پیپلز پارٹی کے بعد فاروق ستار نے میئر کراچی کے استعفیٰ کا کیا مطالبہ

ایم کیو ایم کے سابق رہنما فاروق ستار نے میئر کراچی کے استعفے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ میئر کراچی نے شہریوں کے ساتھ مذاق کیا۔ میئر کراچی وسیم اختر کا عہدے پر رہنے کا جواز نہیں، فوری استعفیٰ دیں۔

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق شہر قائد کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فاروق ستار کا کہنا تھا کہ مئیر کراچی عہدے سے استعفی دیں۔ پارٹی قیادت میئر کے سامنے بے بس ہے۔ خالد مقبول صدیقی ڈمی سربراہ پارٹی ہیں جو کرپٹ افراد کے لیے موزوں ترین ہیں۔ ماضی میں میئر کراچی سے 15 ارب کا حساب طلب کیا تو ڈسپلن کی خلاف ورزی قرار دیا گیا، اب وسیم اختر نے بغیر پارٹی قیادت مشاورت کے اتنا بڑا فیصلہ لیا، کسی نے نہیں پوچھا۔

میئر کراچی وسیم اختر کے استعفیٰ کا پیپلز پارٹی نے مطالبہ کر دیا

واضح رہے کہ میئر کراچی وسیم اختر کا کہنا تھا کہ آپ کو صرف ڈی جی گاربیج کا عہدہ دیاگیا تھا ،ہر چیزکاطریقہ ہوتا ہے،نوٹیفکیشن کےبعدآپ کو ڈیوٹی جوائن کرنی چاہیے تھی ممصطفیٰ کمال بدتمیز ہیں اس قابل نہیں کہ ان کے ساتھ ملاجائے ،مصطفیٰ کمال کوبدتمیزی پرمعطل کیا.

وسیم اخترکا یوٹرن، چوبیس گھنٹے گزرنے سے قبل ہی مصطفیٰ کمال کو معطل کر دیا

پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سابق ناظم کراچی مصطفی کمال نے میئر کراچی کو چیلنج کیا تھا کہ مجھے موقع دیں 90 دن میں کچرا صاف کر دونگا، جس کے بعد وسیم اختر نے انہیں 90 روز کیلئے پروجیکٹ ڈائریکٹر گاربیج تعینات کرتے ہوئے نوٹی فکیشن جاری کردیا۔ میئر نے کراچی کی تمام دستیاب وسائل بھی مصطفی کمال کو دینے کی ہدایت کی اور کہا کہ مصطفی ٰکمال 90 دن کے اندر کراچی کا کچرااٹھا کر دکھائیں

مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ میئر کراچی سے درخواست ہے متعلقہ افسران سے کہیں کہ میری کال ریسیوکریں،آج ایم کیوایم ناکام ہوگئی،ایم کیوایم کے نمایندوں کا عہدوں پررہنےکاجوازنہیں ،میئرکراچی جاری کردہ نوٹیفکیشن منسوخ نہیں کریں گے ،مجھےلاجسٹک کی سہولیات دی جائیں تین مہینے میں کام کردوں گا،ایم کیوایم کے بلدیاتی نمایندے اب مجھے جوابدہ ہیں،جو میری کال کا جواب نہیں دے گا میں اس کے گھر چلا جاؤں گا،تمام کارکنان تیاریاں پکڑیں ، سب مل کر شہر صاف کرینگے ،سالڈویسٹ مینجمنٹ کےاختیارات یونین سطح تک جانےچاہییں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.