جب محمد بن سلمان کو پتہ چلا کہ نیا بادشاہ کون ہو گا تو انہوں نے کیا کیا؟ مبشر لقمان نے کیے تہلکہ خیز انکشافات

0
188

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سینئر صحافی و اینکر پرسن مبشر لقمان نے کہا ہے کہ اسوقت سعودی ایوان اقتدار میں کچھ دال میں کالا چل رہا ہے، سعودی شہزادوں کی گرفتاریاں جاری ہیں، 2017 میں بھی گرفتاریاں ہوئی تھیں، مگر اس بار مقصد کچھ اور لگ رہا ہے، کہا یہ جا رہا ہے کہ محمد بن سلمان کے اقتدار کی راہ ہموار کی جا رہی ہے،میدان صاف کیا جا رہا ہے، کیا واقعی ایسا ہی ہے ؟

مبشر لقمان کا مزید کہنا تھا کہ چھ مہینے پہلے سنا ہو گا کہ محمد بن سلمان کو راستے سے ہٹانے کی سازش کی گئی، اب محمد بن سلمان بھی راستے میں آنے والی تمام رکاوٹیں ہٹانا چاہتے ہیں، 5 ماہ پہلے سعودی بادشاہ کے ذاتی محافظ جنرل عبدالعزیز کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا تھا، کہا یہ گیا تھا کہ اسے دوست نے گولی مار دی، اور گولی مارنے والے نے خود کو پولیس کے حوالے کرنے سے انکار کر دیا، جس پر پولیس نے اسے گولی مار دی. مجرم کو موقع پر ہی ختم کرنا بہت سارے سوال کو جنم دیتا ہے، قتل کرنے والے کے عزائم کیا تھے؟ اکثر یہ کام مجرم تک پہنچنے کے لئے کیا جاتا ہے، میں ساری باتیں ہوا میں نہیں کر رہا ،پانچ مہینے پہلے اسلامک ریونل پارٹی کے محمد المصریٰ نے ٹویٹ کی کہ جنرل عبدالعزیز آپ کی آواز واکی ٹاکی پر خوفزدہ کر دیتی ہے،آپ کی پارٹی برائی میں پڑ گئی ہے، ایسا لگتا ہے کہ تم نے اپنا فوجی سوٹ گیلا کر لیا ہے، کل محمد بن سلمان تمہیں سب کو تبدیل کر دے گا.

سعودی شاہی خاندان میں بغاوت:گورنرہاوسز،شاہی محل فوج کے حوالے،13شہزادےگرفتار،حرمین شریفین کواسی وجہ سےبندکیا : مبشرلقمان

سعودی ولی عہد کے خلاف بغاوت کے الزام میں شاہی خاندان کے 20 مزید افراد گرفتار

سعودی عرب میں بغاوت ، کون ہوگا اگلا بادشاہ؟ سینئر اینکر پرسن مبشر لقمان نےبتائی اندر کی بات

مبشر لقمان نے مزید کہا کہ محمد المصریٰ اسے مسلسل وارن کر رہے تھے،اگلی ٹویٹ میں لکھا کہ آپ کو میرا مشورہ ہے کہ استنبول قونصل خانے القطیبی کی طرح گدھے مت بنو،آسٹریلیا یا نیوزی لینڈ کی زمین پر کہیں پناہ حاصل کر لو اسے پہلے کہ ختم ہو جائے، سعودی ہیومن رائتس ایکتوسٹ کا کہنا ہے کہ جنرل عبدالعزیز کی موت پر سعودی حکومت کی جانب سے بیان جاری نہیں کیا گیا، یہ سب چیزوں کو کنفیوز کرتا ہے، جنرل عبدالعزیز کے بھتیجے نے ایک ٹویٹ کی جس میں اس نے کہا کہ حقائق غلط بتائے جا رہے ہیں جس نے گولی ماری وہ تیسرا آدمی تھا، میرے انکل کو دھوکے سے مارا گیا اور وہ یہی بھتیجا تھا جس نے شہزادہ محمد بن نائف جو اب گرفتار ہیں، ان کے گھرتعزیت کرنے گئے تو اسی بھیتیجے نے فوٹیج جاری کی تھی، شہزادہ نائف جنرل عبدالعزیز کے گھر تعزیت کرنے گئے تھے،جبکہ یہ واقعہ نائف بن عوید نامی ٹویٹر اکاؤنٹ سے جاری کیا گیا جو 2010 سے قائم ہے،

