fbpx

پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس شروع، ترک صدر کا کیسے کیا گیا استقبال؟

پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس شروع، ترک صدر کا کیسے کیا گیا استقبال؟

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ترک صدر طیب اردوان کے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے قبل ترکی اور پاکستان کے قومی ترانے بجائے گئے، اس موقع پر ترک صدر، وزیراعظم عمران خان سمیت پاکستان کی عسکری قیادت، اپوزیشن رہنما، غیر ملکی سفیر پارلیمنٹ میں موجود تھے.

ترک صدر کے خطاب سے قبل پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس تلاوت قرآن مجید سے شروع ہوا،تلاوت کلام پاک کے بعد نعت پڑھی گئی، اجلاس کی صدارت چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی اور اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کی،

ترک صدر پارلیمنٹ ہاؤس پہنچے تو وزیراعظم عمران خان نے انکا استقبال کیا، اس موقع پر ریڈ زون کو سیل کیا گیا تھا، اور خیر مقدمی بیرز لگائے گئے تھے، ترک صدر پارلیمنٹ ہاؤس پہنچے تو اراکین نے کھڑے ہو کر ان کا استقبال کیا، اجلاس میں جمعیت علما اسلام ف کے اراکین بھی موجود رہے، سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی ،راجہ ظفر الحق بھی ایوان میں موجود تھے.

ترک صدر نماز جمعہ کہاں کریں گے ادا اور آج کی کیا ہوں گی مصروفیات؟ اہم خبر

اقوام متحدہ مداخلت کرے، تقریر سے کچھ نہ ہوا تو دنیا کو پتہ چل جائے گا کشمیر میں کیا ہو رہا ہے، وزیراعظم

اسلامی ممالک کو کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی دکھانی ہوگی، وزیراعظم

کپتان ہو تو ایسا،اپوزیشن کی سازشوں کے باوجود وزیراعظم عمران خان کو ملی اہم ترین کامیابیاں

وزیراعظم اور ترک صدر کی ملاقات، کیا بات چیت ہوئی؟ اہم خبر

ترک صدر کے پہنچنے سے قبل پارلیمنٹ میں ایسا کیا کام کیا گیا کہ وزیراعظم بھی حیران رہ گئے

پاکستان کی پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے مجموعی طورپر یہ چوتھا خطاب ہو گا، ترک صدر کو بطوروزیراعظم دو بارپاکستان کی پارلیمنٹ سے خطاب کرنے کا اعزاز حاصل ہے جبکہ بطورصدر وہ دوسری بار پاکستان کی پارلیمنٹ سے خطاب کریں گے۔

قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کے میڈیا ونگ سے جاری بیان کے مطابق رجب طیب اردوان بطور ترک وزیر اعظم 26 اکتوبر 2009 اور 21 مئی 2012 کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کر چکے ہیں۔ رجب طیب اردوان نے بطور صدر 17نومبر 2017 کوپہلی مرتبہ خطاب کیا تھا جبکہ وہ بطور ترک صدر پاکستان کی پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے دوسرا خطاب کریں گے۔ترک صدر رجب طیب اردوان کا پاکستان کی پارلیمنٹ سے چوتھی بار خطاب کو انتہائی اہمیت کا حامل سمجھا جا رہا ہے۔ان کا پارلیمنٹ سے خطاب پاکستان کے ساتھ والہانہ محبت اورلازوال دوستی کی غماز ی کرتا ہے۔

صدر رجب طیب اردوان کے خطابات سے پہلے ترکی کے صدر کینان ایورن بھی 15نومبر 1985کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرچکے ہیں۔ترکی اورپاکستان ایک دوسرے کے ساتھ تعلقات اسلام ، اخوت ، مساوات ، بھائی چارے ، ثقافت اور تاریخ کے لازوال رشتوں پر استوار ہیں۔ بیان کے مطابق پاکستان کی پارلیمنٹ ،سینٹ اور آئینی اسمبلی سے دیگر غیرملکی شخصایات بھی خطاب کرچکی ہیں۔

ترک صدرپارلیمنٹ ہاؤس پہنچ گئے، ریڈ زون سیل، خیر مقدمی بینرز لگ گئے