گیس اور بجلی کی قیمتیں کیوں بڑھیں؟ عمر ایوب خان نے بتا دیا

0
41

وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب خان نے کہا ہے کہ سابق حکومت کی پالیسیوں کی وجہ سےگیس اوربجلی کی قیمتیں بڑھ رہی ہیں بجلی کی قیمتیں بڑھنےپراپوزیشن والےاپنےگریبان میں جھانکیں،کیا گزشتہ ادوارمیں دودھ کی نہریں بہہ رہی تھیں؟ ہمیں گزشتہ حکومتوں کی غلط پالیسیوں کا خمیازہ بھگتنا پڑرہا ہے

بڑے چیلنجز کا سامنا ہے حل کے لیے سب کو ساتھ لے کر چلیں، شاہد خاقان عباسی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق قومی اسمبلی اجلاس میں وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب خان نے کٹوتی کی تحریک پر بات کرتے ہوئے کہا کہ اعدادوشمار مسخ کرنا ان کے لیڈروں کا کام ہے. پانچ سال میں 10کروڑ روپے اس حکومت نے وزیر اعظم ہاوس کا ہم نے ادا کیا ہے. عمر ایوب خان نے مزید کہا کہ اعدادوشمار مسخ کرنے کی وجہ سے آج ہم نے دس کروڑ روپے کا بل آئیسکو کو دیاہے. ماضی کی حکومتوں کی لینڈ مائن کو آج نکل کر سائیڈ پر کررہے ہیں.

گیس کے بعد بجلی کی قیمت میں ہوا اضافہ

عمر ایوب خان کا مزید کہنا تھا کہ کپیسٹی چارجز 2سوارب ادا کرنے پڑرہے ہیں وزیراعظم کے حکم پر 75%صارفین پر بجلی کا اضافہ نہیں ہوگا اس طرح 45%گیس صارفین پر بوجھ نہیں پڑے گا. ٹیوب ویلز کو سبسڈی دے رہے ہیں. بجلی کی قیمت بڑھ رہی ہے انہوں نے جو گڑا کھودا تھا اس کی وجہ سے بجلی کی قیمتیں زیادہ ہورہی ہیں.

پٹرول، گیس کے بعد اب کیا مہنگا ہو رہا ہے، جان کر عوام پریشان ہو جائے

عمر ایوب خان نے مزید کہا کہ پچھلے رمضان میں لوڈشیڈنگ تھی اس وقت بجلی کا جن کیوں قابو نہیں کیا. ہم نے 30ہزار ایف آئی آر 500اپنے ملازمین پر کارروائی کی 4ہزار ایف آئی آر کٹائی ہیں. چوری والے علاقے صاف کریں گے. سندھ کے ارکان نے میرا شکریہ ادا کیا. جس تیزی سے پی ٹی آئی جارہی ہے ہمارے امید وار سندھ میں بھی کامیاب ہوں گے. بلوچستان میں مزید 3گھنٹے لوڈشیڈنگ شروع کی ہے بلوچستان میں بھی چوری ختم کریں گے .جہاں چوری ہوتی تھی وہاں بجلی دیا جس سے 450ارب کا قردشی قرض میں اضافہ ہوا ہے.

شیخ رشید نے دیا قوم کو مہنگائی کا جھٹکا، ریلوے کرایوں میں اضافہ

عمر ایوب خان نے مزید کہا کہ اگر احتجاج اور شور کریں گے تو دیکھتے ہیں کہ کٹ موشن پر کون بات کرتا ہے. 7ارب کی ریفائنری وزیر اعظم جلد کریں گے قابل تجدید کے 250منصوبے مسلم لیگ ن نے بند کئے ہیں جس سے سندھ کو نقصان ہوا. اور سولر بلوچستان کو ہوا مہنگی ایل این جی پلانٹ کے لیے یہ سب کچھ کیاگیا. 2030تک 70%حصہ گرہن انرجی کا ہوگا. آئی پی پیز کے معائدے کی تجدید نہیں کریں گے. بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں میں بجلی چوری کو ختم کریں گے شفاف پاکستان کا وزیر اعظم نے علم اٹھایا ہے.

محمد اویس

Leave a reply