fbpx

حکومت نے پیکا ایکٹ کی شق 20 کی بحالی کیلئےسپریم کورٹ میں دائر پٹیشن واپس لے لی

حکومت نے وفاقی تحقیقاتی ایجنسی ( ایف آئی اے) کی طرف سے پیکا ایکٹ کی شق 20 کی بحالی کے لیے سپریم کورٹ میں دائر پٹیشن واپس لے لی۔

باغی ٹی وی: وزیر اطلاعات مریم اورنگ زیب کا ٹوئتر پر جاری اپنے ایک بیان میں کہنا تھا کہ وزیر اعظم اور مجھے تھوڑی دیر پہلے معلوم ہوا کہ ایف آئی اے نے پی ای سی اے ایکٹ 2016 کے بارے میں آئی ایچ سی کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی ہے تاکہ ایکٹ کے سیکشن 20 کو بحال کیا جائے۔


انہوں نے کہا کہ یہ پٹیشن فوری طور پر واپس لے لی جاتی ہے، کیونکہ یہ حکومت کی بیان کردہ پالیسی اور آزادی اظہار کو یقینی بنانے کے اصول کے خلاف ہے وزیر اعظم نے اس درخواست کے دائر ہونے کا سخت نوٹس لیا ہے۔


وفاقی وزیر کے مطابق بدقسمتی سےپٹیشن دائر کرنے کا بروقت پتا نہ چل سکا بشام میں سگنل نہ ہونے کی وجہ سے وزیراعظم شہباز شریف کو ، کیونکہ ہم دن کے وقت بشام میں تھے جہاں کوئی سگنل نہیں تھے وزیراعظم نے ایف آئی اے کی جانب سے پٹیشن دائر کرنے کا سخت نوٹس لیا ہے اور اسے واپس لے لیا گیا ہے۔


اس سے پہلے پی ایف یو جے کے صدر شہزادہ ذوالفقار اور سیکرٹری جنرل ناصر زیدی نے مشترکہ بیان میں پیکا ایکٹ شق 20 کی بحالی کے لیے ایف آئی اے کی اپیل پر اظہارِ تشویش کیا تھا ۔

دوسری جانب ترجمان ایف آئی اے نے ایک بیان میں اعتراف کیا ہے کہ وفاقی ادارے نے وزارت داخلہ اور حکومت کی اجازت کے بغیر درخواست دائر کی تھی جو واپس لی جا رہی ہے۔

پاکستان اور بھارت کیلئے وارننگ جاری