جاسوسی کے الزام میں دو اعلیٰ فوجی افسران کو سزائے موت، ایک کو 14 سال قید، بڑی خبر آگئی

پاکستانی آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے دو فوجی افسران اور ایک سول افسر کی سزا کی توثیق کر دی ہے.

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق آئی ایس پی آر کی طرف سے کہا گیا ہے کہ بریگیڈیئر (ر) راجہ رضوان کی سزائے موت کی توثیق کر دی گئی ہے. ڈاکٹر وسیم اکرم کو بھی موت کی سزا سنائی گئی ہے. دو سال میں مختلف رینک کے 400 افسران کو سزائیں سنائی گئی ہیں. دو سال میں دی جانے والی سزاؤں میں‌ ملازمت سے برطرفی بھی شامل ہے. اسد درانی کا احتساب بھی اسی پالیسی کے تحت عمل میں‌آیا. لیفٹیننٹ جنرل (ر) جاوید اقبال کو چودہ سال قید بامشقت کی سزا سنائی گئی ہے.

تینوں افسران کو جاسوسی کے الزام میں سزا سنائی گئی ہے. مجرمان نے حساس معلومات دوسرے ملکوں کو لیک کی تھیں. آرمی افسران اورسویلین افسران کو جاسوسی کے الزام میں سزا دی گئی تھی. آئی ایس پی آر کا کہنا ہےکہ فوج کے افسران چاہے کسی رینک کے ہوں احتساب کے دائرے میں شامل ہیں.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.