fbpx

برطانیہ میں کئی دہائیوں کی سب سے بڑی ریل ہڑتال،مسافروں کو شدید پریشانی کا سامنا

ریل ہڑتال تنخواہیں بڑھانے اور دیگرشرائط پرمذاکرات میں ناکامی کےبعد کی جارہی ہے۔

برطانیہ میں گزشتہ کئی دہائیوں کی سب سےبڑی ریل ہڑتال آج کی جارہی ہے، ریل ہڑتال تنخواہیں بڑھانے اور دیگرشرائط پرمذاکرات میں ناکامی کےبعد کی جارہی ہے۔

باغی ٹی وی : برطانوی میڈیا کے مطابق یہ اس سال کی اب تک کی سب سے زیادہ تباہ کن ریل ہڑتال ہے صرف 11 فیصد خدمات چلیں گی، اور لندن سے برمنگھم، مانچسٹر، ایڈنبرا، لیورپول، نیو کیسل، برائٹن اور نورویچ سمیت متعدد شہروں کے لیے کوئی براہ راست ٹرین نہیں ہوگی۔

بد امنی پھیلانے کے حالیہ واقعات کی سازش کر نے پر 9 غیر ملکی گرفتار کر لئے،ایرانی…

اس کے علاوہ گرینڈ سینٹرل ٹرین سروس بھی ہڑتال پر ہے جس کے باعث یارکشائراورلندن آنے اور جانے والوں کو شدیدپریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے-

برطانوی میڈیا کے مطابق انگلینڈ اور ویلز کے درمیان کوئی سروس نہیں ہوگی،لندن سے برمنگھم، مانچسٹر، ایڈنبراکے درمیان کچھ انٹرسٹی روٹس پربھی ٹرینیں نہیں چلیں گی-

یہ ہڑتال ایسےوقت ہو رہی ہےجب برمنگھم میں کنزرویٹوکانفرنس جاری ہے، مطالبات کے حق میں ریلوےسروس کے40 ہزارملازمین ہڑتال کررہےہیں۔

10 سالہ بچی سے زیادتی کرنیوالے شخص کو 142 سال قید کی سزا

یہ پہلا موقع ہے کہ متعدد یونینوں نے ایک ہی دن مشترکہ کارروائی کی ہے – خاص طور پر، Aslef یونین میں ٹرین ڈرائیورز اور RMT یونین میں نیٹ ورک ریل سگنلرز، جو خدمات کو جاری رکھنے میں اہم ہیں۔ ٹی ایس ایس اے اور یونائیٹ یونین کے کچھ ارکان بھی ہڑتال پر ہیں۔ جبکہ ریلوے انڈسٹری کا کہنا ہے کہ ہزاروں بیک اپ عملہ کام کرے گا، لیکن یہ ڈرائیوروں اور نہ ہی تمام سگنلرز کی جگہ لے سکتا ہے۔

قندھار: اجتماعی قبر سے 12 افراد کی لاشیں برآمد

ریلوے کی تین سالوں میں تنخواہوں میں اضافہ نہیں ہوا، جس نے وبائی امراض کے دوران خدمات کو جاری رکھا، اور اب مہنگائی ان کی اجرتوں میں تیزی سے کمی کر رہی ہے۔ تاہم، حکومت کے ساتھ معاہدے کے تحت ٹرین آپریٹرز کو ریل مسافروں کی آمدنی میں تیزی سے کمی کی وجہ سے اضافے کو محدود کرنے کے لیے کہا گیا ہے، جبکہ نیٹ ورک ریل کا یہ بھی کہنا ہے کہ اضافے کی ادائیگی کام کی جگہ کی "جدید کاری” کے ذریعے کی جانی چاہیے۔

افغانستان کی سرزمین کوپاکستان سمیت کسی ملک کے خلاف استعمال نہیں کرنے دیں گے،ذبیح…