fbpx

مسئلہ کشمیر پر دنیا بھر کے سکھ پاکستان کے موقف کی حمایت کر رہے ہیں،وزیراعلیٰ پنجاب

وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے آج رات گورنر ہاؤس میں بین الاقوامی سکھ کنونشن میں شرکت کی۔ وزیراعلیٰ نے سکھ کنونشن کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں سکھ کنونشن میں شرکت پر پنجاب کے عوام کی طرف سے آپ سب کا خیرمقدم کرتا ہوں۔امریکہ، برطانیہ اور کینیڈا سے آنے والے سکھ بھائیوں کو پاکستان آمد پر وزیراعظم عمران خان اور پنجاب حکومت کی جانب سے دل کی اتھاہ گہرائیوں سے خوش آمدید کہتا ہوں۔

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب نے انٹرنیشنل سکھ کنونشن سے خطاب میں کہا کہ مجھے کرتارپور راہداری جیسے تاریخی منصوبے کے افتتاح اور بابا گورو نانک کے 550 ویں جنم دن کی تقریبات کی تیاریوں کے حوالے سے آپ کے ساتھ مشاورت اور بات چیت کرنے کا موقع ملا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت نے ننکانہ صاحب میں بابا گورو نانک یونیورسٹی کا سنگ بنیاد رکھ دیا ہے۔ یونیورسٹی 10 ایکڑ اراضی پر بنائی جا رہی ہے جس پر تقریباً 6 ارب روپے لاگت آئے گی۔ ننکانہ صاحب کی سڑکوں کی تعمیر و مرمت کیلئے 15 کروڑ روپے کی خطیر رقم فراہم کی گئی ہے اور ان سڑکوں کی تعمیر و مرمت سے سکھ یاتریوں کو آمد و رفت کی بہترین سہولتیں میسر ہوں گی۔

وزیراعلیٰ پنجاب کا کہنا تھا کہ سکھ بھائی جتنا آج پاکستان کے قریب آ چکے ہیں، ماضی میں اس کی کوئی مثال نہیں ملتی۔ مجھے اس بات کی بھی خوشی ہے کہ مسئلہ کشمیر پر دنیا بھر کے سکھ پاکستان کے موقف کی حمایت کر رہے ہیں اور امریکہ اور برطانیہ سمیت کئی ممالک میں کشمیریوں کے حق میں ہونے والے مظاہروں میں بھی سکھ بھائی شریک ہوئے ہیں۔

وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ پاکستان ایک امن پسند ملک ہے۔ہم امن پر یقین رکھتے ہیں اور بھارت سمیت پوری دنیا کو امن اور دوستی کا پیغام دیتے ہیں اور پاکستان کی طرف سے امن اور دوستی کے پیغام کو پوری دنیا میں سراہا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سکھ کنونشن کے شرکاء کی طرف سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور بھارتی فوج کے مظالم کی مذمت کرتے ہیں۔ماضی گواہ ہے کہ پاکستان مقامی سکھ برادری اور بھارت سے آنے والے یاتریوں کی مذہبی روایات کے احترام اور مقدس مقامات تک ان کی رسائی کے لئے سہولتیں فراہم کرتا رہا ہے اور آئندہ بھی کرے گا۔ پاکستان میں سکھوں سمیت تمام اقلیتوں کو مکمل مذہبی آزادی ہے۔اقلیتوں اور ان کے مقدس مقامات کی حفاظت اور دیکھ بھال کا فریضہ پوری تندہی سے سرانجام دیا جاتا ہے۔ پاکستان میں سکھوں سمیت تمام اقلیتوں کو جتنی آزادی اور تحفظ حاصل ہے، اس کی پوری دنیا میں کوئی اور مثال نہیں ملتی۔ ہر پاکستانی اپنے سے بڑھ کر اقلیتوں کے تحفظ کا خیال رکھتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بابا گورو نانک کے 550 ویں جنم دن کی تقریبات میں شرکت کیلئے آنے والے سکھ یاتریوں کو سکیورٹی سمیت دیگر سہولتوں کی فراہمی کو سو فیصد یقینی بنایا جائے گا اور انہیں پاکستان آمد پر کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔ حکومتی ادارے ان کی مدد کیلئے ہر لمحہ ان کے ساتھ ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں تحریک انصاف کی حکومت اقلیتی بھائیوں کی فلاح و بہبود اور ترقی کیلئے ہمہ وقت سرگرم عمل ہے۔اقلیتوں کی فلاح و بہبود کیلئے مختلف پروگرامز پر عملدرآمد کیلئے تقریباً ایک ارب روپے کی رقم مختص کی گئی ہے اور مینارٹی امپاورمنٹ پیکیج متعارف کرایا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم سکھوں سمیت اپنے تمام اقلیتی بھائیوں کو معاشی طور پر خوشحال اور سیاسی طور پر خودمختار دیکھنا چاہتے ہیں۔

