fbpx

گلوکارہ لتا منگیشکر بھی کورونا وبا کا شکار ہو گئیں

ممبئی: بھارت کی مشہورگلوکارہ لتا منگیشکر بھی کورونا وبا کا شکار ہو گئیں-

باغی ٹی وی : بھارتی میڈیا کے مطابق ملک میں کورونا کی لہر میں شدت آتی جارہی ہے ،ممبئی اور دہلی میں اس کا زبردست اثر دیکھا جارہا ہے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے تاہم آج مشہوربھارتی گلوکارہ 92 سالہ لتا منگیشکربھی کورونا کا شکارہوں گئیں گلوکارہ کا کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد ممبئی کے اسپتال میں داخل کردیا گیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق لتا منگیشکر میں کورونا وائرس کی معتدل علامات موجود ہیں لتا منگیشکر آئی سی یو میں داخل ہیں لتا منگیشکر کی طبیعت بہتر ہے، اُنہیں احتیاطی طور پر آئی سی یو میں رکھا گیا ہے رپورٹس کے مطابق لتا منگیشکرکوان کی عمر کے پیش نظر اسپتال میں داخل کروایا گیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق لتا کو انفیکشن ہونے کے بعد ممبئی کے بریچ کینڈی اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے 92 سالہ لتا منگیشکر کی صحت چند ماہ قبل بھی بگڑ گئی تھی۔ نومبر 2019 میں بھی انہیں سانس کی تکلیف کا سامنا رہا تھا-

رپورٹس کے مطابق دہلی کے وزیر صحت ستیندر جین کا کہنا ہے کہ دہلی میں کووڈ-19 ‘ایک یا دو دن میں’ اپنے عروج پر پہنچ جائے گا، جس کے بعد تیسری لہر میں انفیکشن کے معاملات میں کمی آئے گی بھارتی دارالحکومت میں پیر کو 19,000 سے زیادہ نئے کورونا کیسز درج ہوئے، جو اتوار کے مقابلے میں قدرے کم تھے۔

جاپان نےکورونا کے پھیلاؤ کا ذمہ دار امریکی فوجی اڈوں کو قرار دے دیا

دہلی حکومت ہفتے کے آخر میں کرفیو پر دوبارہ غور کرنے کے سوال پر وزیر صحت نے بھارتی میڈیا کو بتایا، "کہ وبا چوٹی پرپہلے ہی پہنچ چکی ہے، یا ایک یا دو دن میں عروج پرلہرآجائے گی اس کے بعد کیسز میں کمی آنی چاہیے۔ لیکن یہ ممکن ہے کہ ہم ایک اور کرفیو نافذ کر دیں، صرف لوگوں کو یاد دلانے کے لیے کہ وہ اپنی سلامتی کو کمزور نہ کریں-

سینیٹر اعجاز چودھری کا کورونا ٹیسٹ مثبت آ گیا

انہوں نے کہا کہ دہلی میں کوڈ19 کے معاملات عام طور پر زیادہ ہوتے ہیں کیونکہ زیادہ تر بین الاقوامی پروازیں یہاں اترتی ہیں۔اومی کرون صرف اسی وجہ سے دہلی میں تیزی سے پھیلی ہے۔ ایک اچھی علامت یہ ہے کہ اسپتال میں داخل ہونے کی شرح بہت زیادہ نہیں ہے۔ 20,000 کے قریب رجسٹر ہونے کے باوجود۔ روزانہ کیسز، ہسپتال میں صرف 2,000 افراد داخل ہوتے ہیں، جب کہ کوڈ مریضوں کے لیے 12,000 بستر خالی ہیں اسپتال میں داخل ہونے والوں کی تعداد اب چھ گنا کم ہے۔ ہسپتالوں میں داخل 2000 میں سے صرف 65 لوگ آئی سی یو میں ہیں۔

بھارت میں کورونا،فلورونا اوراومی کرون کے حملے:صورتحال قابوسے باہر:سپریم کورٹ میدان…

دہلی میں اس مہینے کے پہلے 10 دنوں میں گزشتہ پانچ مہینوں میں ہونے والی کل اموات سے زیادہ کود19 اموات ریکارڈ کی گئی ہیں۔ سرکاری اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ مرنے والوں میں سے زیادہ تر دیگر بیماریوں میں مبتلا تھے یا انہیں ویکسین نہیں لگائی گئی تھی۔

گلوکارسونو نگم فیملی سمیت کورونا وائرس کا شکار