مودی میں‌ دم ہے تو 15 اگست کو لال قلعہ پر پرچم لہرا کر دکھائیں، بھارتی فوجیوں‌ نے کھلا چیلنج دے دیا

بھارت میں‌ ہندوستانی ریٹائرڈ فوجیوں‌ نے ہندوستانی وزیر اعظم نریندر مودی کو کھلا چیلنج دیا ہے کہ وہ 15 اگست کو لال قلعہ پر انڈیا کا پرچم لہرا کر دکھائیں.

باغی ٹی وی کی رپورٹ‌ کے مطابق ہندوستانی ریٹائرڈ فوجیوں‌ نے کہا ہے کہ مودی حکومت کنٹریکٹ پر ملک چلا رہی ہے. سسٹم ختم ہو کر رہ گیا ہے. مودی کو پانچ سال کیلئے اقتدار ملنے پر اگر وہ سمجھتے ہیں کہ جو چاہے کریں‌ تو ایسا نہیں ہے. بھارتی ریٹائرڈ فوجی اپنے ساتھ ہونے والی زیادتیوں‌ پر سراپا احتجاج ہیں. بھارتی فوجی ون رینک، ون پنشن کے معاملہ پر سب سے زیادہ ناراض ہیں اور اس سلسلہ میں وہ احتجاجی دھرنے بھی دیتے رہے ہیں‌ جبکہ حالیہ الیکشن میں ایک فوجی نے مودی کے خلاف الیکشن لڑنے کا بھی اعلان کر رکھا تاہم اس کے کاغذات نامزدگی مسترد کر دیے گئے.

رپورٹ کےمطابق بھارتی ریٹائرڈ فوجیوں‌ کا کہنا ہے کہ وہ 15 اگست کو نریندر مودی کو لال قعلہ پر ہندوستانی پرچم لہرانے سے ہر صورت روکیں گے.

پانچ سال کے لئے انہیں اقتدار مل گیا اور وہ جو چاہے وہ کریں گے“۔فوجیوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے ”2019کے لوک سبھا الیکشن کی گنتی بھی رکوانے کی کوشش کی اور اس کے لئے سپریم کورٹ کے چکر بھی کاٹے۔

پھر وزیراعظم کے بشمول دیگر کابینی اور مملکتی وزراء کی حلف برداری تقریب کو روکنے کے لئے جنتر منتر پر دھرنا دیا“۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.