کہا کہ خدا کے بعد میں جو کچھ بھی ہوں، اپنی والدہ کی وجہ سے ہوں اس میں ذرہ برابر بھی کوئی شک نہیں کہ انہوں نےاپنی پوری زندگی میرے لیے قربانیاں دیں انہوں نے بہت محنت کی ہے میرے لئے اور میرے لئے یہ بہت ہی اہم بات رہی ہے اور ابھی بھی ہے انہوں نے میرے لئے اپنی زندگی میں بہت سی قربانیاں دی ہیں-

اذان سمیع نے کہا کہ عمر بڑھنے کے ساتھ ساتھ تلخی تو تھی، ایسا نہیں ہے کہ نہیں تھی لیکن جب میں خود والد بنا تو مجھے بہت سی چیزیں واضح ہوگئیں میں نے پھر اپنے والدین کو والدین کی بجائے بطور انسان بھی دیکھنا اور جانچنا شروع کیا کیونکہ مجھے خود احساس ہوا کہ والدین ہونا کتنا مشکل کام ہے-

اذان سمیع نے کہا کہ میں نے دیکھنا شروع کیا کہ والدین بننا کتنا مشکل ہے اللہ جب ایک جان کی ذمہ داری آپ پر دیتا ہے تو کیا ہوتا ہے اور جب ہی میں نے اپنے والدین کو بہتر طور پر سمجھنا شروع کیا۔

گلوکار کا کہنا تھا کہ میں نے اپنے والد یا والدہ کو لوگوں کی طرح سمجھنے کی کوشش کرنا شروع کردی۔

اذان سمیع نے کہا کہ اگر کوئی بھی اس تلخی سے گزرہا ہے تو یہ نارمل ہے اور آپ کو سمجھنا چاہیے کہ آپ کے والدین بھی انسان ہیں ۔

خیال رہے کہ اذان سمیع گلوکار عدنان سمیع اور زیبا بختیار کے بیٹے ہیں، زیبا بختیاراور عدنان سمیع 1993میں رشتہ ازدواج میں منسلک ہوئے تھے تاہم 1997میں دونوں میں طلاق ہوگئی تھی۔

Leave a reply