عمران خان کے دور میں 20 ہزار ارب کا قرض بڑھا،مفتاح اسماعیل

0
41

وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا ہے کہ ہم نے مشکل وقت میں مشکل فیصلے کیے ،مفتاح اسماعیل کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی نے آئی ایم ایف سے معاہدہ کیا اور پھر خلاف ورزی کی،آئی ایم ایف کے پاس فوری جانا چاہیے تھا،کرونا آیا توآئی ایم ایف میں بریک آیا، ورلڈ بینک نے امداد دی،

وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کا مزید کہنا تھا کہ پچھلے سال کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ساڑھے17بلین ڈالر کا ہو گیا پاکستان میں آبادی بڑھ گئی ہے، معیشیت کا حجم بھی بڑھ گیا پرویز مشرف کے دور میں 8.1اعشاریہ کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ تھا ،میرا نام ای سی ایل میں تھا پاسپورٹ بنوایا اورروانہ ہوا،حکومت سنبھالنے کے بعد فورا آئی ایم ایف سے رابطہ کیا،کاروباری طبقے کو ٹیکس نیٹ میں لارہےہیں،حکومت میں آنے کے بعد آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی ترجیح تھی میں 2بار کراچی سےالیکشن لڑا اور ہار گیا،اب بھی الیکشن ہارا تو میں دوبارہ نہیں لڑونگا،کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 17اعشاریہ 5ارب ڈالر ہے ،مالیاتی خسارہ 5ہزار ارب روپے کا ہے،عمران خان کےدور میں 20 ہزار ارب کا قرض بڑھا،اسٹیٹ بینک نے شرخ سود 15فیصد کردی ہے،

وزیر خزانہ کا مزید کہنا تھا کہ کورونا میں 4.5ارب ڈالر کا قرض بھی معاف ہوا،ہمیں آئی ایم ایف سے بات کرنے میں مشکل ہوئی،پاکستان نے اب تک پورٹ سےٹیکس حاصل کیا،پاکستان میں ٹیکس دینے کو کوئی تیار نہیں ببل گم کا جو خام مال ہے اسکی درآمدی ڈیوٹی دی جاتی ہے،پاکستان میں 80 فیصد مینو فیکچرر پیداوار کر کے مال فروخت کرتے ہیں،ایک سرمایہ کار نے پلاسٹک فیکٹری لگا نے کی بات کی اور 20 سال کیلئے ٹیکس میں رعایت مانگ لی ،ہم نے ایک ماہ سے ایکسپورٹ نہیں بڑھائی اور امپورٹ کم کردی،ہمیں اپنے اخراجات کنٹرول کرنے ہونگے،ماضی کی حکومت نے جو قرض لیا اس سے زیادہ خرچ کردیا،ن لیگی حکومت نے بجلی کی پیداوار ڈبل کردی ،سیلاب کے بعد کوئلہ بھی 6 گنا مہنگا ہوگیا ،پی ٹی آئی نے سب سے بڑی غلطی کی، 5 روپے بجلی اور پیٹرول پر سبسڈی دی،جتنا بھی پیٹرول مہنگا ہوتا ہے اسکا پیسہ میرے گھر نہیں جاتا،ہمیں دنیا میں جاکر قرض مانگنےمیں شرم آتی ہے،پاکستان اب دیوالیہ نہیں ہوگا 28 ارب روپے بینظیر انکم سپورٹ کے تحت دئیے ہیں، خیبرپختونخوا میں دالیں، لائیو اسٹاک اور کاٹن کی فصلیں متاثر ہوئیں ،گنا کی فصل 20 فیصد خراب ہو گئی، پیاز اور اول کی فصلیں تباہ ہوئی ہیں،شوکت ترین نے جو معاہدہ کیا اسمیں سیلز ٹیکس بڑھتا تھا،ہم نے لیوی میں اضافہ کیا اسوقت لیوی 37روپے سے زائد کردی،اسوقت ہم ڈیزل کو مہنگا نہیں کرسکتے شرمندہ ہوں ہماری حکومت میں تاریخی مہنگائی ہوئی ،مجھے اپنی پارٹی سے مخالفت کا سامنا ہے پنجاب میں ہماری پارٹی کو نقصان ہوا ،

بیانیہ پٹ گیا، عمران خان کا پول کھلنے والا ہے ،آئی ایم ایف ڈیل، انجام کیا ہو گا؟

پولیس پہنچی تو میاں محمود الرشید گرفتاری کے ڈر سے سٹور میں چھپ گئے

لانگ مارچ میں فیاض الحسن چوہان کتنے بندے لے کر نکلے،ویڈیو وائرل

کارکن تپتی دھوپ میں سڑکوں پرخوار،موصوف ہیلی کاپٹر پرسوار،مریم کا عمران خان پر طنز

Leave a reply