سائفر کیس،ڈاکومنٹ کی کاپی عدالتی ریکارڈ میں پیش نہیں کی گئی،عدالت

0
205
islamabad highcourt

اسلام آباد ہائیکورٹ، سائفر کیس میں عمران خان کی سزا کیخلاف اپیل پر سماعت ہوئی

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق کی سربراہی میں بینچ نے سماعت کی،دوران سماعت جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ آپ کہہ رہے ہیں وہ یہ کہہ رہا ہے یہ وہ کہہ رہا ہے اُسے مان لیں لیکن ڈاکومنٹ تو ریکارڈ پر ہی نہیں،یہ تو ایسے ہی ہو گیا کہ قتل ہو گیا، سینے میں کلہاڑی مار دی، گولی مار دی،ڈیڈ باڈی سامنے پڑی ہے لیکن وہ نہیں دکھانی، یہ کہنا ہے کہ فلاں کہہ رہا ہے فلاں کہہ رہا ہے،آپ کہہ رہے ہیں کہ عمران خان نے یہ پبلک کر دیا وہ کر دیا کیا پبلک کیا ہے؟

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ ڈاکومنٹ کی کاپی عدالتی ریکارڈ میں پیش نہیں کی گئی، جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نےکہا کہ آپ کہہ رہے ہیں کہ دستاویز سے متعلق اِس گواہ نے یہ کہہ دیا اُس گواہ نے وہ کہہ دیا، اسپیشل پراسیکیوٹر ایف آئی اے نے کہا کہ میں ابھی آگے چل کر اس متعلق دلائل دوں گا، اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ اس ڈاکومنٹ کو ہم تو نہیں جانتے نہ ہی عدالتی ریکارڈ پر ہے، ایف آئی اے پراسیکیوٹر حامد علی شاہ کیا مواد پبلک ہوا میں اس متعلق دلائل نہیں دے رہا بعد میں دوں گا، اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیا کہ قابلِ احتساب دستاویز کا کیا مطلب ہے؟سائفر گائیڈلائنز کا کتابچہ کب کا ہے؟ پراسیکیوٹر ایف آئی اے نےکہا کہ 2003 میں اس کتابچے میں ترمیم کی گئی، اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیا کہ کیا یہ گائیڈلائنز کتابچہ 1947 سے پہلے کا ہے یا بعد کا؟ پراسیکیوٹر نے کہا کہ گائیڈلائنز بُک کی اکثر شقیں تقسیم سے پہلے کی ہیں، 1964 اور 2003 میں ترامیم ہوئیں،اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ تو یہ باآسانی کہا جا سکتا ہے کہ گائیڈلائنز پاکستان بننے سے پہلے کی ہیں،

جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے استفسار کیا کہ سائفر پاکستانی سفیر اسد مجید نے وزرات خارجہ کو بھیجا تھا ، اس کیس میں چار چیزوں کو عدالت نے دیکھنا ہے، سائفر کی کاپی ملزمان کے پاس پہنچی تھی یا نہیں ؟ ڈاکومنٹ ملزمان کے پاس فزیکل فارم میں موصول ہوا تھا یا نہیں ؟آپ نے ابھی کہا سائفر کا متن پبلک کر دیا گیا وہ ڈاکومنٹ کہاں ہے جو پبلک ہوا ؟ ایف آئی اے پراسیکیوٹر نے کہا کہ میں آگے چل کر عدالت کو اس سے متعلق بتاؤں گا ،

سائفر کیس:اسد مجید اسٹار گواہ ہو سکتے تھے ابھی اسد مجید نے تو کچھ نہیں کہا کہ وہ اسٹار گواہ بن سکتا

پاکستان کے بعد امریکی ایوان میں بھی سائفر بیانیہ کو جھوٹ کا پلندا کہ دیا،شیری رحمان

انتخابات سے قبل تشدد کے واقعات پر خصوصاً تشویش رہی، ڈونلڈ لو

ڈونلڈ لو کی کانگریس میں طلبی پر امریکی دفتر خارجہ کا ردعمل

سائفر کیس،یہ آخری بات ہو گی کہ میں کہو ں ٹرائل جج کو ایک اور موقع دے دیں،وکیل عمران خان

سائفر کیس،عمران خان کی اپیل پر سماعت ایک روز کے لئے ملتوی

سائفر کیس،یہ کہتے تھے ضمانت کا حق نہیں ، سپریم کورٹ نے ضمانت بھی دی،سلمان صفدر

سائفر کیس،عمران خان کی سزا کیخلاف اپیل پر سماعت،التوا کی درخواست مسترد

سائفر کیس،عمران خان کی سزا کیخلاف اپیل قابل سماعت ہی نہیں، پراسیکیوٹر

پی ٹی آئی کا خط، سائفر کے بعد ملک دشمنی کا ایک اور ثبوت ہے،شہباز شریف

Leave a reply