گورنر پنجاب چودھری محمد سرور نے بھی عشائیہ سے خطاب کیا- وفاقی وزراء شیخ رشید احمد، شفقت محمود، نورالحق قادری، فواد چوہدری، صوبائی وزراء محمود الرشید، تیمور بھٹی، پیر سید سعید الحسن شاہ، اعجاز عالم کے علاوہ بین الاقوامی کنونشن کے شرکاء نے بھی تقریب میں شرکت کی-

 

وزیراعظم عمران خان پیر کو ایک روزہ دورے پر لاہور آئیں گے، وزیراعظم عمران خان سے گورنر پنجاب اور وزیراعلیٰ پنجاب ملاقات کرین گے، وزیراعظم سے لاہور میں تاجر برادری اور پارٹی رہنما بھی ملاقات کریں گے

وزیراعظم عمران خان پیر کو لاہور میں انٹریشنل سکھ کنونشن کے آخری روز بطور مہمان خاص شرکت کریں گے، اور خطاب بھی کریں گے.

 

گورنر پنجاب چودھری سرور نے انٹرنیشنل سکھ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اقلیتوں کے مسائل حل کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے ،اقلیتوں کے مسائل کا علم ہے ،70سال میں پہلا موقع ہے کہ گورنر ہاوس میں سکھ برادری کا کنونشن ہورہا ہے،سارے مذاہب انسانیت کی عزت کرنا سکھاتے ہین، کسی کے ساتھی زیادتی نہیں ہونی چاہئے

گورنر پنجاب نے کہا کہ ہیومن رائتس کے حوالہ سے بات کرنی چاہئے انڈیا کی اپوزیشن میں کشمیر میں ہونے والے مظالم پر بات کر رہی ہے، ہمیں انسان کو تکلیف، دکھ میں دیکھ کر ہمدردی کرنی چاہئے خواہ اس کا تعلق کسی بھی مذہب یا فرقے سے ہو، گرونانک کی بھی یہی تعلیمات ہیں،

انٹرنیشنل سکھ کنونشن کا آغاز، سکھ برادری پاکستان کا امن پسند چہرہ دنیا کو دکھائے،فردوس عاشق

گورنر پنجاب کا مزید کہنا تھا کہ کرتارپور کا اسی فیصد کام مکمل ہو گیا، جب میں امریکہ کینیڈا گیا تو سکھ بھائیوں نے درخواست کی تھی کہ گرونانک کی جگہ کسی کمرشل جگہ کے لئے استعمال نہ ہو، میں نے واپس آ کر کرتارپور کا دورہ کیا تین ایکر گردوارہ کو 42 ایکڑ کا کر دیا گیا، 104 ایکڑ پر کسی جگہ کمرشل استعمال نہیں ہو گی، ننکانہ میں جب لوگ ریلوے سٹیشن سے اترتے تھے تو انہیں آگے جانے کے لئے سیکورٹی ایشو تھا ہم نے تین ماہ میں کوریڈور مکمل کیا ہے، کسی قسم کا سیکورٹی کا اب مسئلہ نہیں ہو گا ، اس کوریڈور کا نام بابا گرو نانک رکھ رہے ہیں.

گورنر پنجاب کا مزید کہنا تھا کہ کالج چار پانچ ایکڑ کا تھا کمیٹی نے فیصلہ کیا کہ اس کو دور کر دیں گے اور کالج کو فیسلٹیز کے لئے استعمال کریں گے، وہاں لگی وائرنگ کو بھی انڈر گراؤنڈ کیا جائے گا، سیف سٹی کے تحت پورے لاہور میں کیمرے لگائے گئے ہیں، وہاں بھی کیمرے لگائے جائیں گے جس سے سیکورٹی کے انتظامات مزید بہتر ہوں گے

گورنر پنجاب کے خطاب کے دوران سکھ پاکستان زندہ باد کے نعرے لگاتے رہے