مثبت سوچ کے ساتھ آگے بڑھیں،مرتضیٰ وہاب کا جماعت اسلامی کو مشورہ

0
72
murtaza wahab

موجودہ صورتحال اور جماعت اسلامی رہنماوں کے الزامات پر مشیر قانون بیرسٹر مرتضی وہاب کا کہنا ہے کہ کراچی کو ایسے فرد کی ضرورت ہے جو اسٹیک ہولڈرز کو ساتھ لیکر چلے۔

بیرسٹر مرتضی وہاب کا کہنا تھا کہ کراچی کو تعمیر و ترقی کی ضرورت ہے تخریب کی نہیں۔ دھرنے ہنگامے کی سیاست سے کراچی کی خدمت نہیں ہوگی۔ جماعت اسلامی قیادت کو مشورہ ہے کہ وہ مثبت سوچ کے ساتھ آگے بڑھے۔جماعت اسلامی رہنماوں کے الزامات اور تقسیم کی سیاست سمجھ سے بالاتر ہے۔آٙئیں ملکر کراچی کی تعمیر کے بےنظیر ویژن کا حصہ بنیں۔

علاوہ ازیں لیاقت آباد ٹاؤن میں گریجویٹ فورم کی تقریب سے ایم کیو ایم پاکستان کے کنوینر ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ جعلی حلقہ بندیوں والے بلدیاتی انتخابات کا بائیکاٹ کردیا اور اب سڑکوں سے کراچی چلا کر دکھائیں گے، بلدیاتی الیکشن میں شکست جمہوری نظام کو ہوئی ہے اور حکمرانوں کا لاڈلا کلب جیت گیا ہے وقت ثابت کرے گا کہ جن ایوانوں میں ہم نہیں ان کی کوئی اوقات نہیں یہاں سچ بھی پورا نہیں بول سکتے کیونکہ پاکستان میں ہمیشہ سچ سینسر ہو جاتا ہے، اپنے حصّے سے زیادہ قربانی دے چکے ہیں اگر اب بھی ہمیں صحیح نہیں گنا گیا تو تولنا پڑ جائے گا،عمران خان جو کُچھ کہہ رہے ہیں اگر وہ سب ہم کہہ دیں تو ہماری مائیں ہمیں ڈھونڈتی پھریںہمیں قائد اعظم کا پاکستان چاہیے تھا لیکن ہمیں بھٹو کے پاکستان میں رہنا پڑ رہا ہے جاگیردارانہ جمہوریت اور خاندانی نظام جمہوریت پاکستان کا سب سے بڑا دُشمن ہے،

بیانیہ پٹ گیا، عمران خان کا پول کھلنے والا ہے ،آئی ایم ایف ڈیل، انجام کیا ہو گا؟

عمران خان معافی مانگنے جج زیبا چودھری کی عدالت پہنچ گئے

شوکت ترین ، تیمور جھگڑا ،محسن لغاری کی پاکستان کے خلاف سازش بے نقاب،آڈیو سامنے آ گئی

فوج اور قوم کے درمیان خلیج پیدا کرنا ملک دشمن قوتوں کا ایجنڈا ہے،پرویز الہیٰ

دوسری جانب جماعت اسلامی بلدیاتی الیکشن میں دھاندلی کی وجہ سے احتجاج کر رہی ہے،کراچی بلدیاتی انتخابات میں دھاندلی اور نتائج میں تبدیلی کے خلاف اسلام آباد، پشاور،ملتان اور لاہور میں الیکشن کمیشن کے دفتر کے باہر اور ملک بھر میں احتجاج کیا۔پشاور میں احتجاجی ریلی کی قیادت امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کی۔ امیر جماعت اسلامی سراج لاحق نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کراچی کے بلدیاتی انتخابات کے نتائج میں تاخیر پر سیاسی جماعتوں نے اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہے، کراچی میں تیسرے نمبر پر آنے والی جماعت تحریک انصاف نے تاخیر کو دھاندلی کا حربہ قرار دیا ہے اور یہی موقف دوسرے نمبر پر نشستیں حاصل کرنے والی جماعت اسلامی کا بھی ہے

Leave a reply