fbpx

قصور کے بعد تلہ گنگ میں جنسی سیکنڈل، امام مسجد کی مدرسہ پڑھنے والی بچیوں کی ساتھ زیادتی

قصور کے بعد تلہ گنگ میں جنسی سیکنڈل. امام مسجد کی مدرسہ پڑھنے والی بچیوں کی ساتھ زیادتی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق کمسن بچیوں سے زیادتی کے واقعات میں کمی نہ آ سکی، پنجاب میں بچیوں سے زیادتی کے واقعات میں آئے روز اضافہ ہو رہا ہے،اب قصور کے بعد تلہ گنگ میں نیا جنسی سیکنڈل سامنے آیا ہے جہاں ایک امام مسجد نے دینی تعلیم حاصل کرنیوالی بچیوں کو زیادتی کا نشانہ بنایا جس کے بعد بچیوں نے مدرسے جانا چھوڑ دیا

واقعہ کی ایف آئی آر درج کر لی گئی ہیں ، چار الگ الگ مقدمے درج کئے گئے ہیں درج ایف آئی آر میں مدعی کی جانب سے کہا گیا ہے کہ میرا ایک بیٹا اور 5 بیٹیاں ہیں جامع مسجد ڈھوک پھلاڑی میں مولوی سلطان خان ولد حافظ شیر محمد جو کہ امام مسجد تھا کے پاس قرآن مجید اور دینی تعلیم پڑھنے جاتی تھی،ایک دن مولوی سلطان میری بیٹی کو مسجد سے ملحقہ کمرے میں لے کر گیا، زیادتی کی ویڈیو بنائی، جس کے بعد سے میری بیٹی نے پڑھنے چھوڑدیا

سوشل میڈیا چیٹ سے روکنے پر بیوی نے کیا خلع کا دعویٰ دائر، شوہر نے بھی لگایا گھناؤنا الزام

سابق اہلیہ کی غیراخلاقی تصاویر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرنے والے ملزم پر کب ہو گی فردجرم عائد؟

‏سوشل میڈیا پرغلط خبریں پھیلانا اورانکو بلاتصدیق فارورڈ کرنا جرم ہے، آصف اقبال سائبر ونگ ایف آئی اے

سوشل میڈیا پر جعلی آئی ڈیز کے ذریعے لڑکی بن کر لوگوں کو پھنسانے والا گرفتار

بیوی، ساس اورسالی کی تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل کرنے کے الزام میں گرفتارملزم نے کی ضمانت کی درخواست دائر

سپریم کورٹ کا سوشل میڈیا اور یوٹیوب پر قابل اعتراض مواد کا نوٹس،ہمارے خاندانوں کو نہیں بخشا جاتا،جسٹس قاضی امین

‏ سوشل میڈیا پر وزیر اعظم کے خلاف غصے کا اظہار کرنے پر بزرگ شہری گرفتار

کرونا میں مرد کو ہمبستری سے روکنا گناہ یا ثواب

پولیس نے واقعہ کا مقدمہ درج کر لیا ہے، تھانہ ٹمن کے علاقہ ڈھوک پھلاڑی میں یہ واقعہ پیش آیا، پولیس کے مطابق زیادتی کا واقعہ 8 ماہ پرانا ہے ملزم حسن شہزاد بچوں کو ویڈیو کے ذریعے بلیک میل کرکے زیادتی کا نشانہ بناتا رہا۔ دونوں ملزمان بچوں کو دینی تعلیم پڑھاتے تھے۔کاروائی بچے اور بچیوں کے ساتھ زیادتی کی ویڈیو سامنے آنے پر کی گئی،پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے ملزمان کو گرفتار کر لیا۔ پولیس نے دو ملزمان کے خلاف بدفعلی اور زیادتی کے مقدمات درج کے تفتیش شروع کر دی ہے

سفاک ملزم مسجد کے ساتھ رہائشی کمرے میں لے جا کر معصوم بچیوں اور بچوں کو اپنی ہوس کا نشانہ بناتا جبکہ دوسرا نائب امام حسن شہزاد ویڈیو بناتا ۔ملزمان کی آپس میں چپقلش ہونے کے بعد جب ویڈیو منظر عام پر آئیں تو علاقہ میں سخت غم و غصے کی لہر دوڑ گئی

ایس پی انویسٹیگیشن فیصل شہزاد نے ایس ڈی پی او آفس تلہ گنگ میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے میڈیا کو بتایا کہ جیسے ہی پولیس کو اس سفاک اور اندوہناک واقعات بارے اطلاع ملی ہم نے فوری کارروائی کرتے ہوئے دونوں ملزمان کو گرفتار کر لیا ۔ایس پی فیصل شہزاد کا کہنا تھا کہ پولیس ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچانے تک چین سے نہیں بیٹھے گی ۔ دونوں ملزمان کےخلاف تمام ثبوت ، گواہان موجود ہیں ان شاءاللہ ملزمان سزا سے نہیں بچ سکیں گے ۔

تھانہ ٹمن کے پولیس اہلکار سلیم نے باغی ٹی وی سے گفتگو میں بتایا کہ "واقعی امام مسجد نے ہی بچیوں کے ساتھ زیادتی کی ہے، باغی ٹی وی نے جب پولیس اہلکار سے ٹیلی فونک گفتگو کے دوران یہ سوال کیا کہ یہ واقعہ کب کا ہے تو تھانہ ٹمن کے پولیس اہلکار سلیم کا کہنا تھا کہ یہ واقعہ کافی پرانا ہے ، ملزم نے زیادتی کی ویڈیو بنا لی تھی جو کہیں سے ہمارے سامنے آئیں اور ہم نے تحقیقات کا آغاز کیا تو سارا واقعہ سامنے آیا،