پنجاب میں لاک ڈاؤن کا نوٹفکیشن جاری، جنازے کے لئے بھی لینی پڑے گی اجازت

0
39

پنجاب میں لاک ڈاؤن کا نوٹفکیشن جاری، جنازے کے لئے بھی لینی پڑے گی اجازت
باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پنجاب میں لاک ڈاؤن کا نوٹفکیشن جاری کر دیا گیا

شہریوں کی انٹر سٹی اور شہر سے باہر نقل و حرکت پر مکمل پابندی عائد کر دی گئی ہے،ہر جگہ ،ہر قسم کے اجتماعات پر پابندی عائد کر دی گئی، نماز جنازہ میں صرف قریبی رشتے دار جا سکتے ہیں، اس کے لئے بھی ایس ایچ او سے اجازت لینا پڑے گی. مریض کے ساتھ ایک شہری کو ساتھ جانے کی اجازت دی جائے گی، گھر کا ایک شخص علاقے میں خریداری کر سکے گا.

تمام سرکاری و نجی دفاتر بند رہیں گے، یوٹیلٹی کمپنیز منڈیاں، میڈیکل سٹور کھلے رہیں گے، صحافیوں کو اس سے استثنیٰ ہو گا، کریانہ کے سٹور کھلے رہیں گے، سبزی کی دکانیں بھی کھلی ہوں گی. پبلک ٹرانسپورٹ مکمل طور پر بند رہے گی،پٹرول پمپ کھلے رہیں گے،

محکمہ داخلہ کے ہدایت نامے میں کہا گیا ہے کہ دوسرے صوبوں سے شہریوں کی پنجاب میں داخلے پر پابندی ہوگی۔ کوئی بھی شہری اپنے شہر سے دوسرے شہر نہیں جاسکتا، دوسرے صوبوں سے پنجاب میں آنے پر پابندی ہوگی، گھروں اور نجی مقامات پر کسی قسم کے اجتماعات کی اجازت نہیں ہوگی

نوٹفکیشن کی خلاف ورزی پر قانونی کاروائی ہو گی، قانون نافذ کرنے والے ادارے سختی سے احکامات پر عملدرآمد کروائیں گے.

دوسری جانب پاک فوج کو ملک بھر میں تعینات کر دیا گیا ہے، پاک فوج کے دستے پنجاب کے مختلف شہروں میں پہنچ چکے ہیں، کل سے پاک فوج کے دستے پولیس کے ساتھ ملکر احکامات پر عملدرآمد کروائیں گے.

قبل ازیں وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ کورونا وائرس سے بچاؤکیلئے حفاظتی اقدامات یقینی بنانے کے لئے دو ہفتے کے لئے صوبہ بھر کے شاپنگ مالز، بازار، مارکیٹیں، نجی و سرکاری ادارے، پبلک ٹرانسپورٹ، پارکس، ریسٹورنٹس اور سیاحتی مقامات بند رہیں گے-

وزیر اعلی عثمان بزدار نے کابینہ کمیٹی برائے انسداد کورونا وائرس کے اجلاس میں کئے گئے فیصلوں کے بارے میں میڈیا کو ویڈیولنک کے ذریعے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ صوبے کے عوام کی زندگیاں محفوظ بنانے کے لئے کل 24 مارچ صبح 9 بجے سے 6 اپریل صبح 9 بجے تک 14 روز کیلئے شاپنگ مالز، بازار، مارکیٹیں، نجی و سرکاری ادارے، پبلک ٹرانسپورٹ، پارکس، ریسٹورنٹس اور سیاحتی مقامات بندرکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے تا ہم واضح کردینا چاہتا ہوں کہ یہ اقدام کسی قسم کا کرفیو یا لاک ڈاؤن نہیں ہے –

حکومت پنجاب نے عوام کے وسیع تر مفاد میں ڈبل سواری پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ بھی کیا ہے تا ہم قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار اور فیملیزاس پابندی سے مستثنی ہوں گی- انہوں نے بتایا کہ صوبہ بھر میں میڈیکل سٹور، کریانہ سٹور، فروٹ و سبزی منڈیا ں، بیکریاں، مٹن و چکن شاپ، دودھ اور فارمیسی کھلی رہیں گی- طبی آلات و ضروری ساز و سامان، ادویات اور اشیاء خورد و نوش تیار اور سپلائی کرنے والی فیکٹریاں بھی کھلی رہیں گی-

وزیر اعلی عثمان بزدار نے بتایا کہ ضروری سروسز فراہم کرنے والے ادارے بشمول واسا، واپڈا، ٹیلی کام کمپنیاں بھی کھلی رہیں گی- اسی طرح ایدھی اور دیگر ویلفیئر آرگنائزیشنز کو بھی کام کرنے کی اجازت ہے – وزیر اعلی نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ کابینہ کے کل ہونے والے اجلاس میں روزانہ روزی کمانے والے افراد کی معاشی مشکلات کے ازالے کے لئے وزیر خزانہ کی سربراہی میں کمیٹی اپنی سفارشات پیش کرے گی-انہوں نے کہا کہ یہ کرفیو یا لاک ڈاؤن والی صورتحال نہیں ہے بلکہ سماجی فاصلے برقرار رکھنے کے لئے یہ اقدام کیا گیا ہے –

انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر ز اور طبی عملہ ہمارے فرنٹ لائن سولجر ہیں انہیں سلام پیش کرتے ہیں – ان کے لئے پیکیج کا فیصلہ کابینہ کے اجلاس میں ہو گا- وزیر اعلی نے کہا کہ پابندی کی خلاف ورزی کی صورت میں قانون کے مطابق ادارے اپنے فرائض سرانجام دیں گے – صوبہ بھر میں دفعہ 144 نافد ہے – وزیر اعلی نے مزیدبتایا کہ صوبہ بھر میں کورونا کے مریضوں کی تعداد246 ہے – جن میں سے 171 ڈی جی خان کے قرنطینہ میں ہیں -وزیر اعلی نے کہا کہ کورونا سے بچاؤ کے لئے 2 روز کے لئے گھروں میں رہنے کی اپیل پر جس طرح عوام نے تعاون کیا ہے میں ان کا شکریہ ادا کرتا ہوں کیونکہ گھروں میں رہنا ہی کورونا سے بچاؤ کا بہترین طریقہ ہے- گھر میں رہ کر آپ نہ صرف اپنے عزیز و اقارب بلکہ پوری کمیونٹی کی جان بچانے کے لئے اپنا بھرپور کردار ادا کرتے ہیں اور کورونا سے بچاؤ کی مہم میں کامیابی کا یہی واحد راستہ ہے –

وزیر اعلی نے کہا کہ اس کڑے وقت میں ذمہ داریاں نبھانے والی پاک فوج، سول انتظامیہ، ڈاکٹرز، پیرامیڈیکل سٹاف، بلدیاتی ملازمین اور میڈیا کو بھی سلام پیش کرتا ہوں جو شب و روز اپنی ذمہ داریاں نبھا رہے ہیں -ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پنجاب میں اشیاء خوردونوش وافر مقدار میں موجود ہیں اور کسی چیز کی قلت نہیں ہے – پنجاب میں اشیاء خورد ونوش کی سپلائی چین برقرار رکھی جائے گی-صوبائی وزراء راجہ بشارت، ڈاکٹر یاسمین راشد، میاں اسلم اقبال، فیاض الحسن چوہان، ایم پی اے مسرت جمشید چیمہ، سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن، سیکرٹری پرائمری و سیکنڈری ہیلتھ، سیکرٹری اطلاعات بھی اس موقع پر موجود تھے.

قبل ازیں وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار اور کور کمانڈر لاہور لیفٹیننٹ جنرل ماجد احسان کی زیر صدارت آج وزیر اعلی آفس میں اہم اجلاس منعقد ہوا- جنرل آفیسر کمانڈنگ 10 ڈویژن میجر جنرل محمد انیق الرحمن ملک،جنرل آفیسر کمانڈنگ 11 ڈویژن میجر جنرل محمد یوسف،ڈی جی رینجرز پنجاب میجر جنرل محمد عامر مجید،چیف سیکرٹری، ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ،، سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن، پرنسپل سیکرٹری وزیر اعلی پنجاب ، سیکرٹری پرائمری و سیکنڈری ہیلتھ اور متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی-اجلاس میں کورونا وائرس کی روک تھام کیلئے کئے جانے والے اقدامات کا تفصیلی جائزہ لیا گیا-

اجلاس میں متاثرہ مریضوں کے علاج معالجے کیلئے انتظامات کا بھی جائزہ لیا گیا-اجلاس میں عوام کی زندگیوں کو محفوظ بنانے کے لئے تمام ترممکنہ اقدامات اٹھانے کا فیصلہ کیا گیا -اجلاس کے شرکاء نے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لئے تمام وسائل بروئے کار لانے پر اتفاق کیا-

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ حکومتی اقدامات پر 100 فیصد عملدرآمد یقینی بنانے کے لئے مشترکہ طور پر اقدامات کئے جائیں گے-کور کمانڈر لاہور لیفٹیننٹ جنرل ماجد احسان نے کہا کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کے لئے پنجاب حکومت کے ساتھ بھرپور تعاون کریں گے -یہ ہم سب کا مشترکہ مسئلہ ہے جس کیلئے اجتماعی کاوشوں کو موثر انداز میں بروئے کار لانا ہو گا-

وزیر اعلی عثمان بزدار نے کہا کہ پنجاب حکومت نے آرٹیکل 245 کے تحت فوج سے مدد طلب کی ہے – پاک فوج نے ہمیشہ مشکل وقت میں قوم کا بھرپور ساتھ دیا ہے -عسکری اور سیاسی قیادت عوام کے تعاون سے کورونا چیلنج سے بطریق احسن نمٹے گی-وزیر اعلی نے کہا کہ پنجاب حکومت کے تمام تر وسائل کورونا کے مسئلے سے نمٹنے کے لئے حاضر ہیں –

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی ہدایت پر چیف منسٹر فنڈ برائے کورونا کنٹرول قائم کر دیا گیا ہے،مخیر حضرات اکاؤنٹ نمبر 6010204028500013 بینک آف دی پنجاب سول سیکرٹریٹ میں عطیات جمع کروا سکتے ہیں۔

Leave a reply