یورپ میں شدید گرمی: جرمنی ،فرانس اور برطانیہ میں الرٹس جاری

0
43

یورپ میں شدید گرمی اور خشک موسم کے بعد جرمنی، فرانس اور برطانیہ نے اس ہفتے موسم شدید گرم رہنے کی وارننگ جاری کی ہے۔

باغی ٹی وی : فرانس کے محکمہ موسمیات کی جانب سے جنوبی حصوں کے لیے وارننگ جاری کی گئی ہے جبکہ برطانیہ کے میٹ آفس نے لندن اور جنوب مشرقی انگلینڈ میں 11 سے 14 اگست تک شدید گرمی کی وارننگ دی ہے، جب کہ ملک کی ہیلتھ سیکیورٹی ایجنسی نے تمام علاقوں کے لیے منگل کو شروع ہونے والے ہیٹ ہیلتھ الرٹ میں 14 اگست تک توسیع کر دی ہے۔

ایٹمی بجلی گھر پر یوکرین کی گولہ باری کا نتیجہ خوفناک ثابت ہوسکتا ہے: روس

یہ الرٹ اس وقت جاری ہوا جب یورپ میں درجہ حرارت میں اس ہفتے نمایاں اضافے کا امکان ظاہر کیا گیا ہے برطانیہ میں اس بار درجہ حرارت جولائی کی طرح ریکارڈ سطح پر پہنچنے کا امکان تو نہیں مگر یہ 30 سے 40 سینٹی گریڈ کے درمیان ہوسکتا ہے۔

یورپ کے مختلف ممالک کو حالیہ ہفتوں کے دوران شدید ترین گرمی کا سامنا ہوا تھا فرانس میں جولائی تاریخ کا خشک ترین مہینہ رہا تھا جبکہ برطانیہ میں جولائی کا مہینہ 90 سال میں سب سے خشک قرار پایاجرمنی میں بھی اس ہفتے درجہ حرارت میں اضافے کا امکان ظاہر کیا گیا ہے دریائے رائن پر پانی کی سطح، اجناس اور صنعتی سامان کی نقل و حمل کے لیے ایک اہم شاہراہ، اتنی کم ہے کہ آبی گزرگاہ کے کچھ حصوں پر تجارت رک جانے کا خطرہ ہے۔


پیشن گوئی کرنے والے میٹیو فرانس نے کہا کہ اس ہفتے کی گرمی کی لہر اتنی شدید نہیں ہوگی لیکن موسم گرما میں ایک سے زیادہ طویل ہوگی، جو فرانس کے جنوب میں ہفتے کے آخر تک رہے گی۔ Maxar Technologies LLC کے مطابق، پیرس میں درجہ حرارت جمعہ کو 34.5 ڈگری سیلسیس (94.1 ڈگری فارن ہائیٹ) تک پہنچنے کی توقع ہے۔

ایٹمی جنگ کےبادل منڈلا رہے ہیں،کسی بھی وقت کُچھ ہوسکتا ہے: سیکریٹری جنرل اقوام…

یوکے ہیلتھ ایجنسی نے کہا کہ جمعہ کو جنوب مشرقی انگلینڈ، لندن، جنوب مغرب اور مشرقی اور مغربی مڈلینڈز میں درجہ حرارت 30 ڈگری سیلسیس کے وسط تک پہنچنے کی توقع ہے-

یو کے ہیلتھ سکیورٹی ایجنسی میں انتہائی واقعات اور صحت کے تحفظ کے سربراہ، اگوسٹینہو سوسا نے کہا کہ یہ یاد رکھیں کہ گرمی سے صحت پر بہت تیزی سے منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں، تو تنہا رہنے والے معمر افراد یا پہلے سے مختلف امراض کے شکار افراد کو اس حوالے سے احتیاط کی ضرورت ہے۔

فرانس اور جرمنی میں بجلی کی قیمتیں پیر کو ریکارڈ سطح پر پہنچ گئیں کیونکہ کوئلے اور نیوکلیئر پلانٹس پر کم ہوا اور گرمی سے متعلق پابندیوں سے گیس کی طلب میں اضافہ ہوا ہے۔ یہ ایک زیادہ مشکل موسم سرما کا مرحلہ طے کر رہا ہے کیونکہ ممالک ایندھن کو ابھی سے ذخیرہ کر رہے ہیں-

ادھر جرمنی کے محکمہ موسمیات نے خبردار کیا ہے کہ اگر قحط سالی کا سلسلہ برقرار رہا تو ملک کے کچھ حصوں میں جنگلات میں آگ لگنے کا خطرہ بہت زیادہ ہےفرانس اور جرمنی میں توانائی ذرائع کی قیمتیں ریکارڈ سطح پر پہنچ گئی ہیں کیونکہ گرمی کے باعث اے سی کا استعمال بہت زیادہ بڑھ گیا ہے۔

اٹلی : خشک ہونے والے دریا سے دوسری جنگ عظیم کا بم برآمد

Leave a reply