بجلی بحران کے فوری حل کیلیے نگران وزیراعظم پاکستان کو پانج نکاتی مشورہ

0
42
bijli

از: صاحبزادہ میاں جلیل احمد شرقپوری
(سابق ممبر قومی اسمبلی و پنجاب اسمبلی، سابق ضلع ناظم شیخوپورہ )

‏مریم نواز، بلاول بھٹو، آصف علی زرداری، مولانا فضل الرحمان اور شہباز شریف سارا جتھا لے کر مہنگائی مکانے آئے تھے لیکن مہنگائی مکانے کے لیے ظالموں نے عوام کو ہی ختم کرنے کا فارمولا بنادیا، اچھا ہے نہ عوام رہے گی اور نہ پھر مہنگائی۔

بہرحال جب تک عوام ہے ان کے ریلیف کے لیے موجودہ بجلی بحران پر کچھ اہم ضروری سفارشات نگران وزیراعظم پاکستان کے سامنے پیش کر رہا ہوں جن پر عملدرآمد سے فوری طور پر بجلی بحران پر کافی حد تک قابو پایا جا سکتا ہے۔۔
1. ملک بھر کی مارکیٹوں کو غروبِ آفتاب کے ساتھ پابند کر دیں تا کہ صرف اور صرف دن کی روشنی میں کاروبار کیا جائے، آذان مغرب کے ساتھ ہی تمام دکانیں ماسوائے کھانے پینے کی اشیاء والی والی دکانوں کے بند کر دی جائیں اور اسی طرح آذان عشاء تک میڈیکل اسٹورز کے علاؤہ بقایا تمام دکانیں بھی مکمل طور پر بند ہو جانی چاہیں ۔ جس نے بھی خریداری کرنی ھے دن کی روشنی میں کرے۔

2- ملک بھر میں تمام ٹرانسفارمرز کے ساتھ انفرادی میٹر لگایا جائے اور کسی ایک ریٹائرڈ محلےدار یا کسی ایک ذمہ دار فرد کو اس ٹرانسفارمر کے تمام بل جمع کرنے کی ڈیوٹی دی جائے ، جس پر مناسب اجرت دے دی جائے اس طرح ہر ٹرانسفارمر کا سارا حساب ہو تا رہے گا اور بجلی چوری گراؤنڈ لیول سے ختم ھو جائے گی ۔

3- فیکٹریوں اور کارخانوں میں بجلی کے لوڈ کو مینج کرنے کے لیے ہفتہ وار پر ضلع کے مطابق پلان ترتیب دیا جائے اور اس کے مطابق ہر فیکٹری کو پانچ دن بغیر لوڈ شیڈنگ کے بجلی فراہم کی جائے اور باقی دو دن مختلف اضلاع میں مختلف ایام میں فیکٹریوں کو مکمل چھٹی دی جائے اور اس طرح پورے ہفتہ میں بجلی کا لوڈ ہر ضلع کے مطابق مینج ھو جائے گا۔

4- ملک بھر میں ہر ادارے اور ہر فرد سے بجلی کی فری سہولت ختم کر دی جائے، واپڈا ملازمین سمیت تمام ادارے اپنی استعمال شدہ بجلی کا بل لازمی جمع کروائیں۔

5- ملک بھر کی تمام عبادت گاہوں کو بجلی فری سہولت فراہم کی جائے تاکہ اجتماعی عبادتگاھوں کا بوج تمام شہری برداشت کریں۔

یہی سفارشات 2014 میں وزیر پانی و بجلی عابد شیر علی کو بھی پیش کی مگر عملدرآمد نہ ھوا ، جو کہ آج بھی ریکارڈ کا حصہ ہیں۔اگر ان سفارشات پر آج بھی عمل درآمد ہو جائے تو فوری طور پر بجلی بحران پر قابو پانا ممکن ہو سکتا ہے۔

عمران خان کی گرفتاری کے بعد کور کمانڈر ہاؤس لاہور میں ہونیوالے ہنگامہ آرائی میں پی ٹی آئی ملوث نکلی

 بشریٰ بی بی کی گرفتاری کے بھی امکانات

نواز شریف کو سزا سنانے والے جج محمد بشیر کی عدالت میں عمران خان کی پیشی 

 مراد سعید کے گھر پر پولیس نے چھاپہ

اوریا مقبول جان کو رات گئے گرفتار 

 سانحہ نو مئی کے چھے مقدمات میں اہم پیشرفت

Leave a reply