کیا ایک سیاسی جماعت کی سیاسی بھاگ دوڑ پر پابندی ہے؟ پشاور ہائیکورٹ

0
131
peshawar

پی ٹی آئی کو جلسوں کی اجازت نہ دینے کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت ہوئی

پشاورہائیکورٹ کے جسٹس اعجاز انور پر مشتمل دو رکنی بنچ نے سماعت کی ،چیف سیکرٹری، ایڈوکیٹ جنرل، ڈائریکٹر جنرل لاء الیکشن کمیشن عدالت میں پیش ہوئے، جسٹس اعجاز انور نے کہا کہ ایک پارٹی جلسہ کرے تو اسکے خلاف کریک ڈاؤن شروع ہوجاتا ہے، کیا ایک سیاسی جماعت کی سیاسی بھاگ دوڑ پر پابندی ہے؟ چیف سیکرٹری نے کہا کہ سب کو یکساں مواقع فراہم کریں گے، کل پشاور میں پی ٹی آئی ورکرز کنونشن ہوا ہے،تمام اضلاع میں جلسوں کے لئے جگہ کا تعین کیا ہے, ایس او پیز اور کے مطابق اجازت دیتے ہیں،

جسٹس اعجاز انور نے کہا کہ اگر عدالت مداخلت نہیں کرتی تو انکو اجازت نہیں ملتی، 5 سال میں آپکو ایک الیکشن کروانا ہوتا ہے باقی اور کام نہیں ہے, آپ سے کچھ مانگا جاتا ہے تو اپ کہتے ہیں کہ کچھ نہیں ہے،وکیل الیکشن کمیشن نے کہا کہ ہم اپنا کام کررہے ہیں ہمارا کام صاف و شفاف الیکشن کرنا ہے۔ جہاں قانون کی خلاف ورزی ہو تو ہم کاروائی کرتے ہیں، جسٹس اعجاز انور نے استفسار کیا کہ شیڈول کب جاری ہوگا، وکیل الیکشن کمیشن نے کہا کہ حلقہ بندیاں ہوگئی امید ہے اگلے ہفتے شیڈول جاری ہوگا، الیکشن کمیشن کی کوشش ہے کہ لیول پلینگ فیلڈ سب جماعتوں کو دی جائے، جسٹس ایس ایم عتیق شاہ نے کہا کہ قومی اور بین الاقوامی میڈیا پر شور ہے کہ لیول پلینگ فیلڈ ایک پارٹی کو نہیں فراہم کی جارہی، عدالت نے چیف سیکرٹری اور الیکشن کمیشن کی یقین دہانی پر توہین عدالت درخواست نمٹا دی

عام انتخابات،حتمی حلقہ بندیوں کی اشاعت

انتخابات میں تاخیر کے ذمہ داران کیخلاف کاروائی کیلئے جلد سماعت کی درخواست دائر 

جسٹس اطہر من اللہ نے 41 صفحات کا اضافی نوٹ جاری کر دیا

سات منٹ پورے نہیں ہوئے اور میاں صاحب کو ریلیف مل گیا،شہلا رضا کی تنقید

پینا فلیکس پر نواز شریف کی تصویر پھاڑنے،منہ کالا کرنے پر مقدمہ درج

نواز شریف کے خصوصی طیارے میں جھگڑا،سامان غائب ہونے کی بھی اطلاعات

میری دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ میرے دل کے اندر کبھی کوئی انتقام کا جذبہ نہ لے کر آنا، نواز شریف

نواز شریف ،عوامی جذبات سے کھیل گئے

Leave a reply