fbpx

چینی بحران رپورٹ، جہانگیر ترین کے خلاف بڑا ایکشن،سب حیران، ترین نے کی تصدیق

چینی بحران رپورٹ، جہانگیر ترین کے خلاف بڑا ایکشن،سب حیران، ترین نے کی تصدیق

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق چینی بحران کے حوالہ سے ایف آئی اے کی رپورٹ کے بعد ایف آئی اے کی ٹیم تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کے دفتر میں پہنچ گئی، ایف آئی اے ٹیم نے جہانگیر ترین کے دفتر کا ریکارڈ چیک کیا اور کچھ ریکارڈ تحویل میں لیا، ایف آئی اے کی ٹیم مسلسل کچھ روز سے جہانگیر ترین کے دفترمیں ہے اور تحقیقات کر رہی ہے.

ایف آئی اے نے جہانگیر ترین کے چیف فنانشل افسر سے تحقیقات کیں،ایف ائی اے اہلکاروں نے اہلکاروں نے دفاتر سے ریکارڈ، کمپیوٹر تحویل میں لے لیا

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ 10شوگرملوں سےتفتیش ہورہی ہے،3میری ہیں ،کچھ ضبط نہیں کیاگیاکیونکہ ہمارےپاس چھپانےکوکچھ نہیں،جوریکارڈمانگاجارہاہے،پیش کررہےہیں،

قبل ازیں وزیراعظم عمران خان نے جہانگیرترین کوزرعی ٹاسک فورس کی صدارت سے ہٹادیا،جہانگیرترین کوشوگراسکینڈل کی تحقیقاتی رپورٹ کے تناظرمیں ہٹایاگیا

چینی بحران تحقیقاتی رپورٹ کے بعد جہانگیرترین بھی میدان میں آگئے،اپناموقف پیش کردیا،جہانگیرترین نے چینی بحران تحقیقات رپورٹ کو سیاسی رپورٹ قراردے دیا، جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ اس رپورٹ کے پیچھے وزیراعظم کےپرنسپل سیکریٹری ہیں،تحقیقاتی کمیٹی بنیادی سوالات کےجوابات دینےمیں ناکام رہی گنےکی سپورٹ پرائس بڑھنےسےچینی کی قیمت میں اضافہ ہوا،

اسد عمرنے کی بجٹ کی مخالفت، غریب عوام کے دل جیت لئے

ہمیں چور کہا جاتا ہے لیکن بتایا جائے چینی مہنگی کرکے عوام کو کون لوٹ رہا ہے؟ خواجہ آصف برس پڑے

شوگر ملزسٹاک کی نقل و حمل اور سپلائی کی مکمل مانیٹرنگ کا حکم

آٹا ،چینی بحران کے ذمہ داروں کو سزا کب ملے گی؟ حمزہ شہباز

آٹا و چینی بحران ہماری کوتاہی، وزیراعظم نے کیا اعتراف، اور کیا بڑا اعلان

چینی بحران کا ذمہ دار جہانگیر ترین نہیں بلکہ شریف برادران،اہم انکشافات سامنے آ گئے

چینی کی قیمتوں میں اضافے پر سینیٹ میں بھی تحقیقات کا مطالبہ

چینی بحران رپورٹ میں کی گئی باتیں غلط، وزیراعظم کو موقف پیش کریں گے، جہانگیر ترین

جہانگیر ترین کا مزید کہنا تھا کہ اعدادوشمارکےمطابق180روپے سپورٹ پرائس سے ایکس مل ریٹ 65روپے فی کلوبنتا ہے،چینی برآمد کرنے کا فیصلہ اس صورت غلط ہوتاجب چینی کاوافراسٹاک نہ ہوتا،نومبر2019میں4لاکھ57ہزارٹن چینی سرپلس تھی،سبسڈی کی رقم کسی کی جیب میں نہیں جاتی،حکومت عالمی مارکیٹ میں چینی کی قیمت پوری کرنے کیلئے ایکسپورٹ پرسبسڈی دیتی ہے،

واضح رہے کہ چینی بحران پر وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پر قائم کی گئی انکوائری کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ 6 گروپوں نے مل کر ایک مافیا کی شکل اختیار کر رکھی ہے اور یہ چینی کی قیمتوں پر اثر انداز ہوتا ہے،انکوائری کمیٹی کی رپورٹ کے مطابق 6 گروپوں کے پاس چینی کی مجموعی پیداوار کا 51 فیصد حصہ ہے اوریہ آپس میں ہاتھ ملا کر مارکیٹ پر اثر انداز ہوسکتے ہیں۔ چینی کی پیداوار پر چند لوگوں کا کنٹرول اور ان میں سے بھی زیادہ تر سیاسی بیک گراؤنڈ والے لوگ، یہ ظاہر کرتا ہے کہ وہ پالیسی اور انتظامی معاملات پر کس طرح اثر انداز ہوسکتے ہیں۔

جہانگیر ترین کے گروپ کی 6 شوگر ملز چینی کی مجموعی ملکی پیداوار کا 19 اعشاریہ 97 فیصد پیدا کرتی ہیں۔ مخدوم خسرو بختیار کے رشتہ دار مخدوم عمر شہریار کے ” آر وائی کے” گروپ کی 6 شوگر ملز ہیں اور یہ 12 اعشاریہ 24 فیصد چینی پیدا کرتی ہیں۔ المعز گروپ کی 5 شوگر ملز 6 اعشاریہ 80 فیصد اور تاندلیانوالہ گروپ کی 3 شوگر ملز 4 اعشاریہ 90 فیصد چینی پیدا کرتی ہیں۔

سابق صدر آصف زرداری کے قریبی ساتھی کے اومنی گروپ کی 10 شوگر ملز ہیں اور وہ 1 اعشاریہ 66 فیصد چینی پیدا کرتے ہیں، شریف فیملی کی 9 شوگر ملز 4 اعشاریہ 54 فیصد چینی پیدا کرتی ہیں،مذکورہ بالا 6 گروپوں کی 38 شوگر ملز چینی کی مجموعی پیداوار کا 51 اعشاریہ 10 فیصد پیدا کرتی ہیں جبکہ باقی 51 شوگر ملز 49 اعشاریہ 90 فیصد چینی پیدا کرتی ہیں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.