fbpx

فارن فنڈنگ کیس:عمران خان کی نااہلی کے لیے ایک چارچ شیٹ ہے:ریما عمر

لاہور:عمران خان کوکیا واقعی نااہل کردیا جائے گا:ریما عمر نے وجوہات بیان کردیں ،دوسری طرف قانونی ماہر ریما عمر نے اس حوالے سے اپنی ایک ٹویٹ میں لکھا، ” دوہزار سولہ میں حنیف عباسی نے سپریم کورٹ میں ایک پٹیشن جمع کرائی، جس میں کئی گزارشات میں ایک عمران خان کی ناہلی کی بھی درخواست تھی اور یہ دلیل دی گئی تھی کہ عمران خان نے پی ٹی آئی کی فنڈنگ کے حوالے سے جھوٹے سرٹیفیکیٹس جمع کرائے ہیں۔ عدالت نے جواب دیا تھا کہ عدالت اس سوال کا فیصلہ صرف اس وقت کر سکتی ہے جب الیکشن کمیشن کو اس بات کا ثبوت مل جائے کہ پی ٹی آئی نے ممنوعہ فنڈنگ حاصل کی ہے۔‘‘

کئی ناقدین کا خیال ہے کہ اگر حنیف عباسی کی درخواست میں اٹھائے گئے سوال کو عدالت میں لے جایا جائے تو اس سے عمران خان کی نااہلی کا سوال اٹھ سکتا ہے۔

 

ریما عمر کہتی ہیں کہ کے مطابق ممنوعہ فنڈنگ کیس کا فیصلہ آنے کے بعد الیکشن کمیشن میں ایک درخواست دائر کی گئی ہے ، درخواست گزار محمد فائق شاہ نے درخواست میں استدعاکی ہے کہ جھوٹا بیان حلفی جمع کرانے پر عمران خان کو 62ون ایف کے تحت نااہل کیا جائے ۔

ریما عمر کہتی ہیں کہ چونکہ سپریم کورٹ کےسامنے اس حوالے سے کئی بار توجہ مبذول کروائی گئی ہے کہ پی ٹی آئی نے فارن فنڈنگ لی ہے توسپریم کورٹ نے یہ واضح کردیاتھاکہ جب تک الیکشن کمیشن کوئی فیصلہ نہیں سناتا اس وقت تک اس پر کارروائی نہیں کرسکتے ، ریما عمرکا کہنا ہے کہ اب الیکشن کمیشن نے فیصلہ سنا دیا ہے اوراب یہی امکان ہےکہ عمران خان کو شاید سپریم کورٹ سےبھی ریلیف نہ ملے

ٰیہ بھی یاد رہے کہ پی ٹی آئی کے منحرف رکن اکبر ایس بابر کی جانب سے الیکشن کمیشن میں دائر کی گئی درخواست میں الزام عائد کیا کہ 2 آف شور کمپنیوں کے ذریعے لاکھوں ڈالرز پی ٹی آئی کے بینک اکاؤنٹس میں منتقل کیے گئے اور تحریک انصاف نے یہ بینک اکاؤنٹس الیکشن کمیشن سے خفیہ رکھے۔