مبشر لقمان کا مزید کہنا تھا کہ ٹی آر ٹی کے ساتھ انٹرویو میں عرب صحافی عرب ٹائم کے ایڈیٹر ڈاکٹر اسامہ فوزی نے آل سعود کے اقتدار کی جنگ کے بارے میں بہت سی اہم باتیں شیئر کیں ، انہوں نے بہت سارے ایسے واقعات کا ذکر کیا جو جنرل کے قتل سے پہلے رونما ہوئے تھے، اسامہ فوزی کے مطابق امارتی کراؤن پرنس محمد بن زید کو قریبی ذرائع نے بتا دیا تھا کہ محمد بن سلمان کو خبر ملی کہ اس کے والد شاہ سلمان نے اسکی جگہ احمد بن عبدالعزیز کو حکمرانی کے لئے چن لیا تھا اور جنرل عبدالعزیز کو حکم دیا تھا کہ شہزادے کو تاج سے الگ کر دیں، اور شہزادے کی کولمبیا اور بیروت میں جو کرائے کی فوج ہے اس کو ختم کرنے کا حکم بھی سنایا،اماراتی ذرائع کے مطابق محمد بن سلمان نے جنرل عبدالعزیز پر الزام لگایا کہ وہ اس کے والد کی مہم جوئی کی ناکامی کے راز لیک کرتا ہے اور ایک محاورہ استعمال کیا کہ کنویں کو زہر آلود کر رہا ہے، محمد بن سلمان نے اپنے والد اور چچا کو ہاؤس اریسٹ کر کے جنرل کو ٹھکانے لگا دیا، اس حوالہ سے بے تحاشا باتیں ہوئیں،کہ جنرل کے بارے میں جس دوست کا کہا جا رہا ہے کہ وہ اسکے گھر گیا تھا اور وہان اسے مارا گیا، بات ایسے نہیں ہے، وہ دوست کے گھر گیا تھا لیکن ایک تیسرا بندہ بھی آیا اور اسکو گولی ماری، وہ گھر سے تیارہو کر آیا تھا،وہ اسلحہ ساتھ لے کر کیوں آیا تھا ، یہ سارے سوال لوگ پوچھ رہے ہیں، انکی موت کی خبر ٹویٹر پر حکومت سے وابستہ اکاؤنٹ سے کیوں شائع کیا گیا جبکہ یہ کام تو مکہ پولیس کا تھا

مبشر لقمان کا مزید کہنا تھا کہ بعد میں بیان پولیس نے جاری کیا، 20 کے قریب شہزادے گرفتار کئے جا چکے ہیں جس میں محمد بن سلمان کے چچا بھی شامل ہیں، اماراتی ذرائع کے مطابق انہیں نیا حکمران چنا جا رہا تھا،جبکہ ان کے سابق کراؤن پرنس بھی گرفتار ہیں جو کہ محمد بن سلمان کے لئے خطرہ بھی ہیں. آپ کو یاد ہو گا کہ محمد بن سلمان نے کہا تھا کہ مجھے بادشاہ بننے سے موت ہی روک سکتی ہے، یہ حالات ہیں سعودی عرب کے اور معاملہ اب انجام کے قریب پہنچ چکا ہے

مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ ہوا کیا؟ پچھلے کچھ دنوں سے سعودی عرب میں بڑی کھچڑی پک رہی تھی، بارڈر کو بند کر دیا گیا ،پہلے یہ کہا گیا کہ ایران سے زائرین عمرے کے لئے نہیں آئیں گے پھر اس کو بڑھایا گیا اور کہا گیا کہ کوئی بھی زائرین عمرے کے لئے نہیں آئیں گے،بلکہ خانہ کعبہ کو سیل کر دیا گیا، اور کہا گیا کہ یہاں سپرے کیا جا رہا ہے، اس کے بعد طواف کی اجازت دی جائے گی، یہ معاملہ جب سامنے آیا تو پتہ چلا بڑی ہائی پروفائل بغاوت تھی،اسکے بارے میں محمد بن سلمان کو پتہ چلا گیا ، اس نے سگے بھائی،کزن سمیت دیگر شہزادے جو محمد بن سلمان کے مخالف سوچ رکھتے ہیں جو چاہتے ہین کہ محمد بن سلمان کو ہٹا کر نائف کو سعودی ولی عہد بنایاجائے کو گرفتار کر لیا گیا، دوسری طرف یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ محمد بن سلمان چاہتے ہیں کہ انکو والد کی زندگی ہی میں باشادہ بنا دیا جائے کیونکہ ان کو لگتا ہے کہ بعد مین یہ شاید یہ کام بخوبی انجام نہ پایا جا سکے جو ابھی ان کی زندگی میں ہو سکتا ہے،نومبر میں جی ایٹ کا سمٹ ہے اور وہ سعودی عرب میں ہے، محمد بن سلمان کی خواہش ہے کہ وہ بطور کنگ اس کو چیئر کریں،اب یہ ساری باتیں ڈائریکت تو مجھے نہین پتہ، کچھ میڈیا و سوشل میڈیا سے لی گئی ہیں، وال سٹریٹ جنرل نے سب سے پہلے خبر دی، پھر بی بی سی، الجزیرہ بھی خبر دے رہا ہے،

مبشر لقمان نے مزید کہا کہ عجیب عجیب قیاس آرائیاں کی جا رہی ہیں،کچھ لوگ کہتے ہیں کہ بادشاہ کتنے صحتمند ہیں ، علاج کرنے کے لئے بادشاہ نے پرسوں دو لوگوں کا حلف لیا، اور اسکی تصاویر میڈیا پر ریلیز کی گئی تا کہ پتہ چلے کہ بادشاہ صحتمند ہین اور کام کر رہے ہیں، بغاوت محمد سلمان کے خلاف ہے یا شاہ سلمان کے، کسی بھی ممکنہ بغاوت سے نمٹنے کے لئے سب لوگوں کو راستے سے ہٹایا جا رہا ہے، یہ سارا معاملہ اسوقت شروع ہوا تھا جب جمال خشوگی نے نشاندہی کی کہ ہاؤس آف سعود میں سب کچھ ٹھیک نہین، جمال خشوگی کا تعلق سعودی رائل فیملی کے ساتھ سمجھا جاتا تھا انکا کوئی آرٹیکل رائل فیملی کے خلاف نہیں ہوتا تھا ما سوائے ان آرٹیکل کے جو انہوں نے بعد میں لکھے اور استنبول میں سعودی ایمبیسی میں جو کچھ ان کے ساتھ ہوا وہ سب کو پتہ ہے،پھر اس کے بعد ہائی پروفائل لوگوں کو یہ کہہ کر گرفتار کر لیا گیا کہ انہوں نے ملک کو لوٹا، اس مین ولید بھی موجود تھے، ان کو سیل کر دیا گیا تھا، اس کے بعد محمد بن سلمان کی گرفت بادشاہت کے لئے مضبوط ہو چکی تھی، پرنس نائف نے خاندان میں اتنی مقبولیت حاصل کر لی ہے کہ خود سعودی شہزادے کے سگے بھائی نے ان کے ہاتھ پر بیعت کرنے سے انکار کر دیا،

شاہ سلمان کی ہفتہ وارانہ کیبنٹ میٹنگ کی صدارت ، بغاوت کا خطرہ ٹلنے لگا

Leave a reply