fbpx

ایف بی آر کا ڈیٹا لیک کیس، گرفتار صحافی جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے

ایف بی آر کا ڈیٹا لیک کیس، گرفتار صحافی جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ایف بی آر کا ڈیٹا لیک کرنے کے حوالہ سے گرفتار صحافی کے جسمانی ریمانڈ پر محفب فیصلہ سنا دیا

سابق آرمی چیف جنرل ر قمرجاوید باجوہ کا ایف بی آر کا ڈیٹا لیک کرنے کے معاملے میں گرفتار صحافی شاہد اسلم کو عدالت پیش کیا گیا، اس موقع پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے، عدالت میں پراسیکیوٹر جنرل نے کہا کہ شاہد اسلم کو ایف بی آرسے انفارمیشن مل رہی تھی،احمد نورانی کو شاہد اسلم انفارمیشن دے رہے تھے شاہد اسلم نے غیر ملکی افراد کو انفارمیشن دی ، کیس کی سماعت کے بعد عدالت نے شاہد اسلم کے جسمانی ریمانڈ پر فیصلہ محفوظ کیا تھا جو اب سنا دیا گیا ہے، عدالت نے صحافی کو دو روزہ جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالہ کر دیا ہے

عدالت پیشی کے موقع پر صحافی شاہد اسلم کا کہنا تھا کہ مجھ سے میرے لیپ ٹاپ اور موبائل کا پاسورڈ مانگا جارہا ہے، میری جان بھی لے لیں، مجھے الٹا لٹکا دیں ہڈیاں توڑ دیں میں ان کو پاسورڈ نہیں دوں گا کل بھی انہوں نے کوشش کی ہے۔

قبل ازیں ایف آئی اے نے شاہد اسلم کو لاہور سے گرفتار کر کے اسلام آباد منتقل کیا ، ایف آئی اے کی جانب سے ڈیٹا لیک کیس میں ایف بی آر کے 3 اہلکاروں کو پہلے ہی گرفتار کیا جا چکا ہے

وزیراعظم شہباز شریف سے چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی جنرل ندیم رضا کی الوداعی ملاقات

آرمی چیف نے مختلف فارمیشنز کے الوداعی دوروں کے ایک حصے کے طور پر سیالکوٹ اور منگلا گیریژن کا دورہ کیا۔

عمران خان کے فوج اور اُس کی قیادت پر انتہائی غلط اور بھونڈے الزامات پر ریٹائرڈ فوجی سامنے آ گئے۔

القادر یونیورسٹی کا زمین پر تاحال کوئی وجود نہیں،خواجہ آصف کا قومی اسمبلی میں انکشاف

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے آرمی چیف کی تعیناتی پر دستخط کر دئیے

بیرونی سازش ہو اور فوج خاموشی سے بیٹھی رہے، یہ گناہ کبیرہ ہے،آرمی چیف

سینئرصحافی و اینکر پرسن مبشر لقمان نے سابق وزیراعظم عمران خان کے حوالہ سے اہم انکشافات کئے ہیں

علاوہ ازیں کنوینر فارن میڈیا ریپریزنٹیشن ایسوسی ایشن لاہور، خالد محمود خالد نے سابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے منسلک ایف بی آر ڈیٹا لیک سے متعلق جاری انکوائری کے سلسلے میں صحافی شاہد اسلم کو گرفتار کرنے کے واقعہ پر حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے،خالد محمود خالد کا کہنا تھا کہ صحافی شاہد اسلم کی گرفتاری قابل مذمت ہے، شاہد اسلم ایک صف اول کے تحقیقاتی صحافی ہیں،ایف آئی اے نے انہیں جھوٹے مقدمے میں پھنسایا ہے، خالد محمود خالد سمیت دیگر صحافیوں نے شاہد اسلم کی رہائی کا مطالبہ کیا ہے

قبل ازیں ایف بی آر نے مبینہ طور پر جنرل ر قمر جاوید باجوہ کی فیملی کے ٹیکس ریٹرن لیک میں ملوث گریڈ 18 کے دو افسران کو عہدوں سے ہٹا دیا ہے، افسران کے خلاف تحقیقات کا بھی آغاز کر دیا گیا ہے،فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی تحقیقات میں پیشرفت سامنے آئی ہے ابتدائی رپورٹ میں ان لینڈ ریونیو کے 2 کو افسران برطرف کر دیا گیا، ڈپٹی کمشنر ان لینڈ ریونیو عاطف نواز وڑائچ کو عہدے سے ہٹادیا گیا، ڈپٹی کمشنر ان لینڈ ریونیو ظہور احمد کو بھی عہدے سے ہٹادیا گیا،افسران سے ڈیٹا کے لیک ہونے کے سلسلے میں تحقیقات کی جا رہی ہیں،دونوں افسران کے لاگ ان اور پاس ورڈ سے مبینہ طور پر ڈیٹا لیک ہوا، انکم ٹیکس آرڈیننس کی شق 198 اور 216 کے خلاف ورزی کے تحت تحقیقات کی جارہی ہیں ،میڈیا رپورٹس کے مطابق ایف بی آر نے ریجنل ٹیکس آفس لاہور کے گریڈ اٹھارہ کے ڈپٹی کمشنر ان لینڈ ریونیو عاطف نواز وڑائچ اور ڈپٹی کمشنر ان لینڈ ریونیو ظہور احمد کو تبدیل کرکے ایف بی آر ہیڈ کوارٹر اسلام آباد کے ایڈمن پول بھجوا دیا ہے اور ان افسران کو ہدایت کی گئی ہے کہ آن لائن ہیومن ریسورس مینجمنٹ سسٹم یا اپنا آئی جے پی لاگن استعمال کرتے ہوئے اپنے عہدوں کا چارج چھوڑ کر ایف بی آر ہیڈ کوارٹر ایڈمن پول رپورٹ کریں