ورلڈ ہیڈر ایڈ

مقبوضہ کشمیر،کتنے کمسن بچوں کو بھارتی فوج نے حراست میں لیا؟ اہم خبر

مقبوضہ کشمیر،کتنے کمسن بچوں کو بھارتی فوج نے حراست میں لیا؟ اہم خبر

اسلام آباد ۔ 11 نومبر (اے پی پی) وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہا ہے کہ اقوام متحدہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کا نوٹس لے، 5 اگست کے بعد سے اب تک قابض افواج 144 کم سن بچوں کو حراست میں لے چکی ہے، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی ذمہ داری ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کے قتل اور تشدد کے واقعات کو پیش نظر رکھتے ہوئے فوری مداخلت کرے۔

پیر کو یہاں ”اے پی پی” سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹرشیریں مزاری نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں5 اگست کے بعد سے اب تک قابض افواج اور پولیس 9 سالہ بچے سمیت 144 کم سن بچوں کو حراست میں لے چکی ہے، بھارتی حکومت نے کشمیر کی متنازع حیثیت کو ختم کردیا ہے اور مسلسل کرفیو لگا رکھا ہے جس سے متعلق عدالت کی طرف سے مقرر کردہ کمیٹی نے بھی اپنی رپورٹ میں ان واقعات کی تصدیق کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں ہزاروں بچوں کو بیہمانہ تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے، انسانی حقوق کی سرگرم کشمیری تنظیموں کے کارکنوں کے مطابق 5 اگست کے بعد سے13 ہزار کم سن لڑکوں کو حراست میں لیا گیا ہے اور انہیں تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔

ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہا کہ بہت سے قانونی جواز موجود ہیں جو کشمیر سے متعلق پاکستان کے مؤقف کی نہ صرف حمایت کرتے ہیں بلکہ بھارتی بیانیے کی نفی بھی کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ اقوام متحدہ کے ادارہ یونیسیف کی بھی ذمہ داری ہے کہ وہ ان مظالم کا نوٹس لے اور بھارتی قابض افواج کی طرف سے بچوں پر ظلم و بربریت کو بند کرائے۔

انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کے تمام 5 ارکان اس صورتحال پر خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں جو انتہائی مایوس کن اور قابل مذمت عمل ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.