سدھو موسے والا کے بھائی کی پیدائش پر حکومت والد کو ہراساں کرنے لگی

ضلعی انتظامیہ کی طرف سے کاغذات فراہم کرنے کے لیے صبح سے ہراساں کیا جا رہا ہے
0
87

نئی دہلی: بھارتی پنجاب کے آنجہانی گلوکار شُبھ دیپ سنگھ عرف سدھو موسے والا کے والد بالکور سنگھ نے بھارتی پنجاب کی حکومت پر ہراساں کرنے کا الزام لگایا ہے۔

باغی ٹی وی : سدھو موسے والا کے والدین کے ہاں تین دن قبل ولادت ہوئی، بڑھاپے کے باعث سدھو موسے والا کے والدین نے اِن وائٹرو فرٹیلائزیشن کا طریقہ اپنایا،دسمبر 2021 میں نافذ کیے گئے ایک قانون کے تحت حکومت نے اس تکنیک سے ولادت کے لیے خواتین کی آخری حد 50 اور مردوں کے لیے 55 سال مقرر کی تھی۔

انڈیا ٹوڈے کی ایک رپورٹ کے مطابق بالکور سنگھ نے بتایا کہ بھگونت سنگھ مان کی قیادت میں قائم پنجاب حکومت نومولود کے حوالے سے دستاویزات طلب کرکے کہہ رہی ہے کہ بچے کو قانونی ثابت کرو، سدھو موسے والا کے والد نے پنجاب حکومت سے کہا ہے کہ اُسے اور اُس کی بیوی کو متعلقہ پراسیجر کے تحت علاج مکمل کرنے دیا جائے۔

بلوچستان میں کوئلے کی کان دھماکے سے بیٹھ گئی

انڈین ایکسپریس کے مطابق اپنے سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر ایک ویڈیو میں بلکور سنگھ نے کہا کہ انہیں ضلعی انتظامیہ کی طرف سے کاغذات فراہم کرنے کے لیے صبح سے ہراساں کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے وزیر اعلی بھگونت مان سے اپیل کی کہ انہیں علاج کرانے کے لیے وقت دیا جائے جس کے بعد وہ اپنے نومولود کے بارے میں تمام دستاویزات فراہم کریں گے۔

انہوں نے کہا، "آپ کے آشیرواد کی وجہ سے، اللہ تعالیٰ نے شوبھدیپ کو ہمارے پاس واپس بھیج کر ہمیں نوازا۔ لیکن میں صبح سے اداس ہوں۔ ضلعی انتظامیہ صبح سے مجھے ہراساں کر رہی ہے کہ میں اس بچے کے کاغذات فراہم کروں۔ مجھ سے یہ ثابت کرنے کے لیے ہر طرح کے سوالات پوچھے جا رہے ہیں کہ یہ بچہ جائز ہے۔

نواز شریف کی صدارت میں انتظامی اجلاس کا اقدام عدالت میں چیلنج

انہوں نے مزید کہا کہ میں حکومت بالخصوص وزیر اعلیٰ سے اپیل کرنا چاہتا ہوں کہ میری اہلیہ کا علاج ختم ہونے دیا جائے۔ میں یہاں رہتا ہوں. میں یہاں رہنا جاری رکھوں گا۔ تم مجھے جہاں بلاؤ گے میں آؤں گا۔ ”

وزیراعلیٰ کے نام ایک پیغام میں انہوں نے کہا کہ میں آپ کو سخت الفاظ میں بتانا چاہتا ہوں کہ آپ کو یو ٹرن لینے کی عادت ہے۔ اگر آپ مجھے ہراساں کرنے کی کوشش کر رہے ہیں تو مجھے لینے کے لیے پوری طرح تیار رہیں۔ میں یو ٹرن لینے والوں میں سے نہیں ہوں۔ جہاں تک ملک کے قانون کا تعلق ہے میں آپ کو بتانا چاہتا ہوں کہ میرا بیٹا قانون کا احترام کرتے ہوئے 28 سال تک زندہ رہا۔ میں، ایک سابق فوجی ہونے کے ناطے، قانون کا بھی احترام کرتا ہوں۔ میں نے کسی موقع پر قانون کی خلاف ورزی نہیں کی۔

سدھو موسے والا کے والدین کے ہاں بیٹے کی پیدائش

انہوں نے کہا کہ اگر میں نے ایسا کیا ہے تو آپ نے مجھے جیل میں ڈال دیا۔ آپ کے مشیر آپ کو ایسا مشورہ دیتے ہیں کہ اس فیصلے سے پیچھے ہٹنا مشکل ہو جاتا ہے۔ اگر آپ کو مجھ پر اعتماد نہیں تو ایف آئی آر درج کر کے مجھے سلاخوں کے پیچھے ڈال دیں، پھر اپنی تحقیقات کرو۔ ساتھ ہی میں آپ کو بتانا چاہتا ہوں کہ میں آپ کو قانونی دستاویزات دے کر اس صفائی سے نکل جاؤں گا۔ "

Leave a reply