جانوروں کے گوبر سے تیار کردہ بائیو میتھین سے چلنے والا دنیا کا پہلا ٹریکٹر

0
25
Mathine

ہالینڈ کی ایک کمپنی نے جانوروں کے گوبر سے تیار کردہ بائیو میتھین سے چلنے والا دنیا کا پہلا ٹریکٹر تیار کر لیا۔

باغی ٹی وی: اغیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق دنیا بھر میں گائے بھینسوں کے گوبر سے بائیو ایندھن بنایا جا رہا ہے لیکن اب ہالینڈ کی ایک کمپنی نے بائیو ایندھن سے چلنے والا ٹریکٹر بھی متعارف کرا دیا۔

992 سال بعد نیا چاند زمین کے قریب ترین ہو گا

میتھین گیس سے چلنے والے ٹریکٹر کو “ٹی سیون” کا نام دیا گیا ہے اور اسے “نیو ہالینڈ ایگریکلچر” اوربرطانوی کمپنی بینامان نے مشترکہ طور پر تیار کیا ہے تاہم اس میں براہِ راست گوبر نہیں ڈالا جاتا گوبر سے بننے والی گیس کو صاف کر کے ایل این جی کی شکل دی جاتی ہے-

گوبر جمع کرکے اسے پتلا کرکے بڑے ٹینکوں میں ڈالا جاتا ہے جس کا درجہ حرارت منفی 162 درجے سینٹی گریڈ ہوتا ہےاس سے گیس بنتی ہے جس میں غالب حصہ میتھین کا ہوتا ہے اور پھر اسے خاص انجن والے ٹریکٹروں اور گاڑیوں میں استعمال کیا جاسکتا ہے-

مائیکرو سافٹ کا اپنے 10 ہزار ملازمین کو نکالنے کا اعلان

خاص بات یہ کہ کسان اپنے ٹریکٹر کا ایندھن خود بنا سکیں گے اور دوسری جانب ماحول دوست زراعت کا فروغ بھی ہو سکے گا۔ اس طرح کسانوں کے اخراجات میں کمی اور بچت میں اضافہ ہو گا۔

تاہم گوبر سے مائع ایل این جی بنانے کا عمل قدرے مہنگا ہوتا ہے۔ اس کے لیے برطانوی کمپنی نے ایک حل پیش کیا ہے۔ اس نے ایک موبائل کنورٹر بنایا ہے جو گوبر کی مناسب مقدار جمع ہونے پر وہاں پہنچ جاتا ہے اور گوبر کو بایوگیس میں بدل کر وہاں سے دوسرے کھیت تک روانہ ہوتا ہے۔ اسی کمپنی نے سستا کرایوجینک (ٹھنڈا) ٹینک بھی بنایا ہے۔

دونوں کیمپنیوں کا کہنا ہے کہ اس طرح کسان اضافی رقم بنا سکیں گے یا بچاسکیں گے جبکہ ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ چھوٹے سے چھوٹا کھیت یا فارم بھی اس عمل کو اپنے لیے ممکن اور منافع بخش بناسکتا ہے۔

پیرو کے نیشنل پارک سے چھپکلی کی نئی قسم دریافت

Leave a reply