fbpx

راجن پور: تحقیقات میں غیر ملکی خاتون کے ساتھ زیادتی ثابت نہ ہوسکی

راجن پور:فورٹ منرو میں امریکی شہری خاتون کے ساتھ زیادتی کا ڈراپ سین ہوگیا ، اس حوالے سے معلوم ہوا ہے کہ پنجاب کے سیاحتی مقام فورٹ منرو میں امریکی شہری خاتون کے ساتھ زیادتی نہیں ہوئی

ابتدائی تحقیقات میں غیر ملکی خاتون کے ساتھ زیادتی ثابت نہ ہوسکی، خاتون نے مقامی شہری مزمل سپرا زیادتی کا الزام عائد کیا تھا۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ خون کے نمونے اور شواہد کے پنجاب فرانزک سائنس لیبارٹری سے ٹیسٹ کرائے گئے۔

حکام کے مطابق غیر ملکی خاتون مرضی سے کئی روز سے مزمل سپرا کے ساتھ رہ رہی تھیں جبکہ اس سے قبل مذکورہ غیر ملکی خاتون غیر قانونی طور پر پاکستان کے مختلف شہروں میں بھی سفر کرتی رہی۔

وزیر اعلیٰ پنجاب کو ارسال کی گئی رپورٹ میں سفارش کی گئی ہے کہ غیر ملکی خاتون پنجاب ، سندھ اور بلوچستان کے علاقوں میں سفر کر چکی ہے، پنجاب کے حساس علاقوں میں خاتون کے سفر پر تفتیش کے ضرورت ہے، معاملے کی مکمل تحقیقات کی جائیں۔

واضح رہے کہ آج بدھ کو راجن پور میں امریکی خاتون سیاح کے ساتھ مبینہ زیادتی کے ملزمان مزمل شہزاد اور اذہان کھوسہ کو جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا گیا ہے۔ارابیلا ارپی نامی امریکی خاتون ٹک ٹاکر مبینہ طور پر راجن پور سے تعلق رکھنے والی نوجوان مزمل شہزاد کی محبت میں پاکستان آئی تھی۔

امریکی خاتون سیاح نے چند روزراجن پور کی منصور آباد کالونی میں رہائش اختیار کی، اسی دوران اس نے اپنے مقامی دوست کے ہمراہ فورٹ منرو اور کوٹ مٹھن کی بھی سیر کی۔

امریکی خاتون نے راجن پور کے رہائشی مزمل شہزاد سمیت دو ملزمان پر فورٹ منرو میں قیام کے دوران مبینہ زیادتی کا الزام عائد کیا ہے۔